نعت اورہمارے انداز

پیر اپریل

Mirza Rizwan

مرزا رضوان

بلاشبہ نبی آخرالزماں حضور نبی کریم کی مداح سرائی کرنا اللہ رب العزت کا ایک بہت بڑا ”انعام“ اور ہمارے لئے ایک بہت بڑا” اعزاز“ہے ۔اور اس سے بڑھ کر نیک ”کمائی“کیا ہوسکتی ہے کہ اللہ رب العزت اپنے پیارے محبوب نبی کریم کی محبت ہمارے دل میں اجاگر کردے اور ہم اس عظیم بارگاہ میں ”نذرانہ عقیدت“پیش کرنے کے قابل ہوجائیں ۔

درحقیقت حضورنبی کریم کی شان میں ”نذرانہ عقیدت“پیش کرنا بھی ایک ”فیضان“ہے ۔کیا ہی”کرم “کی بات ہو کہ اللہ رب العزت ہماری اس مداح سرائی کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمالے۔۔۔میرے بہت ہی پیارے دوست ، بزرگ اور روحانیت و تصوف سے وابستہ دربار عالیہ حضرت بابافریدالدین مسعودگنج شکر  کے خادم محترم محسن فریدی صاحب نے آج کل کے ہمارے نعت خوانوں کی حقیقت سے لبریز خوب عکاسی فرمائی ہے جس پر میں ان کا دلی طور پر مشکور ہوں۔

(جاری ہے)

کچھ گرارشات تو میں اپنے گزشتہ کالم میں نعت کے حوالے سے کرچکاہوں لیکن یہاں میں اپنے برادر جناب سرور حسین نقشبندی صاحب کو پہلی قومی ادبی نعت کانفرنس کے کامیاب انعقاد پر مبارکباد دیتے ہوئے یہ بھی گزارش کروں گا کہ نعت کے حقیقی تشخص کی بحالی کا جو انہوں نے ”علم“اٹھایا ہے کہ براہ مہربانی میرے آج کے کالم میں کی جانیوالی گزارشات پر بھی کوئی ”کانفرنس“ منعقد کریں اور جو ہمارے نعت خواں بھائیوں کیلئے ایک” تربیتی نشست“ بھی ہو اور ان گزارشات سے” آشنائی“ بھی۔


اللہ تبارک وتعالیٰ اور اس کے پیارے حبیب حضورنبی کریم سے بے پناہ عشق و محبت رکھنے والے ہمارے بھائی ہر سال اپنی مددآپ کے تحت عظیم الشان محافل نعت کا انعقاد کرتے ہیں ، جس میں ملک بھر کے نامور نعت خواں حضرات کو بڑے اہتمام کے ساتھ مدعو کیا جاتاہے ۔حضور نبی کریم کی شان میں ان محافل کا انعقاد بڑی خوشی اور دھوم دھام سے پورا سال کیا جاتاہے ۔

دوست احباب، رشتہ دار، بہن بھائی حتیٰ کہ تمام اہل محلہ سب ملکر اپنے اپنے علاقوں میں ان محافل کا انعقاد کرتے ہیں ۔لیکن انتہائی افسوس کی بات یہ ہے کہ ان محافل میں جن عظیم نعت خواں حضرات کو مدعو کیا جاتا ہے پہلے تو آپ کو ان کے” سیکرٹری صاحب “سے فون ٹائم لینا مقصود ہوتا ہے ۔بے حد مصروفیت کے باوجود ان سے اجازت مل جاتی ہے مگر آنے جانے کا ”کرایہ“خواہ وہ ”ایئرلائن“ کی ریٹرن ٹکٹ ہی کیوں نا ہو۔

پھر بہترین ہوٹل میں قیام اور ایڈوانس رقم جہاں پر طے پاجائے ۔اب ہمارے ہر بھائی کی کوشش ہوتی ہے کہ میں یہ محفل جوکروا رہاہوں اس میں نامور نعت خواں ہی تشریف لائیں تاکہ محفل میں آنے والوں کو لطف آجائے اور وہ یاد رکھیں کہ واہ کیا محفل کروائی ہے اور پھر سب کے سب نعت خواں بہت معروف تھے جن کو صر ف ٹی وی میں دیکھتے ہیں آج ان کی زیارت بھی ہوگئی اور ”لائیو“کلام بھی سن لیا ۔

وی وی آئی پی پروٹوکول اور بڑی سج دھج سے آنیوالے ان نعت خواں حضرات کو اللہ رب العزت نے اس قابل کیا ہے اور اللہ تعالیٰ نے ہی انکو یہ عزت بخشی ہے اور رزق دینے والا بھی ہی قادر مطلق ہے تو پھر میں کون ہوتا ہوں اعتراض کرنیوالے والا ۔۔۔مگر اتنا ضرور ی ہے کہ بات ”عشق و محبت “کی ہے توپھر کچھ لکھا بھی جائے ، خیرآگے چلتے ہیں ۔
ان میں کچھ ”درویش صفت“نعت خواں بھی ہیں جن کی میں دل سے بہت قدر کرتاہوں ۔

اور بہت سے تو اب اپنی مثال آپ ہیں ، وہ کہتے ہیں نا کہ ”نام ہی کافی ہے “۔۔۔اب محفل میں ”عورتوں “جیسے” رنگدار“ اور” پھولدار“کپڑوں میں ملبوس جلوہ افروز گانوں کی طرز پر نعت پیش کریں گے تو پھر کسی کو تو ذمہ داری لینا ہوگی ناکہ یہ ”ممنوعہ لباس “ہے ۔یوں نعت پڑھتے وقت اداکاراؤں جیسی ادائیں اور اسٹائل ، پھر ویسی ہی حرکات ۔۔۔قربان جاؤں میں ان کے۔

محفل کے حاضرین کو ”طعنے “دیکر پیسے پھینکنے پر آمادہ کرنا ۔۔۔واہ واہ کیا بات ہے ،نعت سننے والوں کو جھومنے کی فرمائش کرنا۔ شرکاء سے زبردستی ہاتھوں کولہرانے پر زوردینا۔ہاتھ ہلا ہلاکر ”جبری“داد وصول کرنا ۔چست اور تنگ لباس میں ملبوس ہوکر ”شریعت مطہرہ“کی حدوں کو باآسانی ”کراس “کرجانا۔بالوں اور ٹوپی کا سٹائل ایک پروفیشنل طریقے سے رکھنا ۔

ان سب خصوصیات سے مزین نعت خواں حضرات دونوں ہاتھ جوڑ کر ”منت “ہی ہوسکتی ہے کہ ”خدارا“ایسی خرافات سے اللہ رب العزت کے نعت خوانی کے اس احسان عظیم اور نبی آخرالزماں حضور نبی کریم کی مداح سرائی کو ذرادُور ہی رکھیں ۔اور ان خرافاتوں پر وقت ضائع کرنے کی بجائے حضور نبی کریم کے عشق و محبت اور سوزمیں لبریز کلام پیش کرکے انتہائی سادگی سے اللہ کے حضور دعا کریں کہ آپ کے اس ”نذرانہ عقیدت“کو اپنی عظیم بارگاہ میں ”قبولیت“کا ”شرف“بخشے ۔بے شک میری گزارشات ذرا تلخ ضرور ہیں مگر حقیقت سے دُور نہیں اور پھر یہ گزارشات میں ہاتھ جوڑکر ان نعت خوانوں سے کررہاہوں جو ان ”خرافات “میں ”ڈوب“چکے ہیں ۔اللہ رب العزت میری اور آپکی حقیقی رہنمائی فرمائے (آمین)
© جملہ حقوق بحق ادارہ اُردو پوائنٹ محفوظ ہیں۔ © www.UrduPoint.com

تازہ ترین کالمز :

Your Thoughts and Comments

Urdu Column Naat Or Hamare Andaz Column By Mirza Rizwan, the column was published on 29 April 2019. Mirza Rizwan has written 9 columns on Urdu Point. Read all columns written by Mirza Rizwan on the site, related to politics, social issues and international affairs with in depth analysis and research.