بند کریں
صحت مضامینمضامینکمپیوٹرسے آنکھوں پر پڑنے والا دباوٴ کیسے دور کریں؟

مزید مضامین

پچھلے مضامین - مزید مضامین
کمپیوٹرسے آنکھوں پر پڑنے والا دباوٴ کیسے دور کریں؟
اپنا کمپیوٹر ایسی جگہ پر رکھیے کہ وہ دیوار سے لگا ہوا نہ ہو۔ کمپیوٹر کے بالکل سامنے بیٹھیے۔کمپیوٹر سے آپ کا فاصلہ 18سے24 انچ تک ہونا چاہیے۔۔۔
کمپیوٹر اب اتنا عام ہو گیا ہے کہ ہر گھر اور دفتر میں استعمال کیا جا رہا ہے ۔ بڑے اور چھوٹے اس بات کا خیال کیے بغیر کہ اس کے سامنے کتنی دیر بیٹھنا چاہیے اپنی آنکھیں خراب کر لیتے ہیں۔ آنکھوں پر پڑنے والے دباوٴ سے آپ کے سر میں درد بھی ہونے لگتا ہے۔ ماہرین کہتے ہیں کہ ہر دس میں سے آٹھ افراد کو اس نئی ایجاد سے نقصان پہنچ رہا ہے۔ مسلسل کمپیوٹر کے سامنے بیٹھنے سے درج بلا تکالیف کے علاوہ آپ کی آنکھیں بھی جلنے لگتی ہیں بینائی دھندلا جاتی ہے اور ایک دو دکھائی دینے لگتے ہیں۔چنانچہ آپ کے لیے چشمہ پہننا ضروری ہو جاتا ہے ۔ کمپیوٹر کے سامنے غلط طریقے سے بیٹھنے پر گردن اور شانوں میں بھی درد شروع ہو جاتا ہے۔
یہ ساری تکالیف ہونا لازمی نہیں ہے اگر آپ اس معاملے میں احتیاط برتیں گے تو نہایت خوش اسلوبی سے اپنا کام انجام دے سکیں گے۔ آپ کی آنکھوں کو کوئی نقصان نہیں پہنچ سکے گا۔ اسکی احتیاطی تدابیر بے حد آسان ہیں۔ ان پ رعمل پیرا ہونے کے بعد نہ صرف یہ کہ آپ اپنی بینائی کو محفوظ رکھ سکیں گے بلکہ آپ کو جسمانی پریشانیوں کا بھی سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔
ذیل میں چند احتیاطی تدابیر درج کی جارہی ہیں جن پر عمل کر کے آپ مذکورہ تکالیف سے چھٹکارا حاصل کرسکتے ہیں۔
اپنا کمپیوٹر ایسی جگہ پر رکھیے کہ وہ دیوار سے لگا ہوا نہ ہو۔ کمپیوٹر کے بالکل سامنے بیٹھیے۔کمپیوٹر سے آپ کا فاصلہ 18سے24 انچ تک ہونا چاہیے۔ آپ کی نشست اونچی ہونی چاہیے تاکہ کمپیوٹر اسکرین کا اوپری کنارہ آپ کی آنکھوں کی سطح پر ہو۔ ٹائپ کرے وقت آپ کی کلائیوں اور کہنیوں کی سطح برابر ہونی چاہیے۔ آپ کے گھٹنوں کی سطح کولھوں سے نیچے ہونی چاہیے پیروں کو فرش پر ٹکائیے۔ اگر پاوٴں فرش تک نہ پہنچ پار ہے ہو تو نیچے کوئی چیز رکھ لیجیے۔
مسلسل کمپیوٹر اسکرین پر نظریں جمائے رکھنے سے آپ کی آنکھیں دباوٴ اور کھچاوٴ کا شکار ہوسکتی ہیں لہٰذا اسکرین سے نظریں ہٹا کر چار یا پانچ بار دُور کی سکی چیز کو دیکھیں۔ پھر تیزی سے کسی نزدیکی چیز کو دیکھیں اس انداز کی ورزش سے آنکھوں کو سکون پہنچے گا۔ یہ عمل ہر گھنٹے بعد کیجئے۔
گاہے گاہے گردوپیش کی چیزوں پر بھی نگاہ ڈالتے رہیں۔ لمبی لمبی سانسیں لی اور دھیمے انداز میں خارج کر دیں۔
کمرے کی روشنی کچھ اس انداز سے رکھیے کہ اس کا عکس کمپیوٹر اسکرین پر براہ راست نہ پڑے رونہ روشنی منعکس ہو کر آپ کی آنکھوں پر پڑتی رہے گی اور بینائی کم زور ہو جائے گی۔ اسکرین کو آپ آڑا ترچھا کر کے اس انداز سے رکھیں کہ اس سے کمرے کی روشنی منعکس ہو کر آپ کی آنکھوں پر نہ پڑے ۔ یہ بھی خیال رکھیے کہ کھڑکی اور دروازے سے آنے والی روشنی اسکرین پر نہ پڑے۔ چنانچہ کھڑکی اور دروازے پر پردے ڈال دیجیے۔
اگر آپ کے کمپیوٹر پر حفاظتی اسکرین نہیں لگی ہوئی تو لگوالیجئے ورنہ مانیٹر سے نکلنے والی تیز روشنی آپ ک آنکھوں کو مسلسل نقصان پہنچاتی رہے گی۔ جہاں تک ہو سکے کمرے میں مدھم روشنی رکھیں۔ اگر آپ کو کوئی کتاب پڑھنی ہو تو اس کے لئے چھوٹا سا ٹیبل لیمپ میز پر رکھ لیجیے۔ کوشش کیجیے کہ اس کی روشنی اسکرین پر نہ پڑے۔
تھوڑے تھوڑے وقفے سے پلکیں تیزی سے جھپکاتے رہیں تاکہ دیدوں کی تری قائم رہے ۔ جب آپ مسلسل کمپیوٹر اسکرین کی طرف دیکھتے رہتے ہیں اور پلکیں نہیں جھپکاتے تو پردہ چشم خشک ہو جاتا ہے اور بینائی متاثر ہوتی ہے ۔ یاد رکھیے قدرتی طور پر آپ ایک منٹ میں 10سے 12بار پلکیں جھپکانی چاہییں کم پلکیں جھپکانے پر جب آپ کا پردہ چشم خشک ہو جاتا ہے تو آنکھوں میں سرخی دوڑ جاتی ہے اورآنکھوں میں چھبن اور جلن بھی پیدا ہوجاتی ہے۔
جسم میں پانی کی کمی نہ ہونے دیں اور پانی پیتے رہیں۔ کسی معالج سے رجوع کریں اور اپنے لیے آنکھوں میں ڈالنے والے قطرے (آئی ڈراپس) لکھوالیں جو آنکھوں کی کثافت نکالتے اور ٹھنڈک پیدا کرتے رہیں گئے۔

(4) ووٹ وصول ہوئے