بند کریں
صحت صحت کی خبریںایم این اے دیوان عاشق حسین بخاری اور ایم پی اے یاسر رضا کی ڈگریاں بھی جعلی نکلیں ،دیوان عاشق ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 21/07/2010 - 15:36:30 وقت اشاعت: 20/07/2010 - 19:38:23 وقت اشاعت: 20/07/2010 - 18:21:13 وقت اشاعت: 19/07/2010 - 14:22:52 وقت اشاعت: 18/07/2010 - 11:40:27 وقت اشاعت: 17/07/2010 - 20:33:17 وقت اشاعت: 17/07/2010 - 19:28:47 وقت اشاعت: 17/07/2010 - 19:28:47 وقت اشاعت: 17/07/2010 - 16:34:21 وقت اشاعت: 16/07/2010 - 12:39:34 وقت اشاعت: 15/07/2010 - 19:15:02

ایم این اے دیوان عاشق حسین بخاری اور ایم پی اے یاسر رضا کی ڈگریاں بھی جعلی نکلیں ،دیوان عاشق این اے 153سے مسلم لیگ (ق) کے ٹکٹ پریاسر رضا مسلم لیگ(ن) کے ٹکٹ پررکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے تھے،پنجاب یونیورسٹی کو شاہ محمود قریشی، فردوس عاشق اعوان اور سابق صدر فاروق لغاری سمیت مزید 14 ارکان کی ڈگریاں ارسال

اسلام آباد (اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17جولائی۔2010ء) مسلم لیگ (ق) کے رکن قومی اسمبلی دیوان عاشق حسین بخاری اور مسلم لیگ (ن) کے رکن پنجاب اسمبلی یاسر رضا کی ڈگریاں بھی جعلی نکلیں، پنجاب یونیورسٹی کو وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، فردوس عاشق اعوان اور سابق صدر فاروق لغاری سمیت مزید 14 ارکان کی ڈگریاں ارسال، یونیورسٹی کے ریکارڈ سیل میں خفیہ کیمرے نصب، سیکورٹی بڑھا دی گئی۔

ذرائع کے مطابق سندھ کی جامشورو یونیورسٹی نے مسلم لیگ ق کے رکن قومی اسمبلی دیوان عاشق حسین بخاری کی ڈگری کو جعلی قرار دیدیا ہے۔ عاشق حسین مسلم لیگ ق کے ٹکٹ پر قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 153 جلالپور پیروالا سے منتخب ہوئے تھے۔مسلم لیگ (ن) کے رکن پنجاب اسمبلی یاسر رضا کی بی اے کی ڈگری بھی جعلی قرار دیدی گئی ہے یاسر رضا نے ہر الخیر یونیورسٹی سے حاصل کی جانیوالی ڈگری الیکشن کمیشن کے پاس جمع کرائی تھی جس کی تصدیق نہیں ہوسکی۔

دوسری جانب ہایئر ایجوکیشن کمیشن نے مزید 14 اراکین کی ڈگریاں پنجاب یونیورسٹی کو ارسال کر دی ہیں جس کے بعد نئی بھیجی جانے والی ڈگریوں کی تعداد 44 ہو گئی ہے جن اراکین کی ڈگریاں پنجاب یونیورسٹی کو ارسال کی گئی ہیں ان میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وفاقی وزیر بہبود آبادی فردوس عاشق اعوان، سابق صدر فاروق لغاری، سابق وفاقی وزیر رضا حیات ہراج، سردار طالب حسین نکئی، بلال یاسین، افضل سندھو، انوشہ رحمن، عمر حیات روکھڑی اور سینیٹر نعیم حسین چٹھہ کی ڈگریاں شامل ہیں۔ پنجاب یونیورسٹی کے ریکارڈ سیل میں خفیہ کیمرے نصب کر دیئے گئے ہیں اور یونیورسٹی کے سیکورٹی انتظامات سخت کر دیئے گئے ہیں۔
17/07/2010 - 20:33:17 :وقت اشاعت