واضح کرناچاہتا ہوں مسلم لیگ ن سےناراض ہوں یا نہیں،چودھری نثار

سیاسی فیصلے اپنی مرضی سے لیتا ہوں، آرڈر نہیں لیتا،نہ ہی میں کسی تحریک کاحصہ ہوں،نوازشریف اور عمران خان مجھ سے متعلق سوال پرخاموش رہتے ہیں،دونوں کی خاموشی سے میرا کیا تعلق ہوسکتا ہے؟ پریس کانفرنس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ ہفتہ مئی 16:34

واضح کرناچاہتا ہوں مسلم لیگ ن سےناراض ہوں یا نہیں،چودھری نثار
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔05 مئی 2018ء) ::مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء چودھری نثار نے کہا ہے کہ سیاسی فیصلے اپنی مرضی سے لیتا ہوں،کسی سے آرڈر نہیں لیتا،نہ ہی میں کسی تحریک کاحصہ ہوں،،نوازشریف اور عمران خان مجھ سے متعلق سوال پرخاموش رہتے ہیں،دونوں کی خاموشی سے میرا کیا تعلق ہوسکتا ہے؟ انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ سیاسی فیصلے اپنی مرضی سے لیتا ہوں ۔

کسی سے آرڈر نہیں لیتا۔کسی تحریک کاحصہ ہوں اور نہ ہی کسی سے آرڈر لیتا ہوں۔ انہوں نے مزید کہاکہ سب غلط فہمی دور کرلیں میں کسی سے آرڈر نہیں لیتا۔سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار نے ایک سوال پرکہا کہ نوازشریف اور عمران خان مجھ سے متعلق سوال پرخاموش رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دونوں کی خاموشی سے میرا کیا تعلق ہوسکتا ہے؟ انہوں نے صحافیوں سے مخاطب ہوتے ہوئے کہاکہ مجھے پتا کہ آپ پوچھیں گے کہ میں ن لیگ میں رہوں گا یا نہیں رہوں گا۔

(جاری ہے)

مجھ سے سوال کیا جائے گا کہ پی ٹی آئی میں جارہاہوں یا نہیں جارہاہوں ۔واضح رہے سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار نے نیا انداز اپناتے ہوئے صحافیوں سے پریس کانفرنس کے سوال پوچھے اور کہا کہ تھوڑی دیر میں آکر ان تمام سوالوں کے جوابات دوں گا۔اس موقع پرانہوں نے ایک سوال پرکہاکہ میں تین انتخابی حلقوں سے الیکشن لڑرہا ہوں۔ جن میں ایک حلقہ قومی اور دوصوبائی اسمبلی کے حلقے شامل ہیں۔

یاد رہے مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء چوہدری نثار پاناما کیس کے فیصلے پرپارٹی قیادت سے تحفظات رکھنے پرناراض ہیں۔ اس دوران ان کے خلاف لفظی جملے بازی بھی کی گئی۔تاہم انہوں نے افہام وتفہیم سے اس لفظی جملے بازی کا جواب دیا۔ کچھ روز قبل انہوں نے پارٹی قیادت سے ہٹ کرتین حلقوں سے الیکشن لڑنے کا اعلان کردیا۔ جن میں دو حلقے ڈصوبائی بھی شامل ہیں۔ جس پرکہا جارہا ہے کہ چوہدری نثار کی وزیراعلیٰ شہباز شریف سے معاملات طے ہوگئے ہیں۔ اور انہیں وزیراعلیٰ پنجاب کا امیدوار بھی ٹھہرایا جاسکتا ہے۔