جاوید میاںداد کے بھانجے فیصل اقبال ہیڈ کوچ کے عہدے سے برطرف

فیصل اقبال کا اپنے ادارے پی آئی اے کیساتھ حل طلب معاملے کو نمٹائے بغیر ڈومیسٹک کرکٹ کے اہم ٹورنامنٹ میں شرکت کرنا انکے اور بلوچستان کی ٹیم کیساتھ غیر منصفانہ ہوگا: پی سی بی

Zeeshan Mehtab ذیشان مہتاب جمعرات ستمبر 14:09

جاوید میاںداد کے بھانجے فیصل اقبال ہیڈ کوچ کے عہدے سے برطرف
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 24 ستمبر 2020ء ) پاکستان کرکٹ بورڈ نے نیشنل ٹی ٹونٹی کپ کے لیے بلوچستان کے ہیڈ کوچ کی حیثیت سے فیصل اقبال کا نام واپس لے لیا ہے۔ سابق ٹیسٹ کرکٹر نے تصدیق کی تھی کہ ان میں اور ان کے ادارے، پی آئی اے، کے درمیان ایک معاملہ حل طلب ہے، جسے جلد حل کرلیا جائے گا۔ پی سی بی کا کہنا ہے کہ 40 سالہ فیصل اقبال کا اپنے ادارے کے ساتھ اس حل طلب معاملے کو نمٹائے بغیر ڈومیسٹک کرکٹ کے ایک اہم ٹورنامنٹ میں شرکت کرنا خود ان کے اور ان کی ٹیم کے ساتھ غیر منصفانہ ہوگا۔

پی سی بی کا مزید کہنا ہے کہ جب پی آئی اے، فیصل اقبال کو حل طلب معاملے پر کلین چٹ دینے کے ساتھ ساتھ این او سی فراہم کردے گا تو پھر سابق ٹیسٹ کرکٹر کو دوبارہ اپنی ڈومیسٹک ٹیم کو جوائن کرنے کے کی اجازت دے دی جائے گی۔

(جاری ہے)

اس وقت تک وسیم حیدر، بلوچستان کرکٹ ٹیم کے عبوری ہیڈ کوچ کی حیثیت سے ذمہ داریاں نبھائیں گے۔ فیصل اقبال لیجنڈری بلے باز جاوید میاںداد کے بھانجے ہیں،ان کی تقرری پی سی بی نے 63 سالہ جاوید میاںداد کی جانب سے وزیراعظم عمران خان اور کرکٹ بورڈ پر بھر پور تنقید کے بعد اچانک کی تھی لیکن اب ایک تیکنیکی مسئلہ پر ان کی عبوری برطرفی بھی ہوگئی ہے۔