مسیحی روحانی پیشواء کا کرونا متاثرین اور ہیلتھ ورکرز سے اظہار یکجہتی

مسیحی روحانی پیشواء کا کرونا متاثرین اور ہیلتھ ورکرز سے اظہار یکجہتی
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 28 فروری2020ء) مسیحی روحانی پیشواء آرچ بشپ راولپنڈی/اسلام آباد ڈاکٹر جوزف ارشد نے کرونا وائرس سے متاثرہ افراد اوران کی دیکھ بھال کرنے والے ہیلتھ ورکر زکے ساتھ یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے دنیا کو اس خطرناک وائرس سے چھٹکارے کی دعا کی ہے۔ ڈاکٹر جوزف ارشد نے کہا کہ اِس وقت دُنیا میں تقریباً 90ہزار کے قریب لوگ اِس سے متاثر ہو چکے ہیںاورتقریباً 3000 افراداِس مہلک بیماری کا شکار ہو چکے ہیں جبکہ500ملین افراد سخت مشکل حالات کی وجہ سے گھر وں میں محصور ہر کر رہ گئے ہیں۔

المیہ یہ ہے کہ ابھی تک اِس وائرس کی وجہ اور علاج دریافت نہیں ہو سکا، اِس وقت چائنہ ، ایران، کوریا اور اٹلی جیسے ترقی یافتہ ممالک کرونا وائرس کا مرکز بنے ہوئے ہیں ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ گذشتہ دو دہائیوںسے دُنیا میں سارس، مرس کے مہلک وائرس کو پھیلتے ہوئے دیکھا گیا ہے اور اب بد ترین کرونا وائرس کے حملے کے اثرات پوری دُنیا میںپھیل رہے ہیں۔

جس کی وجہ سے بہت سارے ممالک کی معیشت کوبہت بڑا دھچکا لگا ہے جبکہ وہ ممالک جن کا انحصار سیاحت پر ہے وہ بھی بہت سی مشکلات کا شکار ہو رہے ہیں ۔ اُن کے بازار ، تجارتی منڈیاں اور سیاحتی مقامات ویرانی کا سما پیش کر رہے ہیں۔ عالمی ادارہ برائے صحت نے انسانیت کے لئے اِسے بہت بڑا خطرہ اور چیلنج قراردیا ہے ۔ انسانیت کے اِس دُکھ اور تکلیف کی گھڑی میں میًں تمام لوگوں سے اُن لوگوں کے لئے دُعا کی التماس کرتا ہوں جو کروناجسے خطرناک وائرس کا شکار بنے یا اِس وقت زندگی اور موت کی کشمکش میں مُبتلا ہیں۔

انہوںنے کہاکہ ہمیں اس وقت اُن لوگوں کی کوششوں کے لئے بھی دُعا کرنا ہے جو کرونا وائرس کے علاج اور خاتمے کے لئے خدمات سر انجام دے رہے اور تحقیق کر رہے ہیں جن میں بہت سارے سائنسدان ، ڈاکٹرزاور حکومتی ادارے وغیرہ شامل ہیں۔

Your Thoughts and Comments