آئندہ2 سالوں میں ڈیڑھ کروڑافراد کوصحت کارڈ دیں گے، فردوس عاشق

انصاف صحت کارڈ سے ایک کروڑ پانچ لاکھ گھرانے مستفید ہوں گے، عمران خان عام آدمی کی زندگی تبدیل کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا بیان

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار ستمبر 18:03

آئندہ2 سالوں میں ڈیڑھ کروڑافراد کوصحت کارڈ دیں گے، فردوس عاشق
اسلام آباد (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔22 ستمبر2019ء) وفاقی معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ آئندہ2 سالوں میں ڈیڑھ کروڑ افراد کو صحت کارڈ دیں گے، انصاف صحت کارڈ سے ایک کروڑ پانچ لاکھ گھرانے مستفید ہوں گے، عمران خان عام آدمی کی زندگی تبدیل کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ احساس پروگرام کا مقصدغریبوں کو معاشی ترقی کا حصہ بنانا اورعدم مساوات کا خاتمہ ہے۔

عمران خان عام آدمی کے ساتھی ہیں۔ عام آدمی کا معیار زندگی بلند دیکھنا ان کانصب العین ہے۔ فردوس عاشق نے کہا کہ اگلے2 برس کے دوران صحت کارڈ ڈیڑھ کروڑ افراد میں تقسیم کردیے جائیں گے۔ صحت انصاف کارڈ سے ملک میں ایک کروڑ پانچ لاکھ گھرانے مستفید ہوں گے۔

(جاری ہے)

صحت کارڈ سے سرکاری ہسپتالوں میں7 لاکھ 20 ہزار روپے تک کاعلاج مفت کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ صحت انصاف کارڈ اور احساس پروگرام وزیراعظم عمران خان کی محروموں، غریبوں اور بے کسوں کا ہاتھ تھامنے اور انہیں سماجی و معاشی خوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کا عملی اظہار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان عام آدمی کے ساتھی ہیں، اس کا معیار زندگی بلند دیکھنا ان کا نصب العین ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ دونوں پروگرام غریب اور نادار افراد کے تحفظ کے لیے سنگ میل ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ بیماری سے بڑھ کر کوئی بے بسی نہیں ہوتی، صحت کارڈ سے ان غریبوں اور ناداروں کا علاج ممکن ہورہا ہے جو اپنے مالی حالات کے پیش نظر ہسپتالوں کا رخ نہیں کر پاتے۔

انہوں نے کہا کہ احساس پروگرام کا مقصد ملک بھر سے غریبوں کو غربت کی لکیر سے نکال کر معاشی ترقی کا حصہ بنانا اور عدم مساوات کا خاتمہ ہے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ صحت کارڈ سے ملک میں ایک کروڑ پانچ لاکھ گھرانے مستفید ہوں گے، اور انہیں سرکاری ہسپتالوں میں 720,000 روپے تک مالیت کا علاج مفت فراہم کیا جائے گا۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیراعظم کے ویڑن کے مطابق اگلے دو برس کے دوران یہ کارڈ ڈیڑھ کروڑ افراد میں تقسیم کر دئیے جائیں گے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments