سپریم کورٹ نے قید کی سزا کیخلاف 3دہشت گردوں کی اپیلیں خارج کر دیں

بدھ اپریل 17:24

سپریم کورٹ نے قید کی سزا کیخلاف 3دہشت گردوں کی اپیلیں خارج کر دیں
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) سپریم کورٹ نے قید کی سزا کیخلاف تین دہشت گردوں کی اپیلیں خارج کر دیں ہیں۔۔سپریم کورٹ میں تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے تین دہشت گردوں کی سزائوں کے خلاف اپیلوں کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے اپیلیں مسترد کرتے ہوئے تین کارندوں کی 14 سال قید سزا کا فیصلہ برقرار رکھا۔ان میں سے ایک دہشت گرد حاجی حبیب کا جیل میں انتقال بھی ہوچکا ہے۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ ملزمان کا تحریک طالبان سے تعلق ثابت ہوا، دہشت گردوں کے کیس میں تکنیکی خامیاں نہیں دیکھتے، دہشت گرد 840 کلو دھماکہ خیز مواد کے ہمراہ رنگے ہاتھوں گرفتار ہوئے، ملزمان نے چھاپے کے وقت پولیس پر فائرنگ بھی کی۔ملزمان کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ایک ملزم کم عمر ہے، اس سے کم سنی میں غلطی ہوئی۔

(جاری ہے)

جسٹس آصف کھوسہ نے کہا کہ دنیا میں پہلی غلطی کو آخری غلطی کہا جاتا ہے، پاکستان میں کہا جاتا ہے پہلی بار ہے جانے دو، جانے دو کا کلچر دراصل دوسری غلطی کا لائسنس ہوتا ہے۔

وکیل نے کہا کہ ملزمان سے گن پائوڈر ملا جو دھماکہ خیز مواد نہیں۔ جسٹس آصف کھوسہ نے کہا کہ تو آپ کیا چاہتے ہیں ملزمان سے ٹیلکم پاؤڈر ملتا ۔واضح رہے کہ ٹرائل کورٹ نے ملزمان کو14 سال قید کی سزا سنائی تھی اور ہائی کورٹ کے بعد اب سپریم کورٹ نے بھی سزا کو برقرار رکھا ہے۔