بند کریں
صحت مضامینمضامینپھیپھڑوں کے سرطان کی ویکسین

مزید مضامین

پچھلے مضامین - مزید مضامین
پھیپھڑوں کے سرطان کی ویکسین
کیوبانے پھیپھڑوں کے سرطان کی علاج کے لیے امیونوتھراپی ویکسین ایجاد کی ہے جوسرطان کی بڑھوتری روکے گی اور زندگی کادورانیہ بڑھائے گی
دنیا بھر میں صحت کے حوالے سے اعلیٰ میعاراور ایجادات کے ملک کیوبانے پھیپھڑوں کے سرطان کے علاج کے لیے ویکسین تیار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ہے ۔ جسے اب امریکہ میں باقاعدہ ٹیسٹ کیا جائے گا جس کی منظوری FDAنے دید ہے ۔ کیوبااور امریکا میں برسوں سے جاری مخاصمت کے بعد بدلتے تعلقات کے دوران اس ویکسین کا ٹرائل یقینا پھیپھڑوں کے سرطان میں مبتلا مریضوں کے لیے کسی خوشخبری سے کم نہیں ۔ آج امریکا کے ماہرین کیوبا کی اس ترقی سے خود بھی فائدہ اُٹھانا چاہتے ہیں جس کی وجہ سے سرطان کی ویکسین کو ٹیسٹ کے لیے امریکا لایاگیا ہے ۔ اس سلسلے میں روزویل پاک کینسر انسٹی بفیلو نیویارک کو امریکی ادارے FADکی منظوری مل گئی ہے۔ یادرہے FAD دواؤں کے ٹرائل تیاری اور استعمال میں فیصلہ کن اتھارٹی کی حیثیت رکھتا ہے ۔ ماہرین کے مطابق یہ امیونو تھراپی ویکسین نہ صرف سرطان کی بڑھوتری کوروکے بلکہ زندگی کے دورانیے کوبھی بڑھائے گی ۔
یہ ویکسین جسم کے مدافعتی نظام میں موجود سرطان کے خلیوں کے لیے ضروری پروٹین کو ہلاک کردے گی ۔ یہ کیموتھراپی کے برخلاف سرطانی خلیات کو براہ راست ختم نہیں کریں گی ۔ اس مخصوص پروٹین کوروک دینا ویکسین کااصل مقصد ہوگا۔ جس کے بغیر سرطانی خلیات نہ تو پرورش پاسکتے ہیں نہ بڑھ سکتے ہیں ۔ یہ ویکسین بعدازاں ایک اور پروٹین کے ساتھ متصل ہوجائے گی جومدافعتی نظام کے ردعمل کا مقابلہ کرے گا جو سرطان کو بڑھانے والے پروٹین کو ضرر پہنچائیں گے نتیجے کے طور پر سرطان کو بڑھوتری دینے والی پروٹین کاخاتمہ ہوجائے گا اور سرطان کی بڑھوتری رک جائے گی ۔
یہ ویکسین اس سے قبل دنیا کے مختلف ملکوں بشمول بوسنیا ہرزیگووینیا ‘ کولمبیا‘ پیراگو ئے پیرو اور کیوبا میں ٹیسٹ کی جاچکی ہے اور ان تمام ممالک نے پھیپھڑوں کے سرطان کے لیے اس کااستعمال ضروری قرار دیا ہے ۔ ٹرائل کے طور پر اب تک پھیپھڑوں کے سرطان میں مبتلا چار ہزار مریضوں کو اس ویکسین کا استعمال کرایا جاچکا ہے ۔ ٹیسٹ کے نتائج خاص حوصلہ افزارہے ہیں۔ مذکورہ ویکسین کوویانا کے سنیٹر برائے اسکاٹرائل اگلے ماہ شروع ہوگا جس میں 60سے 90مریض شامل کیے جائیں گے ۔

(0) ووٹ وصول ہوئے