گلگت بلتستان کو صوبائی حیثیت دینے کیلئے آئینی ترمیم لانے کا فیصلہ

آئین کے آرٹیکل ایک اور51میں اہم تبدیلی کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ، وزارت قانون

Sajid Ali ساجد علی اتوار ستمبر 17:47

گلگت بلتستان کو صوبائی حیثیت دینے کیلئے آئینی ترمیم لانے کا فیصلہ
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 ستمبر2020ء) وفاقی حکومت کی طرف سے گلگت بلتستان کو صوبائی حیثیت دینے کیلئے آئینی ترمیم لانے کا فیصلہ کرلیا گیا ۔ ذرائع وزارت قانون کے مطابق آئین کے آرٹیکل 1 اور51 میں اہم تبدیلی کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے جس کے بعد گلگت بلتستان جلد پاکستان کا صوبہ ہوگا ، جس کیلئے آئین کے آرٹیکل 257اور258میں بھی تبدیلیاں کی جائیں گی ، جبکہ یہ فیصلہ گلگت بلتستان کی عوام کی خواہشات کو مد نظر رکھتے ہوئے کیا گیا ، آئین میں کی جانے والی ان تبدیلیوں کے بعد گلگت بلتستان بہت جلد پاکستان کا پانچواں صوبہ بن جائے گا، جس کے حوالے سے باقاعدہ اعلان وزیراعظم عمران خان کی طرف سے جلد کردیا جائے گا ۔

واضح رہے کہ کشمیر اور گلگت بلتستان امور کے وفاقی وزیر علی امین گنڈاپور نے چند روز قبل بتایا تھا کہ تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد وفاقی حکومت نے اصولی فیصلہ کیا ہے کہ گلگت بلتستان کو اس کے آئینی حقوق دیے جائیں گے، جس کا ہماری حکومت کی طرف سے وہاں کے لوگوں سے وعدہ کیا گیا، تاہم وہاں کے شہریوں کو گندم اور ٹیکس کی مد میں دی جانے والی رعایت کو برقرار رکھا جائے گا ، جبکہ سی پیک کے سلسلے میں وہاں اسپیشل اکنامک زون پر بھی کام شروع ہوچکا ہے۔

(جاری ہے)

وفاقی وزیر نے بتایا کہ گلگت بلتستان میں رہنے والوں کو صحت کی بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے ہسپتالوں کو ایم آر آئی اور سی ٹی اسکین مشینیں بھی دی جائیں گی جبکہ بابوسر ٹاپ کے مقام پر سرنگ بھی بنائی جائے گی جس سے علاقے میں سفر کرنے کیلئے سارا سال ہی سہولیات میسر آسکیں گی، اس کے ساتھ ساتھ گلگت بلتستان میں میڈیکل اور انجینئرنگ کالجز کا قیام بھی عمل میں لایا جائے گا۔ علی امین گنڈاپور کے مطابق گلگت بلتستان میں انتخابات نومبر کے وسط میں کرائے جائیں گے۔