بند کریں
صحت صحت کی خبریںپاکستان میں میں ایک کروڑ 20 لاکھ افراد ہیپاٹائٹس میں مبتلا ہیں ،30لاکھ افراد سندھ میں آباد ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 18/08/2014 - 14:37:38 وقت اشاعت: 18/08/2014 - 14:31:17 وقت اشاعت: 18/08/2014 - 13:56:21 وقت اشاعت: 18/08/2014 - 12:31:49 وقت اشاعت: 18/08/2014 - 11:49:17 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 21:48:09 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 19:40:09 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 18:16:19 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 17:38:07 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 17:15:29 وقت اشاعت: 16/08/2014 - 17:09:39

پاکستان میں میں ایک کروڑ 20 لاکھ افراد ہیپاٹائٹس میں مبتلا ہیں ،30لاکھ افراد سندھ میں آباد ہیں‘ اقوام متحدہ کی رپورٹ،

اے سے ای تک اس مرض کی 5 اقسام ہیں، بی اور سی کا مرض خاموش قاتل ہے ،آگاہی مہمیں چلانے کے باوجود مرض پر قابو نہیں پایا جا سکا

لاہور( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔16اگست۔2014ء)اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ایک کروڑ 20لاکھ افراد ہیپاٹائٹس میں مبتلا ہیں جن میں 30 لاکھ افراد سندھ میں آباد ہیں۔اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق ہیپاٹائٹس کا مرض بنیادی طور پر جگر کی سوزش کہلاتا ہے، ہیپاٹائٹس اے سے ای تک اس مرض کی 5 اقسام ہیں، پاکستان میں ہیپاٹائٹس اے اور ای اقسام کے انفیکشن متعدی ہیں جس کی وجہ پینے کا گندا پانی یا ناقص سیوریج نظام ہے جبکہ ہیپاٹائٹس بی اور سی غیر محفوظ انتقال خون، انجیکشن کے لئے ایک ہی سرنج کا بار باراستعمال اور آلودہ طبی اوزار سے منتقل ہوتا ہے۔

پاکستان میں ہیپاٹائٹس بی اور سی کا مرض تو عوام کا خاموش قاتل ہے کیونکہ ان بیماریوں کا مریض کو اس وقت ہی علم ہوتا ہے جب اس کا جگر خطرناک حد تک خراب نہ ہوجائے۔اقوام متحدہ کے اندازے کے مطابق پاکستان میں 40 لاکھ افراد ہیپاٹائٹس بی اور 80 لاکھ افراد ہیپاٹائٹس سی کے وائرس سے متاثر ہیں۔ ہیپاٹائٹس ڈی عام طور پر صوبہ بلوچستان، پنجاب اور سندھ کے بعض علاقوں میں پایا جاتا ہے، صرف سندھ میں ہیپاٹائٹس کی تمام اقسام سے متاثر 30 لاکھ افراد موجود ہیں جو علاقے پیپاٹائٹس سے زیادہ متاثر ہیں ان میں سکھر، لاڑکانہ، قمبر اور شہداد کوٹ سرفہرست ہیں۔

واضح رہے کہ 2008 سے وفاقی اور صوبائی سطح پر ہر سال عوام کو اس مرض سے آگاہ کرنے اور اس سے بچا ؤپر زور دینے کے لئے کئی مہمیں چلائی جاتی ہیں اس کے باوجود اس پر قابو پانے میں ابھی تک کوئی خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں ہو سکی۔

16/08/2014 - 21:48:09 :وقت اشاعت