کیا چوہدری نثار کے لیے راہ ہموار کی جا رہی ہے؟

چوہدری نثار اور غلام سرور ایک پارٹی میں چل ہی نہیں سکتے۔ پیپلز پارٹی رہنما خورشید شاہ کا جواب

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان ہفتہ اپریل 11:54

کیا چوہدری نثار کے لیے راہ ہموار کی جا رہی ہے؟
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 20 اپریل 2019ء) : پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما خورشید شاہ سے صحافی نے سوال کیا کہ کیا حفیظ شیخ ڈلیور کر سکیں گے ؟جس کا جواب دیتے ہوئے خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ حفیظ شیخ نے حالات کا چیلنج تسلیم کیا ہے۔صحافی نے سوال کیا کہ کیا چوہدری نثار کے لئے راہ ہموار کی جارہی ہے جس کا جواب دیتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ چوہدری نثار اور غلام سرور ایک پارٹی میں چل ہی نہیں سکتے۔

خورشید شاہ نے کہا کہ عمران خان خطرناک گلی میں گزر رہے ہیں عمران خان کو سخت صورتحال کا سامنا کرنا پڑے گا۔واضح رہے دو روز قبل وفاقی کابینہ میں اُکھاڑ پچھاڑ کی گئی جس کے تحت کئی وزرا کے قلمدان تبدیل کر دئے گئے۔ 9 وفاقی وزراء کے قلمدان تبدیل کر دیے گئے، اسد عمر، فواد چوہدری، غلام سرور، شہریار آفریدی، عامر کیانی، طارق بشیر چیمہ سمیت دیگر سے ان کے قلمدان واپس لے لیے گئے۔

(جاری ہے)

سابق وزیر پٹرولیم غلام سرور خان کی وزارت کا قلمدان تبدیل کیا گیا تو اطلاعات موصول ہوئیں کہ غلام سرور خان نے اس پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا۔ یہی نہیں بلکہ انہوں نے وزارت پٹرولیم کے متبادل دی گئی وزارت ایوی ایشن کا چارج سنبھالنے سے بھی انکار کر دیا تھا۔ کچھ تجزیہ کاروں نے بتایا کہ غلامسرور خان نے کابینہ اجلاس میں واضح کہا تھا کہ اگر میری وزارت میں کسی قسم کی تبدیلی کی گئی تو میں نہ صرف وزارت بلکہ قومی اسمبلی کی رکنیت سے بھی مستعفی ہو جاؤں گا تاہم اب غلام سرور خان نے اپنے حالیہ بیان میں ان تمام تر اطلاعات کی تردید کر دی ہے۔

پی ٹی آئی رہنما غلام سرور خان نے کہا کہ میرا ایمان ہے کہ عمران خان پاکستان کی بہتری کے لئے فیصلے کر رہے ہیں۔ وزیراعظم جہاں کھلائیں گے وہاں کھیلیں گے، میں وزرات یا کسی بھی عہدے کے لئے ناراض نہیں ہو سکتا۔ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے پوری محنت اور ایمان داری کے ساتھ وزارت پٹرولیم کو بحران سے نکالنے کی کوشش کی جب وزارتیں دی جا رہی تھیں تو عمران خان نے مجھے کہا کہ میں آپ کو ٹیم میں لینا چاہتا ہوں۔

میں نے وزیراعظم سے کہا میرے لیے اعزاز کی بات ہے کہ میں آپ کی ٹیم کا حصہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ میری تحریک انصاف میں شمولیت کی وجہ کرپشنفری پارلیمنٹ اور کرپشن فری حکومت تھی۔ کرپشن فری حکومت لیڈر شپ کیونکہ مجھے عمران خان کی شکل میں نظر آئی۔ زندگی کا مقصد پارٹی کو لیکر ساتھ چلنا ہے۔ میں جہانگیر خان ترین کے ساتھ شامل ہوا تھا اس سے پہلے بھی میں نے ترین کے ساتھ کام کیا ہوا تھا۔