داتا دربار سے تین ماہ کی بچی اغواء ،پولیس نے مقدمہ درج کر کے تلاش شروع کر دی،آئی جی نے بھی نوٹس لے لیا

اہل خانہ تین ماہ کی بچی کودس سالہ بھائی احتشا م کو پکڑا کر سلام کرنے گئے ،نا معلوم خاتون بچے کو ورغلاء کر بچی کو لے گئی

منگل 18 جنوری 2022 15:11

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 جنوری2022ء) داتا دربار سے تین ماہ کی بچی کو اغواء کر لیا گیا ، اہل خانہ بچی کوچھوٹے بھائی کو پکڑا کر سلام کرنے گئے کہ نا معلوم خاتون بھائی سے بچی کولے کر فرار ہو گئی، پولیس نے مقدمہ درج کر کے تلاش شروع کر دی ۔ بتایا گیا ہے کہ ایک فیملی داتار دربار سلام کرنے آئی ، اہل خانہ تین ماہ کی بچی کو چھوٹے بھائی احتشام کو پکڑاکر خود سلام کرنے اندر چلے گئے ، اسی دوران ایک نقاب پوش خاتون نے بچے کو ورغلا کر بچی اس سے لے کر اور فرار ہو گئی ۔

اطلاع ملنے پر پولیس موقع پر پہنچ گئی اور مقدمہ درج کر کے بچی کی بازیابی کے لئے کوششیں شروع کر دی گئی ہیں۔ پولیس کے مطابق خاتون کی بچی کو لے کر جانے کی کلوزسرکٹ فوٹیج سامنے آگئی ،خاتون کو دس سالہ احتشام کو ورغلا کر بچی لے جاتے دیکھا گیا ،نامعلوم خاتون نے چہرے پر نقاب پہن رکھا تھا ، پولیس فوٹیج کی مدد سے خاتون کی تلاش شروع کر دی گئی ہے ۔

(جاری ہے)

داتا دربار پولیس نے بچی کے ماموں کی مدعیت میں واقعہ کا مقدمہ درج کر لیا ہے ۔ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر محمد عابد خان نے ایس پی سٹی کو سی سی ٹی وی فوٹیجز کی مدد سے بچی کو فوری تلاش کرنے کا حکم دیدیا ۔ پولیس نے بچی کو تلاش کرنے کے لیے ٹیم تشکیل دیدی ہے ۔آئی جی پنجاب رائو سردار علی خان نے بھی داتا دربار سے 3 ماہ کی بچی کے اغوا ء کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی ہے ۔آئی جی پنجاب نے لاہور پولیس کو سیف سٹی کیمروں کی مدد سے خاتون کی شناخت کرنے اور جلد از جلد گرفتار کرنے کا حکم دیا ہے ۔آئی جی پنجاب نے کہا کہ بچی کو بحفاظت بازیاب کروا کے جلد والدین کے حوالے کیا جائے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments