تیرہویں چیف آف دی نیول اسٹاف انٹرنیشنل اسکواش چیمپئن شپ 2018 کا روشن خان جہانگیر خان اسکواش کمپلیکس میں آغاز

تیرہویں چیف آف دی نیول اسٹاف اسکواش چیمپئن شپ 2018 کی افتتاحی تقریب آج روشن خان جہانگیر خان اسکواش کمپلیکس میں منعقد کی گئی

جمعہ دسمبر 01:14

تیرہویں چیف آف دی نیول اسٹاف انٹرنیشنل اسکواش چیمپئن شپ 2018 کا روشن ..
کراچی6 دسمبر: تیرہویں چیف آف دی نیول اسٹاف اسکواش چیمپئن شپ 2018 کی افتتاحی تقریب آج روشن خان جہانگیر خان اسکواش کمپلیکس میں منعقد کی گئی۔ کے پی ٹی کے جنرل مینیجر انجینئرنگ ، ریئر ایڈمرل ساجد وزیر خان نے بطور مہمان خصوصی اس تقریب میں شرکت کی۔ ٹورنامنٹ ڈائریکٹر کموڈور حبیب الرحمن نے تقریب سے خطاب میں تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ٹورنامنٹ ’الوداعی طرز‘ ‘ پر کھیلی جائے گی اور ٹاپ 8 کھلاڑیوں کو دوسرے راﺅنڈ میں کھیلنے کا موقع دیا جائے گا ۔

چیمپئن شپ کا پہلا راﺅنڈ آج شروع ہو چکا ہے جبکہ چیمپئن شپ 10 دسمبر کواختتام پذیرہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ 24 کھلاڑی اس ٹورنامنٹ میں حصہ لے ر ہے ہیں جن میں سے نصف کا تعلق پاکستان سے جبکہ نصف بین الاقوامی کھلاڑی ہیں جن کا تعلق مصر، ایران، ہانگ کانگ، آئر لینڈ، ملائیشیا، میکسیکو، پرتگال اور قطر سے ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ حصہ لینے والے تمام کھلاڑی بین الاقوامی رینکنگ رکھنے والے کھلاڑی ہیں۔

ٹورنامنٹ ڈائریکٹر نے امید ظاہر کی کہ یہ چیمپئن شپ ملک میں اسکواش کے فروغ میں مددگار ثابت ہوگی اوراس کھیل کی کھوئی ہوئی ساکھ واپس بحال کرنے کی طرف پاک بحریہ کا ایک بڑا قدم ہوگی۔ کموڈور حبیب الرحمن نے اس میگا ایونٹ میں شمولیت اور معاونت پر کھلاڑیوں ، آفیشلز اور اسپانسرزکے جوش و جذبے کی حوصلہ افزائی کی۔ چیمپئن شپ کے پہلے روز کل آٹھ میچز کھیلے گئے ،پہلے راﺅنڈ کا افتتاحی میچ پاکستان کے عماد فرید اور ملائیشیا کے ریان پاسکل کے درمیان کھیلا گیا اور جیت عماد فرید ّّکے حصے میں آئی۔

پہلی چیف آف دی نیول اسٹاف انٹرنیشنل اسکواش چیمپئن شپ کا انعقاد 2000 میں 6,000 امریکی ڈالر انعامی رقم کے ساتھ کیا گیا تھا۔ وقت کے ساتھ ساتھ انعامی رقم بڑھتی گئی اور امسال چیمپئن شپ کی انعامی رقم 18,000امریکی ڈالر رکھی گئی ہے۔ افتتاحی تقریب میں سول و ملٹری شخصیات ، اسپانسرز اور اسکواش کے سینیئر کھلاڑیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 07/12/2018 - 01:14:19

Your Thoughts and Comments