میثاق جمہوریت کا مقصد باریاں لگانا نہیں ،جمہوری استحکام تھا،راجہ پرویز اشرف

پی اے سی چیئرمین شپ بارے سپیکر کا کردار لائق تحسین ہے‘ امید ہے قانون سازی کا عمل جلد شروع ہوگا، قومی اسمبلی میں اظہار خیال

جمعرات دسمبر 20:45

میثاق جمہوریت کا مقصد باریاں لگانا نہیں ،جمہوری استحکام تھا،راجہ پرویز ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 13 دسمبر2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماء و سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ میثاق جمہوریت کا مقصد باریاں لگانا نہیں ،جمہوری استحکام تھا،پی اے سی کا چیئرمین بننے ،قائمہ کمیٹیوںکے وجود میں آنے سے ہی یہ ایوان مکمل ہوگا، پی اے سی چیئرمین شپ بارے سپیکر کا کردار لائق تحسین ہے‘ امید ہے قانون سازی کا عمل جلد شروع ہوگا۔

جمعرات کو قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ سپیکر قومی اسمبلی نے انتہائی دانشمندی اور بردباری کیساتھ چیئرمین پی اے سی کے حوالے سے کردار ادا کیا جو لائق تحسین ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی اے سی کے چیئرمین بننے اور قائمہ کمیٹیوں کے وجود میں آنے کے بعد ہی یہ ایوان مکمل ہوگا۔

(جاری ہے)

اپوزیشن لیڈر کو پی اے سی کا چیئرمین بنانے کے پیچھے کچھ عوامل کارفرما تھے۔

محترمہ بے نظیر بھٹو اور میاں نواز شریف نے کئی سالوں کی کشمکش کے بعد جب یہ بات محسوس کی کہ ہمیں ایک دوسرے کے ساتھ برداشت اور احترام کے ساتھ چلنا ہوگا، اس تناظر میں میثاق جمہوریت پر دستخط ہوئے۔ یہ دستاویز باریاں لگانے کے لئے نہیں تھی اس کا مقصد جمہوری استحکام تھا۔ یہ محترمہ بے نظیر بھٹو کی سوچ تھی کہ میثاق جمہوریت کے بغیر یہ ایوان آگے نہیں چل سکتا۔ ہمیں امید ہے کہ اس ایوان میں عوامی مفادات کے لئے قانون سازی کا عمل جلد شروع ہوگا۔