ماڈل ٹائون میں قتل عام کروانے پر ڈاکٹر توقیر شاہ سفیر بنے : خرم نواز گنڈا پور

ہفتہ اپریل 21:04

ماڈل ٹائون میں قتل عام کروانے پر ڈاکٹر توقیر شاہ سفیر بنے : خرم نواز ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور نے کہا ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان کی طرف سے شہباز شریف کے منظور نظر اور کار خاص بیوروکریٹ ڈاکٹر توقیر شاہ نے بطور سفیر جنیوا میں تقرری کا نوٹس اور اسکی آئندہ سماعت پر طلبی خوش آئند ہے،ماڈل ٹائون میں قتل عام کروانے پر بطور انعام ڈاکٹر توقیر شاہ کو سفیر بنایا گیا حالانکہ اسکے پاس سفارت کاری کا نہ کوئی تجربہ تھا اور نہ وہ اسکے اہل تھے ، شریفوں نے منظور نظر سرکاری افسروں سے غیر قانونی کام لے کر بطور رشوت انہیں اعلیٰ عہدوں سے نوازا۔

وہ گزشتہ روز عوامی تحریک کے مرکزی سیکرٹریٹ میںکارکنوں اور عہدیداروں سے گفتگو کر رہے تھے ۔انہوں نے کہاکہ ڈاکٹر توقیر شاہ سانحہ ماڈل ٹائون کا مرکزی کردار ہیںسانحہ ماڈل ٹائون میں توقیر شاہ وزیر اعلیٰ ،وزیر اعظم ہائوس کے درمیان سہولت کار تھے ۔

(جاری ہے)

خرم نواز گنڈا پور نے کہاکہ ڈاکٹر توقیر شاہ کی خلاف میرٹ غیر قانونی تقرری کی چھان بین سے شریفوں کے بہت سارے راز طشت از بام ہونگے۔

صرف ڈاکٹر توقیر شاہ کو ہی پر کشش تقرری سے نہیں نوازا گیا بلکہ ایس پی طارق عزیز،ڈی آئی جی رانا عبد الجبار،ایس پی سلیمان،ایس پی عبد الرحیم شیرازی سمیت سانحہ ماڈل ٹائون کے تمام ملزمان پہلے سے بہتر گریڈ اور مراعات سے لطف اندوز ہو رہے ہیں، سابق آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا کو وفاقی محتسب ٹیکس لگا کر سانحہ ماڈل ٹائون کے قتل عام کا انعام دیا گیا ۔

انہوں نے کہا کہ شریف برادران کا یہ طریقہ واردات ہے کہ وہ سرکاری عہدیداروں سے سیاسی مخالفین کو نقصان پہنچا نے کا کام لیتے ہیں اور پھر بطور رشوت انہیں ترقیاں اور آئوٹ آف ٹرن مراعات دیتے ہیں۔خرم نواز گنڈاپور نے کہاکہ شہباز شریف نے پنجاب میں اپنے غیر قانونی احکامات پر عمل کروانے کیلئے 56کمپنیاں بنانے کے ساتھ ساتھ ہر اہم پوسٹ پر جونئیرز کو سنیئرز پر مسلط کیا یہ سارے راز ایک ایک کر کے بے نقاب ہو رہے ہیں،انہوں نے کہاکہ احد چیمہ ،،ڈاکٹر توقیر شاہ اور فواد حسن فواد کے پاس شریف برادران کی کرپشن اور جرائم کی مکمل ای سی جی،ایکسرے اور فرانزک رپورٹیں اور سارا کچا چٹھا ہے۔

احد چیمہ تو پکڑا گیا ڈاکٹر توقیر شاہ اور فواد حسن فواد کے پکڑے جانے کے بعد سانحہ ماڈل ٹائون کے تمام رازوں سے بھی پردے اٹھ جائینگے ۔