Live Updates

سپریم کورٹ میں اوپن بیلٹ کا جو بھی فیصلہ ہوا وہ متنازعہ ہوجائے گا ، شاہد خاقان عباسی

ملک میں عدل کا نظام ایک مذاق بن چکا ، آئین بدلنا یا اس میں ترمیم کرنا پارلیمنٹ کا اختیار ہے ، لیکن پارپارلیمان کا نظام بھی مفلوج ہے ، سینیٹ الیکشن کیلئے ہارس ٹریڈنگ نہیں ہورہی بلکہ لوگ اپنی ضمیرکی آوازپرچل رہے ہیں ، سابق وزیر اعظم کی میڈیا سے گفتگو

Sajid Ali ساجد علی منگل فروری 14:35

سپریم کورٹ میں اوپن بیلٹ کا جو بھی فیصلہ ہوا وہ متنازعہ ہوجائے گا ، ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 23 فروری2021ء) مسلم لیگ ن کے رہنماء سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ میں اوپن بیلٹ کا جو بھی فیصلہ ہوا وہ متنازعہ ہوجائے گا ، بدنصیبی ہے کہ ملک میں آج عدل کا نظام ایک مذاق بن چکا اورپارلیمان کا نظام بھی مفلوج ہے۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جہاں وزیراعظم سینیٹ الیکشن کا شیڈول آنے کے بعد مداخلت کرے توکس کی سنیں ، سپریم کورٹ میں اوپن بیلٹ کا جو فیصلہ ہوا وہ متنازعہ ہوجائے گا کیوں کہ آئین کو بدلنا یا اس میں کوئی ترمیم کرنا صرف پارلیمنٹ کا اختیار ہے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ پوراعدالتی نظام اسلام آباد میں مفلوج ہے ، اسلام آباد میں عدالتوں کے بائیکاٹ کا مسئلہ حل ہونا چائیے۔

(جاری ہے)

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ خواہش ہے سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سے ہو، سپریم کورٹ جو بھی فیصلہ کرے گی قبول کریں گے، سیاست میں پیسا استعمال کرنے والے نشان عبرت بن گئے ، پی ٹی آئی اپنی آئندہ نسلوں کی بہتری کا سوچتی ہے ، تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے گورنرخیبرپختونخواہ اور وزیر اعلیٰ کے پی نے ملاقات کی، جس میں سیاسی معاشی اور انتظامی صورتحال پر بات چیت کی گئی، اسی طرح وزیر اعظم عمران خان کی زیرصدارت سینیٹ الیکشن سے متعلق اجلاس ہوا، اجلاس میں نوشہرہ ضمنی الیکشن کا تذکرہ ہوا، پرویز خٹک نے الیکشن ہارنے کی وجوہات بتائیں۔

اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے ارکان اسمبلی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہماری خواہش ہے سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سے ہو، عدالت کا فیصلہ جو بھی ہو، قبول کریں گے،پارٹی جس امیدوارکو نامزد کرے گی اس امیدوار کو کامیاب کروائیں گے۔اسی طرح تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق نے بھی سینیٹ انتخابات جیتنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی تیار کرلی ہے، ق لیگ اور پی ٹی آئی کی صوبائی قیادت ارکان اسمبلی سے رابطے کریں گے، پنجاب میں مشترکہ حکمت عملی کے تحت انتخابات میں اپوزیشن کو شکست دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سیاست کا اصل محور عوام ہیں،بدقسمتی سے یہاں لوگوں نے سیاست کو صرف پیسا بنانے کیلئے استعمال کیا، ان لوگوں نے ہرجگہ پیسا استعمال کیا اب ان کی حالت نشان عبرت ہے،ہم اس لیے پیچھے رہ گئے کیونکہ یہاں پیسا عوام کی خدمت کی بجائے پیسا چوری کیا گیا، انہوں نے کہا کہ قدرت نے پاکستان کو ہرنعمت سے نوازا ہے ، جس معاشرے میں اخلاقیات ختم ہوجائیں وہ معاشرہ تباہ ہوجاتا ہے، ہم مستقبل اور اپنی نسلوں کی بہتری کا سوچتے ہیں۔
سینیٹ انتخابات سے متعلق تازہ ترین معلومات