بند کریں
صحت صحت کی خبریںکراچی سرکلر ٹرین کی بحالی غریب اور متوسط طبقے کیلئے تحفہ ہوگی ،عثمان معظم

صحت خبریں

وقت اشاعت: 12/04/2015 - 14:35:13 وقت اشاعت: 12/04/2015 - 14:15:11 وقت اشاعت: 12/04/2015 - 13:42:41 وقت اشاعت: 12/04/2015 - 13:24:34 وقت اشاعت: 12/04/2015 - 13:03:22 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 22:05:10 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 22:03:26 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 21:44:29 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 20:39:47 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 20:38:45 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 20:30:11

کراچی سرکلر ٹرین کی بحالی غریب اور متوسط طبقے کیلئے تحفہ ہوگی ،عثمان معظم

کراچی ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔11 اپریل۔2015ء)امیدوار ضمنی الیکشن حلقہ NA-246اور جنرل سیکریٹری پاسبانِ پاکستان عثمان معظم نے کہا ہے کہ کراچی سرکلر ٹرین کی بحالی کراچی کے غریب اور متوسط طبقہ کیلئے تحفہ ہوگی۔پاسبان مرکزی الیکشن کیمپ کریم آباد میں علاقہ مکینوں کے ہمراہ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے عثمان معظم نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ شہریوں کے پبلک ٹرانسپورٹ کے مسئلے کو حل کرنے کے لئے سرکلر ریلوے نظام کو دوبارہ بحال کیا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے کراچی کے پبلک ٹرانسپورٹ نظام کو تباہ کرکے کراچی کے شہریوں کا معاشی قتل عام کیا ہے ۔ کراچی کے مزدور طبقے کو فوری طور پر سستی ، باسہولت اور باعزت ٹرانسپورٹ کی ضرورت ہے تاکہ ملک کے صنعتی حب کی اقتصادی ترقی کے عمل کو دوبارہ جاری کیا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومت نے سرکلر ریلوے کا نظام ختم کرکے کراچی اور اس کے شہریوں کے ساتھ بڑی ناانصافی کی ہے، ایک سازش کے تحت ریلوے کی زمینوں پر لینڈ مافیا کو قابض ہونے کا موقع فراہم کرنے کیلئے کراچی سرکلر ریلوے کو تباہ کرکے بند کردیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ لیکن ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے ۔کراچی سرکلر ریلوے نظام کو بحال کرنے کیلئے کسی راکٹ سائنس کے پیچیدہ تجربے یا نظام کی حاجت نہیں ہے یہ وفاق اور صوبائی حکومت کے ایک عام سرکولر کے ذریعے بحال ہو کر دوبارہ فعال ہوسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے کی بحالی صرف کراچی ہی نہیں ملک کی معاشی ترقی میں اہم کردار ادا کرے گی ۔

انہوں نے کہا کہ پرائیوٹ پبلک ٹرانسپورٹ کی ہڑتالوں کے موقع پر بھی سرکلر ریلوے شہر کی صنعتی اور تجارتی سر گرمیوں کو مکمل بند ہونے سے روکنے کا بھی موثر ذریعہ تھی۔ عثمان معظم نے مزید کہا کہ اگر حکمران کراچی کو یورپی معیار کی ٹرانسپورٹ فراہم نہیں کرسکتے ہیں تو کم از کم لاہور کے معیار کی ہی ٹرانسپورٹ فراہم کردیں ۔ حکمرانوں کو یہ سمجھنا چاہئے کہ شہریوں کو اس وقت ریپڈ بس سسٹم کی بجائے سرکلر ریلوے نظام کی زیادہ ضرورت ہے جسے بحال کرنا نسبتاََ زیادہ سستا اور آسان ہے ۔

کراچی کی معیشت کو پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم کو تبدیل کرنے تک بہتر نہیں کیا جاسکتا ہے جبکہ سندھ کے دیہی اور شہری و ڈیرے حکمران نہیں چاہتے کہ صوبے کے ٹرانسپورٹ نظام میں بہتری آئے کیونکہ شہریوں کی معاشی ترقی صوبے کی سماجی اور سیاسی اقدار کو تبدیل کرنے کا سبب بنے گی اور جس کی وجہ سے غنڈہ گردی ، دھونس اور دھاندلی کی سیاست ختم ہوجائے گی ۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر کراچی میں پبلک ٹرانسپورٹ کا مسئلہ حل نہ کیا گیا تو وہ رائے عامہ کو متحرک کریں گے ۔

کراچی کے شہری ہر قیمت پر سرکلر ریلوے کی بحالی چاہتے ہیں جس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم کو ازسر نو مرتب کیا جائے ، شہر میں چلنے والی چھوٹی تنگ ویگنوں اور کوچز کا خاتمہ کرکے کشادہ اور بڑی بسیں چلائی جائیں اور ان کا کرایہ CNGکی کھپت کے مطابق مقرر کیا جائے اور طلباء و طالبات کو کرایوں میں ماضی کی طرح رعایت دی جائے ۔

11/04/2015 - 22:05:10 :وقت اشاعت