بند کریں

مزید عنوان

لطیفے

سکول ٹیچر

دیہاتی لڑکے نے

سچ کی بولنے کی سزا

شور

سکول

ریل میں سفر

ماسٹر صاحب

مالک نوکر سے

وکیل

استاد شاگرد سے

مزید لطیفے

مزاحیہ ادب

ایکٹومزاح نگاراوربیویوں کے لطیفے

عطاء الحق قاسمی اس وقت اردو کے سب سے بڑے ”ایکٹو“ مزاح نگار ہیں کیونکہ․․․ مشتاق احمد یوسفی (اللہ اُن کی بھی عمر دراز کرئے) آجکل الیکٹرونکس میڈیاپر ”ایکٹو“ ہیں اور ۔۔۔

مکالمہ

آج کل علم تاریخ یہ بحث چل نکلی ہے کہ اس کاانسان کوبالکل کوئی فائدہ نہیں پہنچتا۔دوسرانظریہ یہ ہے کہ تاریخ کے مطالعے سے حال اور مستقبل کوسنواراورماضی سے ایک سبق حاصل کیاجاسکتا ہے۔

کالے کبوتر سفید کبوتر

جہاں میں بیٹھا ہوں۔ اس عمارت کی چھت کے شہتیروں میں کالے کبوتر رہتے ہیں اور کبوتر چاہے کالے ہوں یاسفید وہ بیٹ ضرور کرتے ہیں اور یہ بیٹ ہرآدھ پون گھنٹے کے بعد چھپک سے میرے کوٹ یاسویٹرپربرس پڑتی ہے۔

بحث وتکرار

جب کتے آپس میں میں مل کر بیٹھتے ہیں تو پہلے تیوری چڑھا کر ایک دوسرے کو بری نگاہ سے آنکھیں بد ل بدل کر دیکھنا شروع کرتے ہیں۔۔۔

سیاسی و سوشل قربانیاں!

فی الحال تو قربانی کے جانور ہیں جو تماش بینوں میں گھرے ہوئے ہیں۔ یہ بھی سیاست کا ہی کرشمہ ہے کہ خریدنے والے کم اور تماشا دیکھنے والے زیادہ ہوگئے ہیں۔ اب صورتحال یہ ہے ، جانور لوگوں کی بے بسی کا تماشا دیکھتے ہیں اور لوگ ، جانوروں کی زیب و زینت اور قیمتوں سے دل بہلاتے ہیں
🌄

” احمد فراز کے اصلی اشعار اور نقلی حسن کے تذکرے “

میں صبح سویرے لوڈ شیڈنگ کے زیر سایہ شیو کر کے منہ دھو کر دفتر روانہ ہوا۔۔گیلے بال اور سونے پر سہاگہ ہمارے علاقہ پر ترقیاتی کام نازل ہوئے دوسرا سال ہے
🌄

میم صاحبہ

آئیے آج ہم آپ کو ایک میم صاحبہ سے ملواتے ہیں، نازک اندام یہ میم صاحبہ یقینا آپ میں سے بہت سوں کی منظورِنظر ہوں گی، ویسے بھی ہم دیسی لوگ ولایتی چیزوں کو بہت پسند کرتے ہیں
🌄

اسمِ ”بے“ مسمٰی

اسمِ بامسمٰی کے معانی سے توآپ سب واقف ہیں اور جو اس کا مطلب نہیں جانتے وہ ڈپٹی نذیر احمد دہلوی کے ناول پڑھ لیں،معلوم ہو جائے گا! اس کے برعکس ہمارے والے” اسمِ بے مسمٰی “سے آپ کی واقفیت ہم کرا دیتے ہیں
مزید مزاحیہ ادب

مزاحیہ کالم

🌄

نیا اینگل

ہم نے ایک صاحب کو دیکھا جو یوٹیلٹی اسٹور کے باہر لمبی لائن کو دیکھ کر رو رہے تھے، وجہ پوچھی تو بھڑک اٹھے”ہم پر حکومت کرنے والوں کی سمجھ نہیں آتی، پہلے کے حکمرانوں نے ہمیں ترغیب دی تھی
🌄

حضور کو عادت ہے بھول جانے کی۔شوکت علی مظفر

ملک صاحب کی عادت ہے وہ کسی کام کے سلسلے میں جب بھی وعدہ کرتے ہیں تو ہم سمجھ جاتے ہیں اب یہ کام ہونے کا نہیں، کیونکہ ان کے وعدے کا مطلب ہی یہ ہوتا ہے ”بھول جاؤ!“
🌄

ابتر اشتہارات۔دل آویز

آوارگی میں تمام دن جوتے چٹخانے والے حضرات سے گزارش ہے کہ وہ کسی امیر زادی سے شادی کا ڈھونگ رچا کے نہ صرف گھر دامادی جیسی فرمانبردار نیز منافع بخش آفر قبول کریں
🌄

ہم ایک رسالہ نکالیں گے

ہم ایک رسالہ نکالیں گے۔۔۔۔۔۔۔۔۔جی صا حبو چند دنوں پہلے بدن کی بالائی اور نسبتا ویران منزل میں ایک عجیب طرح کا سودا سمایا کہ ہم ایک رسالہ نکالیں گے۔
🌄

شادی سے پہلے۔قسط نمبر 4 ۔مخزن علی

🌄

طنزو مزاح ایک معاشرتی ضرورت

اس دنیا میں کیا فلسفی ، کیا ادیب کیا دانشور سب اس بات پر متفق ہیں کہ یہ دنیا دکھوں کا گھر ہے دار المحسن ہے۔مجمعوعہ آلام ہے۔
🌄

