کرکٹ سے دور رہنے کے باوجود کھیلنے کی انداز میں کوئی تبدیلی نہیں آئی:شرجیل خان

6 ماہ کے دوران مجھ سمیت تمام ہی کرکٹرز نے کرکٹ نہیں کھیلی : جارح مزاج اوپننگ بلے باز

Zeeshan Mehtab ذیشان مہتاب جمعرات ستمبر 12:13

کرکٹ سے دور رہنے کے باوجود کھیلنے کی انداز میں کوئی تبدیلی نہیں آئی:شرجیل ..
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 24 ستمبر 2020ء ) میچ فکسنگ کے جرم میں سزا پانیوالے ٹیسٹ کرکٹر شرجیل خان نے کہا ہے کہ یہ تاثر دینا صحیح نہیں کہ تین سال کرکٹ سے دور رہنے کے باعث میرا نیچر آف گیم تبدیل ہوگیا ہے۔ اپنے ایک انٹرویو میں شرجیل خان کا کہنا تھا کہ پچھلے 6 ماہ کے دوران مجھ سمیت تمام ہی کرکٹرز نے کرکٹ نہیں کھیلی، سب کی نظریں اب ٹی ٹونٹی کپ پر ہیں، ٹی ٹونٹی کپ تمام کرکٹرکے لیے ایک اچھا پلیٹ فارم ہے،تمام تر توجہ اس ایونٹ پر مرکوز ہے، کوشش کروں گا جس سے میں پہچانا جاتا ہوں اسی طرح کا کھیل پیش کروں، پی ایس ایل میں کھیلنے سے میرا اعتماد بحال ہوا، کوشش کروںگا کہ اب اپنی ٹیم کو میچز جتواؤں، 3 سال کرکٹ سے دور رہنے پر مایوس ضرور ہوں، مگر یہ تاثر دینا صحیح نہیں کہ اس پورے عرصے میں میرا گیم تبدیل ہوگیا ہے۔

(جاری ہے)

سپاٹ فکسنگ کے جرم میں ڈھائی سال کی سزا پانیوالے شرجیل خان کا کہنا ہے کہ میری فٹنس میں پہلے سے بہتری آئی ہے، حال ہی میں یویو ٹیسٹ دیا جس میں 17 پوائٹس حاصل کیے جو فٹنس میں بہتری کا منہ بولتا ثبوت ہے، سری لنکا پریمیئر لیگ کی ڈرافٹنگ میں میرا نام شامل ہے، کوئی ٹیم میرا چناؤ کرتی ہے تو وہاں بھی اپنے پرستاروں کو مایوس نہیں کروںگا۔ سندھ کے ہیڈکوچ باسط علی کے ساتھ ماضی میں بھی کام کرچکا ہوں، 2016ء میں پاکستان اے ٹیم نے دورہ انگلیںڈ کیا تھا جس کے کوچ باسط علی تھے،اس وقت بھی باسط علی سے بہت کچھ سیکھا تھا، اب بھی اپنی بیٹنگ کے حوالے سے کچھ پوچھنا ہوتا ہے تو باسط علی سےسیکھتا ہوں۔

اگست 2019ء میں پابندی اٹھائے جانے کے بعد کرکٹ کے میدان میں قدم رکھنے کے بعد پی ایس ایل فائیو میں کراچی کنگز کا حصہ بننے والے شرجیل خان نے کہا کہ اس وقت وہ انگلینڈ کےفاسٹ بولر جوفرا آرچر سے بے حد متاثر ہیں، ان کو بولنگ کراتے دیکھنے میں ہی اتنا مزہ آتا ہے کہ سوچتا ہوں کبھی جوفرا آرچر کو کھیلنے کا موقع ملا تو کس طرح کھیلوں گا۔