بند کریں
صحت صحت کی خبریںپنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز سمیت جنرل ہسپتال کیلئے 2655 نئی آسامیوں کی منظوری
خواتین، ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 18/04/2016 - 13:43:05 وقت اشاعت: 18/04/2016 - 13:31:38 وقت اشاعت: 18/04/2016 - 13:23:40 وقت اشاعت: 18/04/2016 - 12:55:46 وقت اشاعت: 18/04/2016 - 12:27:29 وقت اشاعت: 17/04/2016 - 17:57:05 وقت اشاعت: 16/04/2016 - 16:22:35 وقت اشاعت: 16/04/2016 - 16:22:09 وقت اشاعت: 16/04/2016 - 16:11:32 وقت اشاعت: 16/04/2016 - 15:00:19 وقت اشاعت: 16/04/2016 - 14:56:48

پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز سمیت جنرل ہسپتال کیلئے 2655 نئی آسامیوں کی منظوری

خواتین، اقلیتوں، خصوصی افراد اور ملازمین کے بچوں کو حکومتی کوٹہ کے مطابق ملازمتیں ملیں گی

لاہور۔17 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔17اپریل۔2016ء )وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز سمیت لاہور جنرل ہسپتال کیلئے مجموعی طور پر 2655 نئی آسامیوں کی منظوری دے دی ، نئے ملازمین کی بھرتی اور تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے فنڈز بھی منظور کر لئے گئے - پاکستان میں ڈی بی ایس علاج کے بانی اور پرنسپل پی جی ایم آئی وامیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر خالد محمود نے گزشتہ روز انتظامی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے بتایا کہ مجموعی آسامیوں میں سے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز میں ملازمت کی مختلف کیٹگری کیلئے 847 آسامیاں مختص کی گئی ہیں جبکہ ہسپتال کے ماسٹر پلان کے تحت بنائے جانے والے فیز ٹو اور تھری کیلئے بالترتیب 199 اور 236 نئے ملازمین 30 جون تک بھرتی کئے جائیں گے علاوہ ازیں ہسپتال میں 1373 چارج نرسز کی بھرتی کا آغاز آئندہ مالی سال سے کیا جائے گا - اجلاس میں ایم ایس کیپٹن (ر)ڈاکٹر نیازاحمد ، ڈپٹی چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ فرحت محبوب ، اے ایم ایس اے ڈی پی ڈاکٹر محمد اقبال کے علاوہ دیگر شعبوں کے انتظامی ڈاکٹرز بھی موجود تھے-پروفیسر خالد محمود نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ادارے کے لئے مہیا کی گئی ملازمتوں میں ملازمین کے بچوں ، خواتین ، معذور افراد اور اقلیتوں کے لئے مخصوص کوٹے پر بھی حکومتی قوانین کے مطابق عملدرآمد کیا جائے گا نیز تمام بھرتیاں میرٹ پر ہوں گی- انہوں نے کہا کہ حکومت کے اس انقلابی اور مریض دوست اقدام کی بدولت ایل جی ایچ میں علاج معالجہ اور مریضوں کی نگہداشت کی سہولیات کا معیار مزید بلند ہو گا اور ہزاروں خاندانوں کو روزگار کے مواقع میسر آئیں گے جس سے صوبے کا طبی شعبہ مزید ترقی کرے گا- پرنسپل پی جی ایم آئی نے کہا کہ محکمہ صحت پنجاب کی طرف سے حال ہی میں گریڈ 16 میں کام کرنے والی نرسوں کو گریڈ 17 میں ترقی دینے کے اعلان کے بعد ترقی پانے والی نرسیں صوبائی دارالحکومت میں سیٹوں کی کمی کی وجہ سے دوسرے شہروں کے طبی اداروں میں تبدیل کر دیا گیا تھا ان میں سے 16 ہیڈ نرسوں کو اب پی آئی این ایس میں ایڈجسٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس سے ان خواتین کی مشکلات کم ہوں گی اور ان کے اہل خانہ کو ریلیف ملے گا- پروفیسر خالد محمود نے کہا کہ پی آئی این ایس اس خطے کا اپنی نوعیت کا سب سے بڑا دماغی امراض کے علاج کا ادارہ بن کر ابھرے گا - تقریبا 500 بیڈز پر مشتمل اس عظیم علاج گاہ میں ایک ہی چھت تلے ایم آر آئی، سی ٹی سکین ، ڈیجیٹل ایکسرے ، بلڈ بنک، لیب ٹیسٹ سمیت تمام طبی و تشخیصی سہولیات مریضوں کو میسر آئیں گی- انہوں نے کہا کہ اس علاج گاہ کے قیام کی وجہ سے وزیر اعلی محمد شہباز شریف اور ان کے طبی ویژن کا ذکر تاریخ میں ہمیشہ سنہری حروف سے لکھا جائے گا۔

17/04/2016 - 17:57:05 :وقت اشاعت