حافظ نعیم الرحمن نے بدترین لوڈشیڈنگ پر کے الیکٹرک کے خلاف نیپرا میں تحریر ی شکایت جمع کرا دی

لوڈشیڈنگ‘ توہین عدالت اور لائسنس کی خلاف ورزی کے زمرے میں آتی ہے ، نیپرا فوری نوٹس لے اور لائسنس منسوخ کیا جائے تحریری شکایت کی کاپی سپریم کورٹ آف پاکستان ، گورنر اور وزیر اعلیٰ سندھ کو بھی ارسال کی گئی ہے، امیرجماعت اسلامی کراچی

جمعرات ستمبر 23:00

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 24 ستمبر2020ء) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کے الیکٹرک کی جانب سے کراچی میں جاری بد ترین لوڈشیڈنگ کے خلاف کراچی کے شہریوں کی جانب سے نیپرا میں تحریری شکایت جمع کرا دی ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ نیپرا فوری طور پر اس کا نوٹس لیتے ہوئے کے الیکٹرک کے خلاف کارروائی کرے اور اس کا لائسنس منسوخ کرے ۔

شہریوں کو شدید گرمی کے موسم میں لوڈشیڈنگ کے عذاب سے نجات دلائی جائے ۔

(جاری ہے)

حافظ نعیم الرحمن نے تحریری شکایت کی کاپی سپریم کورٹ آف پاکستان ، گورنر سندھ اور وزیر اعلیٰ سندھ کو بھی ارسال کی ہے ، جس میں کہا گیا ہے کہ کے الیکٹرک نے گزشتہ دو ہفتوں سے شدید گرمی کے موسم میں 12 سے 18 گھنٹے کی طویل لوڈشیڈنگ کر کے شہریوں کی زندگی اجیرن بنادی۔دن کے ساتھ ساتھ رات 12 بجے سے 4 بجے صبح بھی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

شہریوں کی رات کی نیند اور دن کا چین اور سکون غارت ہوچکا ہے۔چیف جسٹس آف پاکستان سپریم کورٹ اور نیپرا کے حکم کے باوجود کے الیکٹرک شہر بھر میں لوڈشیڈنگ کررہی ہے۔لوڈشیڈنگ توہین عدالت اور لائسنس کی خلاف ورزی کی زمرے میں آتی ہے۔نیپرا فوری نوٹس لیکر کے الیکٹرک کیخلاف قانونی کاروائی کرکے اور لائسنس فوری منسوخ کرے۔