بند کریں
صحت مضامینغذا اور صحتکیلے کی حسن افزاء خوبیاں

مزید غذا اور صحت

پچھلے مضامین - مزید مضامین
کیلے کی حسن افزاء خوبیاں
کیلا ایک سدا بہار پھل ہے اس میں صحت بخش غذائی اجزاء کی کثیر مقدار پائی جاتی ہے یہ جسمانی صحت اور خوبصورتی کی نگہداشت کے حوالے سے ایک کرشماتی پھل کی حیثیت رکھتا ہے ساحلی علاقوں میں بسنے والے افراد خاص طور پر خواتین اپنی جلد کے مردہ خلیات کی صفائی اور اپنی جلد کو چمک ورعنانی بخشنے کے سلسلے میں کیلے کا استعمال کیاکرتی ہیں
انشین حسین بلگرامی :
وہ مزیدار پھل جو پاکستان میں سال کے چاروں موسم میں دستیاب رہتا ہے اور بچوں بڑوں کے پسندیدہ کی حیثیت رکھتا ہے اسے ہم سب کیلے یا بنانا (Banana) کے نام سے جانتے ہیں۔ یہ ایک سدابہار پھل ہے اس میں صحت بخش غذائی اجزاء کی کثیر مقدار پائی جاتی ہے سند ھ اور پنجاب کے کیلے غذائیت اور معیار کے حوالے سے دنیا بھر میں خصوصی شہرت رکھتے ہیں۔ان میں بدیسی نسل کے چتلی کیلوں کی شہرت خصوصی اہمیت رکھتی ہے۔ جبکہ اکثر فروٹس منڈیوں میں اور مہنگے سپراسٹورز میں آپ کنگ سائز کیلے بھی اکثر ملا حظہ کرتے ہوں گے جنہیں برازیل کے کیلے کہہ کر پھل فروٹس ”امپورٹڈکیلوں“ کا ٹیگ لگا کر منہ مانگے داموں فروخت کرتے ہوئے نظر آتے ہیں۔لیکن یقین مانیے ہمارے یہاں کے بدیسی کیلوں کی بنسبت امپورٹڈ برازیلی کیلوں کا ذائقہ نہایت بے مزہ سا ہوتا ہے یعنی اونچی دکان پھیکے پکوان والی مثال ان کیلوں پر بالکل فٹ بیٹھتی ہے یعنی یہ دیکھنے میں تو بلاشبہ بے حد خوبصورتنظر آتے ہیں لیکن ذائقے میں یہ بدیسی کیلوں کامقابلہ کرنے سے عاجزی رہتے ہیں۔ کیلے میں کثیر مقدار میں فولاد یعنی آئرن پایا جاتا ہے اس لئے اگر انہیں چھیل کر رکھا جائے تو یہ فضا میں موجود آکسیجن سے تعامل کرلیتا ہے جس کے نتیجے میں اس کا خوبصورت وملائم پیلے رنگ کا گودا سیاہ پڑنے لگتا ہے اور دیکھنے میں بہت بدنما محسوس ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ ہمارے ملک کی آب وہوا ایسی ہے کہ فریج کے بغیر یعنی فریج میں رکھے بغیر پھلوں وسبزیوں کو آپ زیادہ عرصے تک فریش حالت میں نہیں رکھ سکتے ( ماسوائے چند ایک پھلوں وسبزیوں کے) اس وجہ سے اکثر اوقات ایسا ہوتا ہے کہ بے خیالی میں کچن یا ڈائننگ ٹیبل پررکھی فروٹ باسکٹ میں رکھے رکھے 2-3 دن کے اند ہی کیلے کھانے میں تعامل کا شکار ہوں لین اب انہیں پھینکے مت بلکہ زیر نظر مضمون میں ہم اس بہترین پھل کی غذائی خوبیوں کو بیان کرنے کے بجائے اس پھل کو ایک بہترین بیوٹی ایڈ کے طور پر پیش کرتے ہوئے اس کی حسن افزاء صلاحیتوں سے آپ کو آگاہ کریں گے۔
