اسلام آباد میں تیزی سی پھیلتی کرونا کی پانچویں لہر نے ڈاکٹرز کو متاثرہ کرنا شروع کر دیا

پمز کی او پی ڈیز میں مریضوں کی غفلت ڈاکٹرز کے لیے درد سر بننے لگی، اوپی ڈیز بند اور وقت کا دورانیہ کم کرنے کے آپشن پر غور

اسلام آباد میں تیزی سی پھیلتی کرونا کی پانچویں لہر نے ڈاکٹرز کو متاثرہ کرنا شروع کر دیا
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 22 جنوری2022ء)وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں تیزی سی پھیلتی کرونا کی پانچویں لہر نے ڈاکٹرز کو متاثرہ کرنا شروع کر دیا ،ڈاکٹرز کی بڑی تعداد کرونا میں مںبتلا ہونے سے ہییلتھ ورکرز کی شدید کمی کے خطرات جنم لینے لگے۔

(جاری ہے)

پمز انتظامیہ کے مطابق آسلام آباد کے سب سے بڑے ہسپتال پمز میں 150 سے زائد ڈاکٹز اور سٹاف کرونا مبتلاہوگیا ،پمز کے کارڈیک شعبے کے 30 سے زائد ڈاکٹرز اور سٹاف کرونا کا شکار ہوئے ،پمز کی او پی ڈیز میں مریضوں کی غفلت ڈاکٹرز کے لیے درد سر بننے لگی، ہیلتھ ورکرز کی جانب انتظامیہ سے صرف ان ڈور ایمرجنسی کھلی رکھنے کی درخواست کی گئی ،پ اوپی ڈیز بند اور وقت کا دورانیہ کم کرنے کے آپشن پر غور شروع کر دیاگیا ،پولی کلینک ،سی ڈی اے ،نرم،سول سرجن ڈسپنسری میں بھی درجنوں ڈاکٹرز شہریوں کی لاپرواہی سے کرونا میں مبتلا ہوگئے ،شہریوں کی جانب سے کرونا ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے کے باعث ہیلتھ ورکرز کرونا کا پہلا شکار ہونے لگے۔

Your Thoughts and Comments