کرونا منتقل کرنے پرایرانی فضائی کمپنی کے سربراہ کے خلاف مقدمے کا مطالبہ

وائرس کے باوجود ماہان ائیرنے چین کے لیے پروزیں جاری رکھیں،سی ای او پر مقدمہ کیاجائے،شیریں عبادی

تہران(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 فروری2020ء) ایران کی ایک نوبل انعام یافتہ سماجی کارکن شیریں عبادی نے کہا ہے کہ تمام تر تنبیہ کے باوجود ایرانی فضائی کمپنی ماہان نے چین کے لیے پروازیں جاری رکھیں۔ ان پروازوں کے ذریعے کرونا وائرس ایران منتقل ہوا ہے جس کی تمام تر ذمہ داری ماہان کے چیف ایگزیکٹو حمید عرب نژاد پر عاید ہوتی ہے، ہمارا مطالبہ ہے کہ حمید نڑاد کے خلاف کرونا وائرس ایران منتقل کرنے کے الزام میں عدالت میں مقدمہ چلایا جائے۔

(جاری ہے)

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق عبادی نے ٹیلیگرام ایپ کے ذریعے جاری کیے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ماہان کے سی ای او پر کرونا وائرس ایران منتقل کرنے کا مقدمہ چلانے کے ساتھ ساتھ کرونا وائرس کے متاثر کو کمپنی سے ہرجانا دلوایا جائے تاکہ ان کے جانی نقصانات کی تلافی کی جاسکے۔انہوں نے کہا کہ چین میں کرونا وائرس کی وجہ سے پوری دنیا نے چین کے لیے اپنی پروازیں روکیں مگر ماہان کے سربراہ نے حقائق سے چشم پوشی اختیار کرتے ہوئے چینی سفیر سے ملاقات کی اور وعدہ کیا کہ مہان ایئر لائنز چین کے لیے اپنی پروازیں جاری رکھے گی۔

Your Thoughts and Comments