مرد بھی بیویوں سے پٹتے ہیں۔

🌄

ہم ایک موٹر خریدیں گے

مزید مزاحیہ کالم

مزاحیہ مضامین

گورکھ ” ڈنڈا“

غنڈہ وہ کہلاتا ہے جسے لوگ غنڈہ مان لیں لہٰذا وہ احمق کبھی ” ڈبل بیرل“ غنڈہ نہیں بن سکے گا جو خود کو شریف لوگوں سے منوا نہیں لیتا کیونکہ جس غنڈے کے آگے لوگ کھڑے ہوتے ہیں وہ غنڈہ گردی سے گولڈن شیک ہینڈ لینے کی کوشش کرتا ہے یعنی مانو توایشور نہیں تو پتھر۔

پراپرٹی ڈیلر سے سیاستدان تک

اے رحمن ملک“․․․․․ وہ نام لکھتا ہے اور فون پر بات کرنے سے پہلے اپنا تعارف بھی․․․․․ اے رحمن ملک کہہ کر کرواتا ہے․․․․․ میں نے ازراہ مذاق کہہ دیا․․․․․․ ملک کیا تمہیں عطاء الرحمن کہلوانا پسند نہیں․․․․․․؟

رحیم یار خان ملتانی

یہ سرائیکی کے بڑے گرج دار شاعر ہیں اس لیے باذوق لوگ ان کی بے موسمی برسات سے محروم رہتے ہیں۔اونچی آواز سے اپنا شعر منوانے کی کوشش میں رہتے ہیں۔۔۔

روزہ نہ اذان ،نام مرا رمضان

میاں رمضان کہتا ہے کہ روزہ کھولنے کے لئے ضروری نہیں کہ روزہ رکھا بھی جائے۔ بقول اس کے روزہ بند کرکے کھولا نہیں جاتا لیکن رکھ کر ضراور کھولا جاتا ہے۔

تلاشِ گمشدہ کتا

تو پھر مجھے سونگھ کربتاؤ کہ تمھارے آس پاس کوئی ۱۱سیشن بھگیاڑی نسل کے کتے ہیں؟

شریف آدمی (نوازشریف)

آپ انیس سوپچاسی میں غیر جماعتی الیکشن میں پیداہوئے ‘ ابھی چھوٹے ہی تھے کہ کاندھوں پر وزارت خزانہ کابوجھ آن پڑا۔آپ نے بحسن وخوبی یہ بوجھ ہلکاکیا۔

شوہر برائے فروخت

میری بیگم مسکرائے چلی جارہی تھی۔
میں بھی مسکرارہا تھا۔

دیوان صاحب

ہمارے سرشتہ کے نئے افسر اعلیٰ دیوان صاحب کا آج دفتر میں پہلا دن تھا وضع قطع تراش خراش ‘ لباس وغیرہ ہر لحاظ سے وہ اعلیٰ درجے کے انگریز معلوم ہوتے تھے۔

چوروں کے دل دھک دھک کیوں نہیں کرتے

کبھی یوں ہوتا ہے کہ پوری صورت حال آپ کو متزلزل نہیں کرپاتی اور کبھی ایسا ہوتا ہے کہ صرف ایک سوال آپ کو پریشان کردیتا ہے اور وہ سوال کوئی اتنا اہم بھی نہیں ہوتا ۔۔۔

مہینے بعد آٹے کا تھیلا کنٹرول ریٹ پر

میاں کررہے ہوں․․․․․․ چوڑونوکری․․․․․․ دن بھر ہمیں ہنسایاکرو“ کو ہزار کانوٹ پکڑو․․․․․․ گھر کا خرچہ چلاؤ․․․․․․ موج ․․․․․․ کرو․․․․․․

چاچا نیلام گھر

چاچا نیلام گھر سے ہم مذاق مذاق میں تفریح تولیتے رہتے ہیں لیکن آپ یقین کیجئے وہ ہمارے چلتے پھرتے استاد یعنی موبائل ٹیچر ہیں۔

مرغی یا انڈہ

یہ ایک بڑا مشکل سوال ہے کہ کہ انڈہ پہلے آیاتھایا مرغی؟ یہ سوال پوچھ کر آپ بڑے سے بڑے تاریخ دان اور عالم کی لاعلمی کو بے نقاب کرسکتے ہیں‘

سری پائے

شیخ صاحب حسب معمول اس روز کچھ زیادہ پریشان نظر آرہے تھے۔ کھنگالنے پر کھل پڑے کہ ان کے والدین کا عقیقہ کرنا بھول گئے اور وہ اپنے بچوں کا عقیقہ کرنا بھول گئے۔

چلو․․․․․․․․․چلو

ہمارے ملک میں سفر کرنا یااپنے اوپر جبر کرنا عین لمساوی ہے۔ ٹرانسپورٹ کے کرائے بھی حادثاث کی طرح روز بروز بڑھتے جارہے ہیں۔

کرسی کہانی

بابا پھنسے خان دل کے بہت اچھے تھے اس لیے سارے گاوٴں میں امن قائم رکھنے کا ٹینڈر ہمیشہ ان کے نام نکلا کرتا تھا۔

سگِ لیلیٰ

کتے پر بہت سے لوگوں نے مضامین لکھے ہیں لیکن کسی کتے نے انسان پر کوئی مضمون لکھنے کی زحمت گوارہ نہیں کی (شاید وہ انسان کو اس قابل نہیں سمجھتے)۔۔۔
مزید مضامین