شاہد خاقان عباسی نے پورا نیب ادارہ ختم کرنے کا مطالبہ کردیا

نیب ریاستی دہشتگردی کا طریقہ ہے، نیب قوانین میں ترمیم بڑا آسان کام ہے، پورا ادارہ ہی ختم ہونا چاہیے، مسلم لیگ ن میں کوئی تقسیم نہیں۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی میڈیا سے گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ منگل جنوری 16:20

شاہد خاقان عباسی نے پورا نیب ادارہ ختم کرنے کا مطالبہ کردیا
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 جنوری 2020ء) پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے پورا نیب ادارہ ختم کرنے کا مطالبہ کردیا ہے، انہوں نے کہا کہ نیب ریاستی دہشتگردی کا طریقہ ہے، پورا ادارہ ہی ختم ہونا چاہیے، مسلم لیگ ن میں کوئی تقسیم نہیں، مشرف جیل سے بچ گئے، معاملہ اب سپریم کورٹ میں جائے گا۔

انہوں نے پارلیمنٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میرا آپریشن ہوگیا ہے اب طبیعت ٹھیک ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیب کے بارے ترمیم بڑی آسان ہے۔ نیب کا ادارہ ختم ہو جانا چاہیے یہ ریاستی دہشت گردی کا طریقہ ہے۔ انہوں نے ایم کیوایم سے متعلق کہا کہ ایم کیو ایم اور حکومت کا آپس کا مسئلہ ہے، وہ جانے اور حکومت جانے۔ مشرف جیل سے بچ گئے، معاملہ اب سپریم کورٹ میں جائے گا۔

(جاری ہے)

وہی فیصلہ کریں گے۔ عدالت کے فیصلوں پرکیا کہہ سکتا ہوں۔ سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے مریم نواز کے ای سی ایل میں نام ڈالنے سے متعلق کہا کہ ای سی ایل میں نام دو دفعہ تو نہیں ہوسکتا، ایک ہی دفعہ ہوتا ہے۔ میں جیل میں ہوں میرے پاس نوازشریف کی تصویر نہیں آئی۔ واضح رہے گزشتہ روز ایل این جی اسکینڈل میں زیر حراست سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو طبیعت کی بحالی کے بعد نجی ہسپتال سے ڈسچارج کرکے واپس اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا ہے۔

خیال رہے 28 دسمبر کو سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے پتے میں پتھری کے باعث ان کا آپریشن ہوا تھا۔ آپریشن کے بعد ڈاکٹروں نے شاہ خاقان عباسی کو آرام کا مشورہ دیا تھا۔ واضح رہے کہ جولائی 2019 میں نیب نے شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی کیس میں گرفتار کیا تھا۔ نیب گرفتاری کے بعد شاہد خاقان عباسی نے ضمانت نہ لینے کا فیصلہ کیا تھا۔ انہوں نے تاحال ضمانت کیلئے رجوع نہیں کیا۔