پشاور میں ایک بار پھر معصوم نہتے طلبائ کو خون میں نہلا دیا گیا ،رہنماء اہل سنت والجماعت

ٴمعصوم اور نہتے بچوں کو نشانہ بنان انسانیت کی بدترین تذلیل اور درندگی، سفاکیت کی بدترین مثال ہے yسانحہ دارالعلوم زبیریہ پرحملہ قال اللہ و قال رسول کی صداوں کو دبانے اور شمع توحید کو بجھانے کی ناپاک سازش کی کڑی ہے،اندرونی و بیرونی دشمن ایک ہوکر ملکی سلامتی کے درپے ہوچکا ہے،مشترکہ بیان

منگل اکتوبر 22:50

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 27 اکتوبر2020ء) سانحہ اے پی ایس پشاور کے بعد ایک بار پھر معصوم نہتے طلبائ کو خون میں نہلا دیا گیا معصوم اور نہتے بچوں کو نشانہ بنانا انسانیت کی بدترین تذلیل اور درندگی، سفاکیت کی بدترین مثال ہے۔سانحہ دارالعلوم زبیریہ پرحملہ قال اللہ و قال رسول کی صداوں کو دبانے اور شمع توحید کو بجھانے کی ناپاک سازش کی کڑی ہے۔

ایسا محسوس ہوتا ہے کہ اندرونی و بیرونی دشمن ایک ہوکر ملکی سلامتی کے درپے ہوچکا ہے۔کبھی ملک کے نظریاتی محافظ علمائ کرام کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے کبھی سرحدی محافظوں کی جوانیاں اور زندگیاں موت کے گھاٹ اتار دی جاتی ہیں۔ پاکستان کے بائیس کروڑ عوام متحد ہوکر دشمن کی بزدلانہ کارروائیوں کو ناکام بنانے میں کردار ادا کریں۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار سربراہ اہل سنت والجماعت مولانا محمد احمد لدھیانوی،مرکزی صدر علامہ اورنگزیب فاروقی،مرکزی رہنما علامہ مسعودالرحمن عثمانی نے اپنے مشترکہ بیان میں کیا۔

قائدین نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ افسوس ناک واقعہ کے تمام محرکات قوم کے سامنے لائے جائیں۔ دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں جن کی سالمیت اور تحفظ کیلئے فرزندان توحید کسی قربانی سے گریز نہیں کریں گے۔ تاجدار کائنات کے نصاب امن کی تعلیم حاصل کرتے وادیئ اسلام کے نو خیز پھولوں کی قربانی رائیگاں نہیں جانے دیں گے۔ بزدل سفاک، اسلام و پاکستان کے دشمن عناصر یاد رکھیں بدر و حنین کے وارث دین متین کی حرمت اور تحفظ کیلئے ہر میدان میں ڈٹ کر مقابلہ کرکے ناسور عناصر کو شکست سے دوچار کریں گے۔۔۔۔اعجاز خان

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments