اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںپاکستان اور ایران سرحد پار چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے کوششیں جاری رکھیں ..

پاکستان اور ایران سرحد پار چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے کوششیں جاری رکھیں گے ،ممنون حسین

, اعلی سطح کے دوروں سے پاکستان اور ایران کے درمیان دفاعی تعلقات میں مزید بہتری آئیگی، گوادر پورٹ منصوبے کا مقصد خطے کے مختلف ممالک کے درمیان مواصلاتی رابطے بڑھانا ہے ،منصوبہ پورے خطے کیلئے فائدہ مند ہوگا، ایرانی چیف آف جنرل سٹاف میجر جنرل محمد حسین بغیری سے گفتگو

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 جولائی2018ء)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان اور ایران سرحد پار چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے کوششیں جاری رکھیں گے ،اعلی سطح کے دوروں سے پاکستان اور ایران کے درمیان دفاعی تعلقات میں مزید بہتری آئے گی، گوادر پورٹ کے منصوبے کا مقصد خطے کے مختلف ممالک کے درمیان مواصلاتی رابطے بڑھانا ہے اور یہ منصوبہ پورے خطے کیلئے فائدہ مند ہوگا۔

صدر ممنون حسین نے یہ بات ایرانی مسلح افواج کے چیف آف جنرل سٹاف میجر جنرل محمد حسین بغیری سے ملاقات کے دوران کہی جنہوں نے ان سے پیر کو ایوان صدر میں ملاقات کی۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان اور ایران کے مضبوط اورباہمی برادرانہ تعلقات مشترکہ عقائد، ثقافت اور تاریخ پر مبنی ہیں۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس ایرانی صدر کے دورہ پاکستان اور پاکستانی مسلح افواج کے سربراہ کے دورہ ایران سے دونو ں برادر ممالک کے باہمی تعلقات میں ایک نئے دور کا آغاز ہوا ہے۔

(خبر جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ گوادر پورٹ کے منصوبے کا مقصد خطے کے مختلف ممالک کے درمیان مواصلاتی رابطے بڑھانا ہے اور یہ منصوبہ پورے خطے کیلئے فائدہ مند ہوگا۔ صدرممنون حسین نے کہا کہ پرامن اور مستحکم افغانستان خطے کے بہترین مفاد میں ہے اور پاکستان افغانستان میں افغان قیادت اور عوام کی مرضی کے مطابق امن و استحکام کے قیام اور بحالی کی حمایت کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پڑوسی ممالک کی حیثیت سے پاکستان اور ایران افغانستان میں پائیدار امن کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خطے میں امن و ترقی کیلئے پاکستان ایران کیساتھ تعاون میں مزید بہتری کا خواہشمند ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں