Phaloon Se Ghazayyat Or Shifa Hasil Kijye

پھلوں سے غذائیت اور شفاء حاصل کیجیے!

ہفتہ جولائی

Phaloon Se Ghazayyat Or Shifa Hasil Kijye
خوراک کی سب سے قدیم اور جانی پہچانی شکل پھل ہیں۔پھلوں میں قدرت نے ایسے کئی غذائی اجزاء یکجا کر دیے ہیں جن کی انسانی جسم کو صحت بر قرار رکھنے کی اشد ضرورت ہوتی ہے۔پھلوں میں وٹامنز ،معدنیات اور انزائمزوافر مقدار میں پائے جاتے ہیں۔
قدرت نے موسموں کے لحاظ سے پھلوں میں افادیت رکھی ہے۔برسات کے موسم میں آنے والے پھل نا صرف جسم کو غذائیت فراہم کرتے ہیں بلکہ کئی امراض میں بھی مفید پائے گئے ہیں۔

ذیل میں موسم برسات کے چند خوش ذائقہ رسیلے پھلوں کی افادیت اور اہمیت کا ذکر کیا جارہا ہے۔
آلو بخارا
برسات کے موسم میں آلو بخارا جسم وجاں قلب ودماغ کی تسکین کے لیے مفید پھل مانا جاتا ہے ۔حبس اور گرمی سے براحال ہو جائے تو ایسے میں چند آلو بخارے کھا لینے سے طبیعت سنبھل جاتی ہے۔

(جاری ہے)

ٹھنڈے آلو بخارے جسم کی گرمی زائل کرتے ہیں ۔

دل وجگر کو قوت دیتے ہیں،مزاج کا چڑ چڑاپن دور کرتے ہیں ۔گرمی کی وجہ سے سر میں درد ہو رہا ہو،بے چینی بڑھ جائے،متلی ،قے ،بدہضمی ہو کچھ کھانے پینے کو دل نہ چاہے تو آلو بخارے کھانے سے آرام آتا ہے۔جگر کی گرمی میں آلو بخارے کھائیں۔بلڈ پریشر ہائی نہ ہو تو کالا نمک پیس کر ہلکا سا چھڑک کر کھانے سے معدے جگر کو تقویت ملے گی۔
کچھ لوگوں کو چکر آتے ہیں ۔

دیرینہ قبض رہتا ہے ۔کان بجتے ہوئے محسوس ہوتے ہیں۔وہ ناشتہ میں روزانہ آلو بخارے کھائیں تو ان پریشانیوں سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔حاملہ خواتین کی طبیعت کھانے کی طرف مائل نہیں ہوتی وہ آلو بخارے کھائیں ،بھوک لگے گی۔ایک پاؤ آلو بخارے میں دو روٹیوں کے برابر طاقت ہوتی ہے ۔کمزوری ہو ،بیماری سے صحت یاب ہوئے ہوں تو آلو بخارے غذا میں شامل کرنے سے کمزوری دور ہو جاتی ہے۔


ماہرین طب کا کہنا ہے کہ آلو بخارے کے موسم میں روزانہ چند دانے کھانے سے کئی امراض سے محفوظ رہا جا سکتا ہے ۔جب تک موسم کے آلو بخارے دستیاب ہوں انہیں ضرور کھائیں۔
مثانہ میں گرمی ہو ،خون کی تیزابیت بڑھ جائے۔پیٹ میں ہر وقت گیس کی شکایت رہے۔قبض دورنہ ہوتا ہو۔صبح اٹھ کر بد مزہ ڈکار آتے ہوں تو صبح کے وقت آلو بخارے کھائیں۔برسات میں گرمی کی شدت سے جسم میں خارش ،کھجلی ہو جاتی ہے ۔

ایسے میں دن میں دوبار آلو بخارے کھانے اور شربت عناب پینے سے فرق پڑجاتا ہے ۔آلو بخارے کا مربہ اور جیم بھی بنتا اور سوکھے آلو بخارے کی میٹھی چٹنی خوش ذائقہ بھوک لگانے والی ہوتی ہے۔
جامن
برسات کے موسم میں پھوڑے پھنسی والی جلدی بیماریاں ہو جاتی ہیں۔یہ خون میں کثافت کی علامتیں ہیں۔خون صاف کرنے کے لیے جامن اور نیم مفید ہیں ۔

