نوازشریف عمران خان اورعمران خان نوازشریف کا مسئلہ ہے،بلاول

عمران خان وفاق کی مضبوطی کےنکتے پیش کررہے،وفاق کی مضبوطی کےنام پرصوبوں سےزیادتی کی بدمعاشی نہیں چلنےدیںگے،نیشنل ایکشن پلان پرعمل درآمد آواز اٹھاتےرہیں گے۔کوئٹہ میں عوامی جلسے سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ مئی 18:35

نوازشریف عمران خان اورعمران خان نوازشریف کا مسئلہ ہے،بلاول
کوئٹہ(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔04 مئی 2018ء) : پاکستان یپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ نوازشریف کا مسئلہ عمران خان اورعمران خان کا مسئلہ نوازشریف ہے، عمران خان وفاق کی مضبوطی کےنکتے پیش کررہے، وفاق کی مضبوطی کےنام پرصوبوں سےزیادتی کی بدمعاشی نہیں چلنےدیںگے،نیشنل ایکشن پلان پرعمل درآمد آواز اٹھاتےرہیں گے۔ انہوں نے آج کوئٹہ میں عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اپنے ہزاروں شہداء کونہیں بھول سکتے۔

فاٹا والوں اور اے پی ایس کے معصوم شہداء کو کیسے بھولیں؟ بلاول بھٹو نے کہا کہ جب تک نیشنل ایکشن پلان پرعمل درآمد نہیں ہوگا ہم آواز اٹھاتےرہیں گے۔ کیونکہ ہم نے اپنے پیاروں کی لاشیں اٹھائی ہیں۔ ہمیں گولی کا جواب گولے سے دینا آتا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے عوام کو بنیادی حقوق سے محروم کیا گیا۔ نام نہاد سیاستدانوں نے کچھ کھویا نہیں اس لیے ان کا کوئی مسئلہ نہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ نوازشریف کا مسئلہ عمران خان اورعمران خان کا مسئلہ نوازشریف ہے۔ ہزارہ والوں کی لاشیں ان دونوں کا مسئلہ نہیں۔ لاپتہ افراد کی کون بات کرے گا؟ سیاستدانوں کو اقتدار کے علاوہ کسی چیز کی پروہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان صاحب وفاق کو مزید مضبوط کرنے کے نکتے پیش کررہے ہیں۔ وفاق کی مضبوطی کے نام پرصوبوں سے زیادتی کی بدمعاشی نہیں چلنے دیں گے۔

 انہوں نے کہا کہ آصف زرداری نے مسائل کھڑے نہیں کیے پھربھی بلوچستان سےمعافی مانگی۔ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے کہا کہ جمہوریت ہی بلوچستان کے مسائل کاحل ہے۔ کیونکہ سیاست ختم ہوتی ہے تو عسکریت پسندی شروع ہوتی ہے۔ ہمیں عسکریت پسندی کو ختم کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تھرکے کوئلے کے منصوبے میں 70 فیصد مقامی لوگوں کو روزگار دیا گیا۔