لاہور اوراسلام آباد میں شوگر ملز مالکان کے دفاتر پر چھاپے

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔13 ستمبر ۔2009ء) مسابقتی کمیشن کی جانب سے چینی کے بحران پر تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے۔ گزشتہ روز لاہور اور اسلام آباد میں شوگر ملز مالکان کے گوداموں اور دفاتر پر چھاپے مارکر ریکارڈ قبضے میں لیا گیا۔

(جاری ہے)

مسابقتی کمیشن نے اپنے اعلامیے میں کہا ہے کہ آل پاکستان شوگر ملز مالکان کے دفاتر سے حاصل کردہ ریکارڈ سے اس بات کا پتہ لگایا جائےگا کہ شوگر ملز مالکان چینی کی قیمتوں کا تعین کس بنیاد پر کرتے ہیں اور ان کی بتائی گئی چینی کی لاگت کس حد تک درست ہے۔

مسابقتی کمیشن نے کہاہے کہ شوگر ملز مالکان کا یہ رویہ اور فیصلے سی سی پی آرڈیننس کے سیکشن کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ مسابقتی کمیشن نے ہدایت کی ہے کہ شوگر ملز مالکان لاہور ہائی کورٹ کے احکامات کے مطابق چھتیس روپے فی کلو چینی کی فروخت کو یقینی بنائے۔ جبکہ ذرائع کا کہنا ہے کہ شوگر ڈیلرز کے اسٹاک میں دو لاکھ ٹن سے زائد چینی اور شوگر ملز کے گوداموں میں سات لاکھ ٹن سے زائد چینی موجود ہے۔

Your Thoughts and Comments