کیلے کا استعمال خواتین اپنی جلد کے مردہ خلیات کی صفائی کے سلسلے میں اور جلد کو چمک و رعنائی بخشنے کے لئے کیا کرتی ہیں خاص طورپر ساحلی علاقوں پہ بسنے والے افراد کی جلد اور ان کے بال رطوبت زدہ نمکین آب وہوا کے باعث قدرے خشک اوربے رونق ہو جایا کرتے ہیں اس لیے بیوٹی ایکسپرٹس اور ہربل ایکسپرٹس ان افراد کو اپنی جلد وبالوں پر پکے ہوئے کیلوں سے مساج ومالش کرنے کامشورہ دیتے ہیں تاکہ ان کی پژمردہ بے رونق جلد وتازہ اور دلکش نظر آنے لگے اور بول کی قدرتی چمک وخوبصورتی بھی لوٹ آئے۔ پوٹاشیم سے بھر پور کیلوں میں ایسا کوئی بھی ضرور رساں جز موجود نہیں ہوتا جس سے آپ کی جلد و بالوں کو ( چاہے وہ کتنی ہی حساس کیوں نہ ہو) نقصان نہیں پہنچتا ہے۔ پروٹین اور قدرتی چکنائی سے بھرپور ہونے اور ملین(Mild) ہونے کی وجہ سے یہ ہر قسم کی جلد کے لئے موزوں ثابت ہوتا ہے۔ پژمردہ وبے جان جلد کو فوری چمک ودلکشی فراہم کرنے کے لئے ایک کیلے کو میش کر کے کم از کم 15 منٹ تک چہرے پرملاحت کیساتھ مساج کریں اس کے بعد نیم گرم پانی سے چہرہ دھوکر ایک بہترین موئسچرائزر کا استعمال کریں یا پھر بے بی لوشن لگالیں آپ کی خشک وپژ مردہ جلد منٹوں میں روشن اور چمکدار دکھائی دینے لگے گی ۔اس کے علاوہ میش کیے ہوئے کیلوں کے پیسٹ میں اگر 1-2 چمچے شہد ملا کر بالوں پر مساج کی جائے تو ی ایک بہترین ہیئر کنڈیشنر کاکام بھی سرانجام دیتا ہے۔
ذیل میں کیلے سے تیار کی جانے والی چند ہر بل بیوٹی ٹپس بتائی جا رہی ہے جو آپ کے حسن کونکھار نے میں ایک بہترین بیوٹی ٹریٹمنٹ کا کردار ادا کرے گا۔
بنابا کیمو مائل (Chamomile) سوتھنگ لوشن :
ایک عدد پکے ہوئے کیلے کو میش کر کے میں 2کھانے کے چمچے تیز کمومائل ٹی شامل کریں اس مکسچر کو کاٹن بار یا روئی کے پھائے کی مدد سے چہرے یا جلد یہ پڑ جانے والے داغ دھبوں، ایکنی وپمپلز پر لگائیں 5 منٹ تک لگا رہنے دیں اس کے بعد ٹھنڈے پانی سے چہرہ دھو کر صاف کرلیں۔
خشک جلد کیلئے ’بنانا“ ماسک :
1/4 کپ دہی میں 2 کھانے کے چمچے شہد ملائیں اور ایک درمیانے سائز کا کیلا میش کرکے شامل کریں اس ماسک کو 10 منٹ کے لئے چہرے اور گردن پر لگائیں اس کے بعد ٹھنڈے پانی سے چہرہ گردن دھولیں۔
بے رونق بالوں کے لئے بادام اور کیلے کا ماسک :
2 عدد پکے ہوئے کیلوں کو میش کر کے اس میں 2 کھانے کے چمچے روغنِ بادام شامل کر کے 15-10 منٹ تک بالوں میں مساج کریں اس کے بعد نیم گرم پانی سے سردھو کر بالوں کو شیمپو کرلیں۔
خشک جلد کیلئے بنانا ایگ پیک :
ایک انڈے کی زردی ، 2 کھانے کے چمچے روغنِ بادام اور ایک کیلے کو اچھی طرح مکس کر کے اس ایگ پیک کو جلد پرلگائیں اور 20 منٹ کے بعد پانی سے دھو لیں۔
کیلا اور ملتانی مٹی :
ایسی نارمل سے خشک یا روغن سے نارمل جلد جس کے مردہ مسامات جلد پر سے آسانی سے صاف نہ ہوتے ہوں وہ 1 عدد پکے ہوئے کیلے کو میش کر کے پہلے سے بھیگی ہوئی ملتانی مٹی کے مکسچر ملا کر اس ے جلد پر 15-20 منٹ کے لئے لگائیں خشک ہوجائے تو ٹھنڈے پانی سے اچھی طرح دھو کر صاف کرلیں۔

(12) ووٹ وصول ہوئے