اقوام متحدہ مقبوضہ جموںوکشمیر میں نسل کشی روکنے کے لئے بھارت پر دبائو ڈالی: کل جماعتی حریت کانفرنس

اتوار 13 جون 2021 18:40

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 13 جون2021ء) غیر قانونی طورپربھارت کے زیر قبضہ جموںوکشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس نے ضلع بارہمولہ کے علاقے سوپور میں قابض بھارتی فوج کی طرف سے معصوم شہریوں پر اندھا دھند فائرنگ کی شدید مذمت کی ہے جس میں تین بے گناہ شہری شہید ہوئے ہیں۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں سوپور کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے سوگوار خاندانوں سے تعزیت کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ قابض بھارتی فوج نے علاقے کے طول وعرض میں خوف ودہشت کا ماحول قائم کررکھا ہے۔انہوںنے کہا کہ مقبوضہ جموںوکشمیر میں کالے قوانین کی آڑ میں نسل کشی ایک معمول بن چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حق خودارادیت کے حصول کے لئے حریت پسندکشمیریوں کی پرامن اور جائزجدوجہد کو دبانے کے لئے جبری نظربندیوں،خواتین کی بے حرمتی اور رہائشی مکانات کی تباہی کو جنگی حکمت عملی کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے ۔

(جاری ہے)

ترجمان نے کشمیری عوام بالخصوص سوپور کے لوگوں کی بہادری اور عزم کی تعریف کرتے ہوئے تحریک مزاحمت کو اس کے منطقی انجام تک پہنچانے کے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوںنے کہاکہ یہ ہمارے شہداء کو حقیقی خراج عقیدت پیش کرنے کا واحد طریقہ ہے۔ حریت ترجمان نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل اور اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل پر زوردیا کہ وہ جموںوکشمیر میں بھارتی فوج کی طرف سے جاری قتل وغارت، جبری نظربندیوں، خواتین کی بے حرمتی اور املاک کی تباہی کا نوٹس لیں۔ترجمان نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ تنازعہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل کرانے میں مدد دے اورمقبوضہ علاقے میں نسل کشی اورانسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے کے لئے بھارت پر دبائو ڈالے۔