سی پیک کے تحت کراچی کو جدید شہری انفرا اسٹرکچر زون کی فراہمی کا اعلان

3 اعشاریہ 5 ارب ڈالر سے مکمل ہونے والا منصوبہ کراچی کو ایک جدید شہری انفرا اسٹرکچر زون فراہم کرے گا ، کم لاگت کی رہائشی سہولت کی فراہمی سے ملحقہ آبادیوں کے 20 ہزار خاندانوں کی ری سیٹلمنٹ کی جائے گی۔ وفاقی وزیر علی زیدی

Sajid Ali ساجد علی اتوار 26 ستمبر 2021 16:13

سی پیک کے تحت کراچی کو جدید شہری انفرا اسٹرکچر زون کی فراہمی کا اعلان
اسلام آباد ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 26 ستمبر 2021ء ) پاکستان تحریک انصاف کی وفاقی حکومت نے سی پیک کے تحت کراچی کو جدید شہری انفرا اسٹرکچر زون کی فراہمی کا اعلان کردیا۔ اطلاعات کے مطابق یہ اعلان وزارت بحری امور کی جانب سے کیا گیا ، منصوبہ کے پی ٹی کے ساتھ شراکت میں براہ راست چینی سرمایہ کاری سے تعمیر ہوگا ، 3 اعشاریہ 5 ارب ڈالر سے مکمل ہونے والا منصوبہ کراچی کو ایک جدید شہری انفرا اسٹرکچر زون فراہم کرے گا۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر منصوبے کی تفصیلات جاری کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے ساحلی امور علی زیدی نے کہا کہ منصوبہ پاکستان کے لیے گیم چینجر ثابت ہوگا کیوں کہ اسلام آباد اور بیجنگ میں منعقد سی پیک پر دسویں جوائنٹ کوآپریشن کمیٹی کے اجلاس میں دونوں ممالک نے کراچی کوسٹل کمپری ہینسیو ڈیولپمنٹ زون کو سی پیک فریم ورک میں شامل کرنے پر اتفاق کرلیا ہے ، کراچی کوسٹل کمپری ہینسیو ڈیولپمنٹ زون (کے سی سی ڈی زیڈ) 3.5ارب ڈالر سے مکمل ہونے والا منصوبہ کراچی کو ایک جدید شہری انفرااسٹرکچر زون فراہم کرے گا ، منصوبے کے لیے کراچی پورٹ کے مغربی بیک واٹر کی 640 ایکڑ دلدلی زمین ری کلیم کی جائے گی جہاں منصوبہ کے پی ٹی کے ساتھ شراکت میں براہ راست چینی سرمایہ کاری سے تعمیر ہوگا۔

(جاری ہے)


اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ چین کی معاونت سے تعمیر ہونے والے اس اہم پراجیکٹ کو ایک ہاربر برج کے ذریعے کراچی سے منسلک کیا جائے گا یہ پل پاکستان ڈیپ واٹر پورٹ کے عقب سے شروع ہوکر منوڑہ جزیرے اور سینڈزپٹ کے ساحل پر ختم ہوگا ، منصوبے میں لیاری ندی پر واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ کی تعمیر بھی شامل ہے ، وزیر اعظم عمران خان کے وژن کے تحت کم لاگت کی رہائشی سہولت کی فراہمی بھی کے سی سی ڈی زیڈ منصوبے کا حصہ ہے جس سے ملحقہ کی آبادیوں کے 20 ہزار خاندانوں کی ری سیٹلمنٹ کی جائے گی۔

علی زیدی نے بتایا کہ اس ماحول دوست منصوبے میں کراچی پورٹ پر چار نئی برتھوں کا بھی اضافہ کیا جائے گا جس سے پاکستان کے بڑھتے ہوئے میری ٹائم سیکٹر کی استعداد میں اضافہ ہوگا ، جدید سہولتوں سے آراستہ فشنگ پورٹ اور عالمی معیار کا فشریز پراسیسنگ زون بھی منصوبہ کا حصہ ہے جس سے پاکستان کے تجارتی امکانات میں اضافہ ہوگا ، منصوبہ میرین ایکو سسٹم کو بہتر بنانے کے ساتھ سمندری آلودگی کو بھی کم کرنے کا ذریعہ بنے گا۔