Peep Parna

پیپ پڑنا

Peep Parna
پیپ پڑنا:
جلد میں کہیں بھی پیپ پڑسکتی ہیں متاثرہ حصے میں پہلے جلن اور درد ہوتا ہے پھر یہ سرخ ہوکر اس جگہ سخت ورم بن جاتا ہے اور کچھ دن بعد اس میں سفید سی پیپ جھلکنے لگتی ہے اس وقت پیپ پک چکی ہوتی ہے تب جلد میں سوراخ ہوجاتا ہے اور پیپ بہنے لگتی ہے گندہ مواد نکلنے کے بعد زخم صاف ہوکر مندمل ہوجاتا ہے بعض اوقات پیپ پڑپڑنے سے سخت درد ہوتا ہے اور بخار بھی ہوسکتا ہے اگر پیپ خون کی کسی رگ سے بہت قریب ہوتو یہ رگ کے اندر گندہ مواد مستقل کرکے مہلک ثابت ہوسکتی ہے۔


علاج: پیپ کے پکنے تک اسے اس کے حال پر چھوڑ دینا چاہیے اگر پیپ خاصی زیادہ ہو تو اس کے پھٹنے اور بہہ نکلنے کا انتظار کرنے کی بجائے اسے چیز دینا زیادہ مناسب ہوتا ہے پکنے کے کچھ عرصہ پہلے پیپ بہت تکلیف دہ ہوتی ہے گرم کپڑے سے ٹکور کرنے سے بھی اسے جلدی پکایا جاسکتا ہے البتہ اس پر پولٹس باندھنے کی غلطی نہ کریں اگر پیپ تھوڑی یا سطحی ہو تو آپ خود بھی اسے چیر سکتے ہیں نشتر جراثیم سے پاک ہونا ضروری ہے استعمال سے پہلے اسے اچھی طرح ابال لیں یاکچھ دیر کے لیے سپرٹ میں رکھ چھوڑیں ہمارے ہاں پھوڑے چیرنے کا کام عموماً حجام یا جراح قسم کے لوگوں سے کرایا جاتا ہے ان لوگوں کے گندے نشتر خود پیپ سے زیادہ خطرناک ہوتے ہیں اگر پیپ بہت زیادہ اور گہری ہو یا اسے چیرنے کی آپ میں ہمت نہ ہو تو کسی ڈاکٹر سے رجوع کریں چیرنے کے بعد جسم سے ساری پیپ کا نکل جانا ضروری ہے اسی لیے کچی پیپ کو پکنے دیا جاتا ہے اگر کچھ پیپ زخم میں باقی رہ جائے تو یہ از سو نو زخم کو خراب کردے گی زخم صاف کرکے اس پر سپرٹ ٹنکچر آئیوڈین ایکری فلیوینAcreflavin یا یوریک ایسڈ لوشن لگا کر پٹی باندھ دیں زخم کے مندمل ہونے کے دوران لحمیاتی غذاؤں اور وٹامنز خصوصاً وتامن سی کی کثیر مقدار کھائیں زخم خراب ہوجانے کی صورت میں ڈاکٹر کو دکھانا نہ بھولیں۔

(جاری ہے)


پت یا گرمی دانےPrickly Heat : یہ گرم مرطوب علاقوں کی بیماری ہے جن لوگوں کو پسینہ زیادہ آتا ہے وہ اس بیماری سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں جو لوگ اس ماحول کے عادی ہوں انہیں زیادہ پت نہیں نکلتی البتہ نازک جلد والوں کو خاصا پریشان ہونا پڑتا ہے۔
علاج: صفائی پہلی ضرورت ہے بچوں اور نازک جلد والے لوگوں کو ایسی آب و ہوا سے بچ کر کسی صحت افزا مقام پر چلاجانا چاہیے پت کو کھجانا خطرناک ہوتا ہے کیونکہ اس طرح جراثیم کو جلد میں داخل ہوئے اور کمزور لوگوں میں کئی بیماریاں پیدا کرنے کا موقع مل جاتا ہے کھجانے سے پرہیز بہت مشکل ہے البتہ جراثیم کی دست برد سے محفوظ رہنے کے لئے جلد پر کیلا مین لوشن یا بنزڈرینBenzedrine لگائے جاسکتے ہیں نہانے کے بعد پت پوڈر یا کیلا مین لوشن لگائیں نہانے کے بعد جلد اچھی طرح خشک کریں شدید ورزش یا ایسے ماحول سے پرہیز کریں جس میں بہت زیادہ پسینہ آنے کا امکان ہو بہت سے متاثر لوگوں کو ہلکی پھلکی غذا کھانی چاہیے میٹھا سوڈا ملا پانی غسل کے لیے زیادہ موزوں ہے۔

تاریخ اشاعت: 2018-01-13

Your Thoughts and Comments