جامن کا گودا پھل دونوں ہی کار آمد ہیں۔
شوگر کے مریضوں کے لیے ایک اچھا تحفہ۔اس کی گھٹلیاں بھی سکھا کر سارا سال کام آتی ہیں۔انسانی جسم کے اندر گرمی ،غیر ضروری حرارت کو جامن کنٹرول کرتا ہے۔یہ خون بھی صاف کرتا ہے ۔گرم مزاج کے لیے مفید ہے۔اس کے اندر سائیڈک ایسڈ موجود ہے جو بھوک بڑھاتا ہے ،معدے اور آنتوں کو تقویت دیتاہے۔جلن اور خراش کو بھی دور کرتاہے۔


گرمی کی وجہ سے پیشاب جل کر سرخ رنگ کا آئے تو جامن کھانے سے آرام آتا ہے ۔قے،متلی،بیضہ جیسی بیماری میں مفید بتایا جاتا ہے۔جامن دھو کر کسی برتن میں ڈال کر معمولی سانمک چھڑ ک کر خوب ہلا کر نرم کرکے کھانے چاہئیں اطباء کے مطابق اس طرح جامن کی اصلاح ہو جاتی ہے ۔کچھ لوگ تھوڑی سی سونٹھ پیس کر رکھ لیتے ہیں۔ وہ بھی نمک کالی مرچ کے ساتھ جامنوں پر لگا کر کھاتے ہیں۔

جامن ناصرف جسم کی کمزوری دبلے پن کو دور کرتا ہے بلکہ پیٹ درد میں بھی مفید بتایا جاتا ہے ۔جامن کی گھٹلی سکھا کر نمک کالی مرچ ملا کر منجن بنایا جائے،دانتوں کی اکثر بیماریوں میں مفید بتایا جاتاہے۔
آڑو
آڑو ایک صحت بخش پھل ہے ۔ہماری جلد کو شاداب رکھتا ہے۔سانس کی تکالیف ،دمہ،ہائی بلڈ پریشر،گردے کے ورم،خون کی کمی،اعصابی کمزوری،تیزابیت وغیرہ میں شفا بخش ہے ۔

آڑو کا جوس اور جیم بھی ملتا ہے۔آڑو خواتین کے حسن کی حفاظت بھی کرتا ہے ۔ایسے کھائیے بھی اور اسے لگائیے بھی۔آڑو کا اسکرب اور ماسک جلد کو تازگی دیتا ہے۔پیٹ میں کیڑے ہوں تو شام کے وقت تین چار آڑو کھانے سے پیٹ کے کیڑے نکل جاتے ہیں۔آڑو کھانے سے بھوک لگتی ہے۔ہاضمہ اور معدہ ٹھیک رہتا ہے۔آپ آڑو کی چاٹ بھی بنا کر کھاسکتے ہیں۔
خوبانی
خوبانی بہت سے طبی خواص کا حامل پھل ہے۔

خشک خوبانی کے ایک چھوٹے سے دانے کے اندر صحت کا خزانہ چھپا ہوا ہے۔خوبانی کا استعمال جلد بڑھاپے اور اعصابی کمزوری سے محفوظ رکھتا ہے ۔خوبانی گھٹنوں ،جوڑوں اور پٹھوں کے درد سے بھی محفوظ رکھتی ہے اور دل اور دماغ کو طاقت مہیا کرتی ہے ۔کھانا کھانے سے قبل خشک خوبانی کا استعمال ہاضمے کو بہتربناتا ہے ۔یہ معدے کو صحت مند بنانے میں بھی مدد دیتی ہے۔

کیلشیم سے بھر پور ہونے کے باعث یہ ہڈیوں کی صحت کے لئے بھی مفید ہے ۔خشک خوبانی میں پوٹا شیم بھی کافی مقدار میں پایا جاتا ہے ۔اس میں پائے جانے والے فائبر کی بھاری مقدار جسم کی میٹابولک کار کردگی کو مزید فعال بنا دیتی ہے جو وزن کم کرنے میں مدد دیتی ہے۔
خوبانی میں فائبرکی بھاری مقدار کو لیسٹرول کی سطح کو بھی کنٹرول کرتی ہے جس کے باعث دل کے امراض لاحق ہونے کے خطرات میں کمی واقع ہوتی ہے ۔آدھا کپ خشک خوبانی کا استعمال دل کی صحت کے لئے مفید ہے۔اس میں موجود آئرن خون کی کمی کو دور کرنے میں بھی اہم کردار ادا کرتاہے۔خوبانی میں وٹامن اے ،سی،پوٹاشیم،فولاد اور بیٹا کیروٹین بکثرت پائے جاتے ہیں۔
تاریخ اشاعت: 2019-07-13

Your Thoughts and Comments