بیٹی بازیاب کروانے پر خاتون نے وزیراعظم کو فرشتہ قرار دے دیا

خاتون کے مطابق پولیس اور عدالت کے پاس گئے لیکن کسی نے نہ سنی، سٹیزن پورٹل پر شکایت کی تو بیٹی بازیاب ہوگئی، بیٹی کی بازیابی معجزہ قرار

Shehryar Abbasi شہریار عباسی جمعہ دسمبر 19:23

بیٹی بازیاب کروانے پر خاتون نے وزیراعظم کو فرشتہ قرار دے دیا
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 دسمبر2020ء) دو سال سے لاپتہ طالبہ کو سٹیزن پورٹل کی مدد سے بازیاب کروا لیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق دو سال قبل کالج سے اغواء ہونے والی طالبہ کو وزیراعظم عمران خان کی جانب سے قائم کیے گئے سٹیزن پورٹل کی مدد سے بازیاب کروا لیا گیا ۔ طالبہ کی بازیابی پر اس کی والدہ نے وزیر اعظم عمران خان کو فرشتہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ بچی کا بازیاب ہونا ہمارے لیے معجزہ ہے اور عمران خان ہمارے لیے فرشتہ ثابت ہوئے، جتنا شکر ادا کیا جائے کم ہے۔

طالبہ کے اغواء کے بعد اس کے گھر والے پولیس اور عدالت کے چکر لگاتے رہے، والدہ کا کہنا تھا کہ جیسے ہی سٹیزن پورٹل پر شکایت درج ہوئی وزیراعظم عمران خان نے نوٹس لیا اور ہمارے بیٹی ہمیں واپس مل گئی۔ سٹیزن پورٹل پر اپنی بیٹی کے اغوا کی شکایت درج کروانے والی خاتون نے بتایا کہ ہم نے تھانے میں شکایت درج کرائی لیکن پولیس اہلکاروں نے بیٹی کی بازیابی کےلیے ہم سے رشوت مانگی، ہم نے بچی کی خاطر پولیس کو 20 ہزار روپے دئیے لیکن پھر بھی پولیس نے بچی کو بازیاب نہیں کرایا۔

(جاری ہے)

خاتون نے بتایا ہم نے ہم چیف جسٹس صاحب کے پاس بھی گئے جس پر انہوں نے پولیس کو بیٹی کو بازیاب کرانے کا حکم دیا تاہم پولیس نے چیف جسٹس کا حکم بھی ماننے سے انکار کردیا۔ پولیس نے ہمیں کہا کہ اپنی بچی کو بھول جاو اور اگر واپس آنی ہوئی تو دو دو سال بعد بھی بچیاں واپس آجاتی ہیں لیکن ہم نے جیسے ہی سٹیزن پورٹل پر شکایت درج کی وزیراعظم نے ہماری شکایت پر نوٹس لیا اور بچی کو واپس ہم سے ملادیا۔عمران خان ہمارے لیے کسی فرشتے سے کم نہیں ہے، بچی کی بازیابی ہمارے لیے کسی معجزہ سے کم نہیں ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments