زرداری کولوٹی گئی دولت سے تحریک انصاف کے کارکنوںکے ضمیر خریدنے کی کوشش میںمنہ کی کھانا پڑی ‘تحریک انصاف

3کے عوام نے (ن) ،پی پی کی نوٹوںکی چمک کومسترد کرکے ان کی مستقبل کی سیاست کو بھی سرخ جھنڈی دکھا دی ہے مرکزی رہنما جمشیداقبال اورمسرت چیمہ کاضمنی انتخاب سے لا تعلق رہنے پر پارٹی کارکنوں کے اعزازمیں تقریب سے خطاب

منگل 7 دسمبر 2021 11:15

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 07 دسمبر2021ء) آصف زرداری نے سندھ کی عوام سے لوٹی گئی دولت سے ضمنی انتخاب میں تحریک انصاف کے کارکنوںکے ضمیر خریدنے کی کوشش کی لیکن انہیں منہ کی کھانا پڑی ،مسلم لیگ(ن) والوں سے سوال ہے کہ اگر آپ کابیانیہ مقبول ہو رہا ہے تو پھر آپ کے ووٹ عام انتخابات کے مقابلے میں نصف سے بھی کیوں کم رہ گئے ہیں ،این اے 133کے باشعورعوام نے مسلم لیگ (ن) اورپیپلزپارٹی کی نوٹوںکی چمک کومسترد کرکے ان کی مستقبل کی سیاست کو بھی سرخ جھنڈی دکھا دی ہے ،ہمیں تکنیکی بنیادوں پر این ای133کے مقابلے سے باہر کیا گیا لیکن ہم آج بھی اپنے حلقے کی عوام کے درمیان موجود ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما جمشید اقبال چیمہ اورپنجاب اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کی چیئر پرسن مسرت جمشید چیمہ نے این اے 133کے ضمنی انتخاب سے لا تعلق رہنے پر کارکنوں کے اعزازمیں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے ۔

(جاری ہے)

اس موقع پر عبدالکریم کلہواڑ،شبیر سیال ، محمد فیاض بھٹی سمیت دیگر رہنمااورکارکنان کی کثیر تعدادموجودتھی۔

تحریک انصاف کے رہنمائوںنے کہا کہ این اے 133کے ووٹرز نے ثابت کردیا ہے کہ وہ بکائو مال نہیںہیں،ووٹرز نے ثابت کردیا ہے کہ آپ دوہزار ،پانچ ہزار توکیا پانچ لاکھ بھی دو ہم برائے فروخت نہیںہیں۔انہوںنے کہا کہ مسلم لیگ(ن) کی یہ تاریخ ہے کہ یہ لڈو پہلے کھا لیتے ہیں سوچتے بعد میںہیں اورروتے بھی ہیں،کیا یہ ان کی سیاست کیلئے لمحہ فکریہ نہیںہے کہ خودکو سب زیادہ مقبول اور آرپار کرنے والی جماعت جوعام انتخابات میں 90 ہزارووٹ لیتی ہے آج نوٹوں کی بوریوں کے منہ کھولنے کے باوجود 40ہزارووٹوںپر آ گئی ہے ۔

ان کے ووٹوںپر آصف زرداری نے ڈاکہ ڈالاہے ،آصف زرداری ہماری سیاست پر نہیں بلکہ بریانی والی مسلم لیگ (ن) کی سیاست پر بھاری ثابت ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف ایک نظریے اورتحریک کا نام ہے اسے نوٹوں کی چمک سے شکست نہیںدی جا سکتی۔ انہوںنے کہا کہ شریف خاندا ن اور ان کی جماعت کے لوگ ایک اقامہ کیغلام ہیں،نوازشریف کے پاس اقامہ تھا ،ان کی صاحبزادی کا خادمہ کا اقامہ تھا، ان کے وزیر دفاع نے اقامہ رکھا ہوا تھا ، دیگر بہت سے لوگ ہیںجو اقامہ ہولڈرتھے،اصل میں اقامہ چوری کرنے کا نسخہ او رلائسنس ہے، اس ملک کا وزیراعظم دوسرے ملک کا اقامہ لے کرکاغذوںمیں وہاں نوکری کیسے کرتاہے ،سکیورٹی گارڈکیوںرہتاہے،منیجرکیوںبن کررہتا ہے ، اقامے پاکستان سے چوری کئے گئے پیسے کوٹھکانے لگانے کالائسنس تھا۔

انہوں نے کہا کہ ہم پہلے سے زیادہ عوام کی خدمت کریںگے ،ہم رکن اسمبلی ،وزیر اورمشیربنے بغیر بھی حلقے کے لوگوں کی کریںگے،اس علاقے کے دیرینہ مسائل کو حل کر کے دکھائیںگے، ہم مافیازسے شکست نہیںکھائیں گے او ران کے مقابلے پر رہیںگے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments

>