(ن) لیگ وہ پارٹی ہے جو احکامات پر چلتی تھی اور چلتی ہے ،ْبلاول بھٹوزر داری

حکمراں جماعت مسلم لیگ (ن) وہ پارٹی ہے جو احکامات پر چلتی تھی اور چلتی ہے ،ْضیاء الحق سے ڈکٹیشن لیتے وقت اور بی بی کے خلاف سازش کرتے ہوئے نواز شریف کو ووٹ کی عزت یاد نہیں آئی ،ْپاکستان میں ایک کمزور جمہوریت ہے ،ْ امید ہے ایک سویلین حکومت سے دوسری سویلین حکومت کو اقتدار کی منتقلی کا عمل پرامن ہوگا ،ْتوقع ہے اپوزیشن لیڈر اور وزیراعظم نگراں سیٹ اپ سے متعلق اتفاق کرلیں گے ،ْجج خود نہیں بولتے ان کے فیصلے بولتے ہیں ،ْ جمہوریت میں ادارے اپنی حدود میں رہ کر کام کرتے ہیں ،ْ میڈیا سے گفتگو

اتوار اپریل 18:00

ملتان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ حکمراں جماعت مسلم لیگ (ن) وہ پارٹی ہے جو احکامات پر چلتی تھی اور چلتی ہے ،ْضیاء الحق سے ڈکٹیشن لیتے وقت اور بی بی کے خلاف سازش کرتے ہوئے نواز شریف کو ووٹ کی عزت یاد نہیں آئی ،ْپاکستان میں ایک کمزور جمہوریت ہے ،ْ امید ہے ایک سویلین حکومت سے دوسری سویلین حکومت کو اقتدار کی منتقلی کا عمل پرامن ہوگا ،ْتوقع ہے اپوزیشن لیڈر اور وزیراعظم نگراں سیٹ اپ سے متعلق اتفاق کرلیں گے ،ْجج خود نہیں بولتے ان کے فیصلے بولتے ہیں ،ْ جمہوریت میں ادارے اپنی حدود میں رہ کر کام کرتے ہیں ۔

اتوار کو میڈیا سے بات چیت بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ میاں صاحب پوری زندگی حکم پر چلتے رہے اور آج انہیں ووٹ کے تقدس کا خیال آرہا ہے ،ْجب ضیاء سے احکامات لے رہے تھے ،ْ بے نظیر بھٹو کے خلاف سازشیں کر رہے تھے تو انہیں اس وقت ووٹ کی عزت کا خیال نہیں آیا۔

(جاری ہے)

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان میں ایک کمزور جمہوریت ہے، امید ہے ایک سویلین حکومت سے دوسری سویلین حکومت کو اقتدار کی منتقلی کا عمل پرامن ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ اپوزیشن لیڈر اور وزیراعظم نگراں سیٹ اپ سے متعلق اتفاق کرلیں گے۔۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی عوام کے حقیقی مسائل حل کرسکتی ہے ،ْعلاقے کی پسماندگی دور کرنے کیلئے جنوبی پنجاب صوبے کابننا ضروری ہے۔۔کراچی میں گھنٹوں بجلی کی بندش سے متعلق سوال پر بلاول بھٹو نے کہا کہ (ن) لیگ نے ایم کیو ایم کے ساتھ مل کر کے ای ایس سی کو پرائیویٹائز کیا، بجلی وفاق کی ذمہ داری ہے اور وفاق کا نمائندہ کہتا ہے بل نہیں دیتے تو بجلی نہیں دیں گے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ چیف جسٹس سے کافی امید ہے اور امید ہے وہ قانون کے تحت انصاف دلائیں گے، میں کسی کو روک نہیں سکتا لیکن تجویز کرسکتا ہوں کہ جج خود نہیں بولتے ان کے فیصلے بولتے ہیں اور جمہوریت میں ادارے اپنی حدود میں رہ کر کام کرتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ (ن) لیگ اور پی ٹی آئی نے عوام کیلئے کیا کیا ،ْ کسی دوسری جماعت نے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا ،ْ سندھ حکومت 10 سال سے غربت کے خاتمے پر پروگرام چلا رہی ہے۔