ٹیکس سال 2018 میں عوام نے 608 ارب روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا، ایف بی آر نے ارکان پارلیمنٹ اور عوام کی انکم ٹیکس تفصیلات جاری کر دیں

فہرست میں وفاقی وزراء اور سینیٹرز سمیت کئی اراکین اسمبلی ایسے بھی ہیں جنہوں نے کوئی ٹیکس نہیں دیا،وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار بھی ٹیکس نہ دینے والوں میں شامل

جمعہ ستمبر 16:32

ٹیکس سال 2018 میں عوام نے 608 ارب روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا، ایف بی آر نے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 ستمبر2020ء) ایف بی آرنے2018 میں ارکان پارلیمنٹ اور عوام کی انکم ٹیکس تفصیلات جاری کردیں ،ٹیکس سال 2018 میں عوام نے 608 ارب روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا ، اراکین پارلیمنٹ نے مجموعی طور پر ٹیکس سال 2018 میں 80 کروڑ روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا ،ٹیکس سال 2018 میں اراکین صوبائی اسمبلیوں نے مجموعی طور پر 34 کروڑ روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا ۔

ایف بی آرکے مطابق وزیراعظم عمران خان نے 2لاکھ82ہزار449روپے ٹیکس دیا،بلاول بھٹونی2لاکھ 94 ہزار 117روپے ٹیکس دیا،شہبازشریف نی97لاکھ 30ہزار 545روپے ٹیکس اداکیا،آصف زرداری نے 28لاکھ91ہزار 455روپے ٹیکس دیا،حماداظہرنی22 ہزار445روپے ٹیکس دیا،شاہ محمودقریشی نے ایک لاکھ83ہزار900روپے ٹیکس دیا،حمزہ شہبازنی87 لاکھ5ہزار368 روپے ٹیکس دیا،سراج الحق نی2لاکھ16ہزار 800روپے ٹیکس دیا،شبلی فرازنی3لاکھ67ہزار 460روپے ٹیکس دیا،اعظم خان سواتی نی5لاکھ90 ہزار 916روپے ٹیکس دیا،چوہدری تنویراحمدخان نے 32لاکھ38ہزار733روپے ٹیکس دیا،وزیردفاع پرویزخٹک نی18لاکھ 26ہزار899روپے ٹیکس دیا،وزیرمنصوبہ بندی اسدعمرنے 53لاکھ 46ہزار342روپے ٹیکس دیا،شیخ رشیداحمدنے 5لاکھ 79 ہزار11روپے ٹیکس دیا،وفاقی وزیرغلام سرورخان نے 10 لاکھ46ہزار669روپے ٹیکس دیا،سابق وزیرصحت عامرمحمود کیانی نے زیروٹیکس دیا،وفاقی وزیرمرادسعید نی3لاکھ 74 ہزار728روپے ٹیکس دیا۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیرآبی وسائل فیصل واوڈانی2018میں زیروٹیکس دیا،وفاقی وزیرعلی زیدی نے 8لاکھ96ہزار191روپے ٹیکس دیا،فوادچوہدری نی16لاکھ 98ہزار651 روپے ٹیکس دیا،ن لیگی رہنماراناثنااللہ نی13لاکھ 88ہزار75روپے ٹیکس دیا، رپورٹ کے مطابق سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی 24 کروڑ 13 لاکھ 29 ہزار 362 روپے ٹیکس دیا ،خواجہ رفیق نے 29 لاکھ 49 ہزار 200 روپے ٹیکس دیا ،سابق وزیر دفاعی پیداوار رانا تنویر حسین نے 3 لاکھ 86 ہزار 751 روپے ٹیکس دیا ،پی ایم ایل این کے احسن اقبال نے 3 لاکھ 67 ہزار 100 روپے ٹیکس دیا ،سابق وزیر دفاع خواجہ آصف نے 43 لاکھ 71 ہزار 129 روپے ٹیکس دیا ،چوہدری سالک حسین نے 4 لاکھ 97 ہزار روپے ٹیکس دیا ،مونس الٰہی نے 51 لاکھ 68 ہزار 918 روپے ٹیکس دیا ،اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز اعلیٰ نے 20 لاکھ 71 ہزار 196 روپے ٹیکس دیا،سینیٹر طلحہ محمود نے 2 کروڑ 92 لاکھ 10 ہزار انکم ٹیکس دیا، سینیٹر امام دین شوقین نے 97 لاکھ 99 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے 13 لاکھ 63 ہزار روپے ٹیکس دیاسینیٹر ڈاکٹر اشوک کمار نے 69 لاکھ 98 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا، سینیٹر محسن عزیز نے 12 لاکھ 30 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا، سینیٹر مصدق ملک نے 25 لاکھ روپیانکم ٹیکس دیاسینیٹر مصطفیٰ نوازکھوکھر نے 41 لاکھ 22 ہزارروپیانکم ٹیکس دیا، سینیٹرفاروق ایچ نائیک نے 64 لاکھ 71 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا، سینیٹرسلیم مانڈوی والا نے 15 لاکھ 91 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا، سینیٹر شیری رحمان نے 15 لاکھ 12 ہزار روپے انکم ٹیکس دیا۔