بند کریں
صحت صحت کی خبریںپاکستان علماء کونسل انتظامیہ ، حکومت اور تمام مکاتب فکر سے رابطے میں ہے ‘ حافظ طاہر محمود ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 02/11/2014 - 22:21:36 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 20:29:45 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 20:14:14 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 17:21:13 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 15:42:58 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 14:49:40 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 14:47:19 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 14:47:19 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 14:45:31 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 14:43:34 وقت اشاعت: 02/11/2014 - 12:02:54

پاکستان علماء کونسل انتظامیہ ، حکومت اور تمام مکاتب فکر سے رابطے میں ہے ‘ حافظ طاہر محمود اشرفی

امید ہے تمام مکاتب فکر ، علماء ، ذاکرین ، خطباء جلسے ، جلوسوں اور مجالس میں مشترکہ ضابطہ اخلاق کی پابندی کرینگے‘ چیئرمین علماء کونسل

لاہور(اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔2 نومبر 2014)پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ محرم الحرام میں امن و امان کے قیام کے لیے پورے ملک میں پاکستان علماء کونسل کے دد ہزار سے علماء ، مشائخ اور ذمہ داران انتظامیہ ، حکومت اور تمام مکاتب فکر سے رابطے میں ہیں، امید ہے کہ تمام مکاتب فکر ، علماء ، ذاکرین ، خطباء جلسے ، جلوسوں اور مجالس میں مشترکہ ضابطہ اخلاق کی پابندی کریں گے۔

یہ بات انہوں نے محرم الحرام کے سلسلہ میں قائم رابطہ سیل کے ذمہ داروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی ۔ انہوں نے کہا کہ تمام مکاتب فکر کے مقدسات کا احترام ہی ہمیں فرقہ واریت اور فرقہ وارانہ تشدد سے محفوظ رکھ سکتا ہے ۔ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ جو ذاکر ، واعظ ، خطیب یا مکرر ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرے اس کے خلاف فوری ایکشن لے ۔ محرم الحرام کے بعد تمام مکاتب فکر کا مشترکہ اجلاس بلایا جائے گا جس میں پورے سال کے لیے ایک مربوط جدوجہد کا پلان تشکیل دیا جائے گا جس سے انتہاء پسندی اور عدم برداشت کے رویوں میں تبدیلی آ سکے۔

حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ کراچی ، کوئٹہ اور راوالپنڈی کے واقعات انتہائی افسوسناک تھے لیکن ہمیں امید ہے کہ تمام مکاتب فکر کے تعاون سے انشاء اللہ محرم الحرام کے ایام امن و امان سے گزر جائیں گے۔ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ حکومتی ذمہ داران اورامن و امان کے قیام کے لیے کام کرنے والے اداروں اور پاکستان علماء کونسل کے قائدین کے درمیان رابطے موجود ہیں اور امید ہے کہ ضابطہ اخلاق پر عمل کیا جائے گا اور حکومت امن و امان کے قیام کے لیے کسی بھی قسم کی کوتاہی نہیں کرے گی۔

02/11/2014 - 14:49:40 :وقت اشاعت