ایکسپورٹ بڑھانے کیلئے جی ایس پی پلس میں مزید5توسیع کیلئے جدوجہد کرینگے،چوہدری محمدسرور

ہمیں اپنی زندگی میں ایسے کام کرنے چاہیے کہ دنیا سے جانے کے بعد بھی ہمارے نشان باقی رہیں،ایس ایم منیر کاروباری افراد کی تقریب سے زبیرطفیل،ظفربختاوری،سردار یاسر الیاس،حنیف گوہر،خالدتواب،اختیار بیگ اوردیگر کا خطاب

پیر 20 ستمبر 2021 21:15

ایکسپورٹ بڑھانے کیلئے جی ایس پی پلس میں مزید5توسیع کیلئے جدوجہد کرینگے،چوہدری ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 ستمبر2021ء) گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ وہ پہلے کی طرح پاکستان کی ایکسپورٹ کو بڑھانے کے لئے جی ایس پی پلس میں پانچ سال کی توسیع کیلئے سرگرمی کے ساتھ اپنا فرض نبھائیں گے اور پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے لیے یورپ کی مارکیٹ میں پاکستانی مصنوعات کی رسائی کو ڈیوٹی فری بنائیں گیاس وقت ملکی معیشت ترقی کی جانب گامزن ہے اور پاکستان کی ایکسپورٹ میں اضافہ ہورہاہے۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار گزشتہ شب یونائیٹڈ بزنس گروپ کے سیکریٹری جنرل ظفر بختاوری کی طرف سے ڈاکٹر گوہر اعجاز کو پی ایچ ڈی کی ڈگری ملنے پر ان کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب ست یونائٹیڈ بزنس گروپ کے سرپرست اعلیٰ ایس ایم منیرآل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلی ڈاکٹر گوہر اعجاز ،یونائیٹڈ بزنس گروپ کے صدر زبیر طفیل، ایل ڈی اے کے سابق وائس چیئرمین ایس ایم عمران، ظفر بختاوری ، خالد تواب ، میاں اکرم فرید ۔

(جاری ہے)

حنیف گوہر،اختیار بیگ،اسلام آباد چیمبر آف کامرس کے صدر سردار یاسر الیاس، احسن ظفر بختاوری اور قازقستان کے سفیریرزان کسٹافین( Yerzhen Kistafin) نے بھی خطاب کیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ایس ایم منیر نے کہا کہ ڈاکٹر گوہر اعجاز کرونا کے دنوں میں ایک لاکھ گھروں کومتواتر راشن فراہم کرتے رہے ہیں، ہمیں اپنی زندگی میں ایسے کام کرنے چاہیے کہ دنیا سے جانے کے بعد بھی ہمارے نشان باقی رہیں اور لوگ ایسے کاموں کی وجہ سے ان کو یاد رکھیں۔

زبیر طفیل نے کہا کہ ڈاکٹر گوہر اعجاز پاکستان کے ایک بہترین اور کامیاب کاروباری شخصیت ہیں اور انہوں نے جس انداز میں سماجی اورفلاحی کاموں کا آغاز کیا ہے پاکستان کی تمام کاروباری شخصیات کو اسی طرح اپنے سماجی خدمات کے سلسلے کو آگے بڑھانا چاہیے۔ گوہر اعجاز نے اس موقع پر کہا کہ ان پر ایک وقت ایسا بھی آیا تھا کہ وہ دس ارب روپے کی مقروض تھے اور انہوں نے اپنی کمائی میں سے 33 فیصد سماجی خدمت کے شعبے میں خرچ کرنا شروع کیا تو اللہ تعالی نے غیب سے ان کی مدد کرنی شروع کی اور دیکھتے ہی دیکھتے وہ ترقی کی منزلیں طے کرتے چلے گئے انہوں نے کاروباری طبقے پر زور دیا کہ وہ خیراتی کاموں صحت اور تعلیمی اداروں کی بھرپور سرپرستی کرکے پسے ہوئے طبقے کی مشکلات کو حل کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔

ایس ایم عمران نے کہا کہ پاکستان کی کاروباری برادری کو متحد ہو کر اپنے مسائل کے حل کے لیے لائحہ عمل مرتب کرنا چاہیے اور ہم صرف اتحاد ہی کی طاقت سے حکومت سے اپنے مطالبات منوا سکتے ہیں۔ایس ایم عمران نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان خلوص نیت کے ساتھ پاکستان کو معاشی طور پر آگے بڑھانے کے لئے کام کر رہے ہیں اور گزشتہ تین سالوں سے مسلسل کام کرنے سے ہم جیسے لوگوں کو کام کرنے کا طریقہ سکھایا ہے۔

ظفر بختاوری نے کہا کہ پاکستان اس وقت تک خوشحال اور ترقی یافتہ ملک نہیں بن سکے گا جب تک اس ملک میں کاروباری افراد کی عزت اور وقار کو آگے نہیں بڑھایا جائے گا۔ خالد تواب نے کہا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ ہماری دوسری نسل جس میں گوہر اعجاز، ایس ایم عمران اور احسن بختاوری شامل ہیں،کاروبار میں بھرپور دلچسپی کے ساتھ ساتھ سماجی خدمت میں بھی اپنا کردار ادا کر رہے ہیں۔

ڈاکٹر مرزا اختیار بیگ نے اس موقع پر کہا کہ وزیراعظم کو اپنے بیرون ملک دوروں میں باصلاحیت اور کامیاب کاروباری شخصیات کو شامل کرنا چاہیے۔ میاں اکرم فرید نے کہا کہ والدین اپنے بچوں کو ایک مثالی تاجر اور ایک مثالی پاکستانی بنانے کیلئے انکی تربیت پر خصوصی توجہ دینی چاہیے۔حنیف گوہر نے کہا کہ کاروباری طبقے کو ڈاکٹر گوہر اعجاز پر فخر ہے۔

سردار یاسر الیاس نے کہا کہ پاکستان صرف سیاحت اور زراعت پر توجہ مرکوز کرکے پاکستان کو معاشی طور پر ایک مضبوط ملک بنا سکتا ہے۔ احسن ظفر بختاوری نے کہا کہ پاکستان کو اپنے دوستانہ ممالک کے ساتھ تجارت کے فروغ کے لیے کام کرنا چاہیے جس میں ترکی، آذربائیجان اور وسط ایشیائی ممالک سرفہرست ہیں۔قازقستان کے سفیر یرزان کسٹافین نے کہا کہ پاکستان خطے کا ایک عظیم ملک ہے اور ہمارے صدر نے پاکستان کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کیلئے ہمیں خصوصی طور پر پاکستان بھیجا ہے اور ہمارے صدر اس سال پاکستان کا دورہ کرینگے۔