امریکہ مسلمانوں کا ازلی دشمن ہے، مولانا فضل الرحمن

افغانستان ، عراق اور لبیا کے بعد اب پاکستان ، سعودی عرب ، ایران اور دوسرے اسلامی ممالک اسکے حدف ہیں ان ممالک کو امریکہ کی جانب سے بلیک لسٹ میں شامل کرنا اس کے مذموم عزائم کی عکاسی کرتی ہے عالم اسلام متحد ہو کر اس بدمست ہاتھی کو نکل ڈالے، قائد جمعیت علمائے اسلام

جمعرات دسمبر 22:54

امریکہ مسلمانوں کا ازلی دشمن ہے، مولانا فضل الرحمن
سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 13 دسمبر2018ء) متحدہ مجلس عمل کے سربراہ ، قائد جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ امریکہ مسلمانوں کا ازلی دشمن ہے ، افغانستان ، عراق اور لبیا کے بعد اب پاکستان ، سعودی عرب ، ایران اور دوسرے اسلامی ممالک اسکے حدف ہیں ان ممالک کو امریکہ کی جانب سے بلیک لسٹ میں شامل کرنا اس کے مذموم عزائم کی عکاسی کرتی ہے عالم اسلام متحد ہو کر اس بدمست ہاتھی کو نکل ڈالے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مدینہ منورہ سے جے یو آئی کے مرکزی رہنمائوں مولانا سائین عبدالقیوم ہالیجوی ، علامہ راشد خالد محمود سومرو ، آغا سید محمد ایوب شاہ سے ٹیلی فونک گفتگو میں کیا سکھر سے جے یو آئی کے ایڈیشنل انفارمیشن سیکریٹری مولانا عبدالحق مہر کے جاری کردہ بیان میں مولانا فضل الرحمن کا مزید کہنا تھا کہ یہودی قوتیں ٹرمپ کو آئندہ الیکشن میں کامیاب کرانے کیلئے کسی بھی اسلامی ملک کو نشانہ بنا سکتی ہیں اسلئے ہم عالم اسلام سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ امت مسلمہ کو مزید تباہی سے بچانے کیلئے تمام فروعی اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر جلد متحد ہو جائے ، مولانا فضل الرحمن کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے حکمران غلط فہیمی کا شکار ہیں کہ امریکہ ہمارا دوست ہے یا وہ ہم سے کوئی مدد مانگ رہا ہے بلکہ وہ ہمیں اپنے ناپاک جال میںپھنسا رہا ہے ، انہوں نے پی ٹی آئی کی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی کی نااہلی اور نا تجربے کارحکومت نے ملک کو داخلی اور خارجی محازوں پر کمزور پوزیشن میں لا کھڑا کیا ہے عمران خان کی یوٹرن سیاست نے ملک کو غیر یقینی صورتحال سے دوچار کر دیا ہے ایسے حکمران امت مسلمہ کیلئے سب سے بڑا المیہ ہیں مولانا فضل الرحمن نے سندھ میں گیس کے حالیہ بحران پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہ اس کی اطلاع بھی جعلی وزیر اعظم کو ٹی وی سے ملی ہو گی انہوں نے سندھ حکومت کی جانب سے قومی شاہرائوں پر قائم دینی مدارس کو سیکورٹی رسک قرار دینے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ آخر مدارس پر ہی حکمرانوں کی سوئی کیوں اٹک جاتی ہے سندھ کے لوگوں کو مسائل کی طرف حکمرانوں کی توجہ کیوں نہیں جاتی ، پی ٹی آئی کی مرکزی حکومت کی طرح پی پی کی صوبائی حکومت بھی عوامی مسائل حل کرنے کے بجائے عالمی قوتوں کو خوش کرنے کیلئے مذہبی معاملات اور تنازعات میں الجھ کر اپنے لئے خسارے کا راستہ اختیار کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ پور ی امت مسلمہ حرمین شریف کی حفاظت اور پاکستان کے دفاع کیلئے کٹ مرنے کوتیار ہے امریکہ شکست کے قریب پہنچ چکا ہے ۔

#