بند کریں
صحت مضامینمضامینسینے کی جلن

مزید مضامین

پچھلے مضامین - مزید مضامین
سینے کی جلن
سینے کی جلن یاسوزش، معدے میں تیزابیت (ترشی) بڑھنے کی واضح علامت ہے اور تجربات شاہد ہیں کہ ہمارے ہاں یہ شکایت بڑھتی جارہی ہے اور۔۔۔
حکیم راحت نسیم سوہدروی:
سینے کی جلن یاسوزش، معدے میں تیزابیت (ترشی) بڑھنے کی واضح علامت ہے اور تجربات شاہد ہیں کہ ہمارے ہاں یہ شکایت بڑھتی جارہی ہے اور اس مرض میں مبتلا مریضوں کی تعداد میں روز اضافہ ہورہاہے کہاجاسکت ہے کہ ایک تہائی آبادی ضروراس مرض میں مبتلا ہے اور یہ تعداد شہروں میں زیادہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دافع تیزابیت ادویہ زیادہ دکھائی جارہی ہیں۔
سینے میں کبھی کبھی جلن کا ہوجانا زیادہ پریشانی کا باعث نہیں ہے۔ یہ جلن عموماََ سب ہی لوگوں کو ہوجاتی ہے، کیوں کہ اکثر اوقات ہمیں شادی یادوسری تقریبات میں دیگ میں پکی مرچ مسالے سے بھرپور یا چٹ پٹی اور تلی ہوئی اشیا کھانی پڑجاتی ہیں۔ پھرگھر آکر کچھ دیر بعدیا رات سوتے ہوئے سینے میں جلن کا احساس ہوتا ہے جوپانی پینے یادوکھانے سے ختم ہوجاتاہ۔ اگرچہ اشارہ ہوتا ہے کہ معدے میں تیزابیت بڑھ رہی ہے، مگر اکثر لوگ وقتی افاقے کے بعد بے پروا وجاتے ہیں۔
جلن کے اسباب:
کسی دباؤ کے باعث اوپر اٹھتا ہے تو اس میں موجود تیزاب غذاکی نالی میں چلا جاتا ہے۔ غذائی نالی کے آخری سرے پرایک عضلاتی بندھن ہوتا ہے، جوغذا کے معدے میں پہنچتے وقت کھلتا اور پھر بند ہوجاتا ہے ۔ تیزورزش ، زیادہ جھک کرکام کرنے یا کسی وزنی شے کے اٹھانے سے ی بندھن دباؤسے کھل جاتا ہے اور یہ تیزابیت غذاکی نالی میں پہنچ کرجلن کاباعث بنتی ہے۔ جب یہ تیزابیت مسلسل رہنے لگے تو متعدد پیچیدگیوں کاباعث بن جاتی ہے غذاکی نالی میں ورم خراش اور پھر زخم بن سکتے ہیں اور سینے میں جلن اور درد ہونے لگتا ہے۔مستقل درد رہنے سے سرطان بھی بن سکتا ہے۔
یوں تو ہم سب کے معدے میں تیزابیت کی ایک خاص مقدار ہوتی ہے جو ضروری بھی ہے، لیکن تلی ہوئی اشیاء مرچ مسالے اورروغنی اشیا تیزابیت کو بڑھادیتی ہیں۔ اس کے علاوہ تمباکونوشی ، چاے، کافی، کولا مشروبات اور پان وہوسکتا ہے، بلکہ تجربات شاہد ہیں کہ سینے کی جلن کے بیش تر مریضوں میں یہی عوامل کار فرما تھے۔
بچاؤ کی تدابیر:
معدے میں بڑھتی ہوئی تیزابیت کے باعث جب سینے کی نالی میں جلن ہوتی ہے توابتدامیں دواؤں کے بجائے تدابیر سے بچاؤ کے لیے کوشش کیجیے ۔ سب سے پہلے تو اپنی غذائی عادات میں تبدیلی کریں، تلی ہوئی اور روغنی اشیا نہ کھائیں مرچ مسالے سے مکمل احتیاط کریں، کولامشروبات، تمباکو، پان، چاے اور کافی ترک کردیں، نمک کم کھائیں، غذاکوب چباکرکھائیں، کھانے کے فوراََ بعد لیٹ جائیں، بلک چہل قدمی کرکے بستر پردراز ہوں، سوتے یالیٹتے وقت تکیہ سرسے چھے انچ تک بلند رکھیں تاکہ معدے سے تیزابیت غذائی نالی میں داخل ہو۔ صبح وشام ہوا خوری کے لیے چہل قدمی ضرورکریں، زیادہ مطالعے، غوروفکر بجائے خوش وخرم رہیں۔

(0) ووٹ وصول ہوئے