گورنر نے استحقاق بل کوآئین سے متصادم قرار دے کر اعتراضات کیساتھ سپیکر پنجاب اسمبلی کو بھجوا دیا

سپیکر اور استحقاق کمیٹی کو دئیے گئے اختیارات آئین کے آرٹیکل 66-3 اور 10- A سے متصادم ہیں‘ اعتراضات

جمعرات 29 جولائی 2021 23:28

گورنر نے استحقاق بل کوآئین سے متصادم قرار دے کر اعتراضات کیساتھ سپیکر ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 29 جولائی2021ء) گورنر پنجاب چوہدری سرور نے استحقاق بل کوآئین سے متصادم قرار دے کر اعتراضات کیساتھ سپیکر پنجاب اسمبلی کو بھجوا دیا۔نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ اعتراضات میں کہا گیا ہے کہ بل کے تحت سپیکر اور استحقاق کمیٹی کو دئیے گئے اختیارات آئین کے آرٹیکل 66-3 اور 10- A سے متصادم ہیں، استحقاق بل میں تجویز کی گئی سزائیں بھی آئین سے متصادم ہیں۔

(جاری ہے)

ذرائع کے مطابق اعتراضات میں کہا گیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 8, 10.10A اور آرٹیکل 25 کے تحت بل کا ازسرنو جائزہ لینا ضروری ہے۔ذرائع کے مطابق پنجاب اسمبلی کے منظور کردہ بل پر وزیراعظم اور وزیراعلی ہائوس نے اعتراض کیا تھا، وزیراعظم کی ہدایت پر گورنر نے استحقاق بل کی منظوری نہیں دی۔ ذرائع کا کہنا ہے گورنر کے اعتراضات سپیکر پنجاب اسمبلی کو موصول ہوگئے ہیں، سپیکر نے گورنر کے اعتراضات کے بعد اپنی قانونی ٹیم سے مشاورت شروع کر دی ہے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments