PS-Asia یوتھ رپورٹنگ ورکشاپ کا انعقاد 4 نومبر سے ہوگ

ہفتہ ستمبر 23:17

PS-Asia یوتھ رپورٹنگ ورکشاپ کا انعقاد 4 نومبر سے ہوگ
کراچی۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 ستمبر2018ء) پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار AIPS-Asia یوتھ رپورٹنگ ورکشاپ کا انعقاد 4 سے 9 نومبر تک کراچی کے مقامی ہوٹل میں کیا جائے گا، ورکشاپ میں 15ممالک کے 25 سے زائد ینگ جرنلسٹس سمیت کھیلوں سے وابستہ پاکستانی صحافی شرکت کریں گے، میرے والد کی خدمات کے اعتراف میںسجاس کا ان کے نام سے گولڈ میڈل کا اجراء میرے اور میری فیملی کے لئے باعث فخر ہے۔

سجاس کے پیٹرن ڈاکٹر جنید علی شاہ نے ہفتہ کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایسوسی ایشن انٹرنیشنل پریس آف اسپورٹس (AIPS ) 1924ء سے دنیا کے تمام ممالک میں اسپورٹس جرنلٹس کے پیشہ وارانہ تربیت کے لئے سرگرم عمل ہے۔ واضح رہے کہ AIPS کی شاخیں ایشیا، یورپ، ساوتھ افریقہ اور امریکہ میںموجود ہیں، اس تنظیم کا مقصد اسپورٹس سے وابستہ صحافیوں کی پیشہ وارانہ تربیت کے لئے کام کرنا ہے۔

(جاری ہے)

پاکستان میں AIPS، اسپورٹس رائٹرز فیڈریشن (PSWF)کے ذریعے کام کررہی ہے۔ PSWF ملک بھر میں اپنی ایسوسی ایشنز کے ذریعے متحرک ہے، اسپورٹس جرنلسٹس ایسو سی ایشن سندھ (سجاس)کا الحاق PSWF کے ذریعیAIPS سے ہے، سجاس کے 24 سے زائد اراکین AIPS کے براہ راست ممبر ہیں۔ آپ سب جانتے ہیں کہ پاکستان میں اسپورٹس سے وابستہ صحافیوں کی پیشہ وارانہ تربیت کے لئے کوئی ادارہ موجود نہیں اور نہ ہی میڈیا ہائوسز اس پر توجہ دیتے ہیں،کراچی میں سجاس اپنے ساتھیوں کی پیشہ وارانہ تربیت کے لئے موبائل رپورٹنگ، نیٹ بال رپورٹنگ اور بیڈمنٹن رپورٹنگ سمیت دیگر کھیلوں کے حوالے سے ورکشاپ کا اہتمام کرچکی ہے۔

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار سجاسAIPS Asia کے تحت کراچی میں ایک انٹرنیشنل یوتھ رپورٹنگ ورکشاپ کا انعقاد کررہی ہے جس کا مقصد جہاں ایک جانب پاکستانی صحافیوں کو غیر ملکی صحافیوں کے ساتھ پیشہ وارانہ تربیت کا موقع فراہم کرنا ہے وہیں پاکستان کے پر امن تصور کو مزید اجاگرکرنا اور دنیا کو کھیلوں کے حوالے سے بتانا ہے کہ پاکستان باالخصوص کراچی ایک پرامن ملک و شہر ہے، والی ورکشاپ میں ایشیاء کے مختلف ممالک بشمول چین، بھارت، قطر، سعودی عرب، ایران، افغانستان، سری لنکا، ہانگ کانگ اور عراق سمیت 15 سے زائد ممالک کے 25 کے قریب نوجوان اسپورٹس جرنلسٹس شریک ہونگے جبکہ کراچی سمیت پاکستان بھر سے 20 ینگ اسپورٹس جرنلسٹس بھی ورکشاپ کا حصہ ہونگے، ورکشاپ کے دوران AIPS Asia کے صدر اور سیکریٹری امجد عزیز ملک بھی دیگر غیر ملکی مہمانوں کے ہمراہ موجود ہوں گے۔

شیڈول کے مطابق4 نومبر کو مہمانوں کی آمد ہوگی، 5 اور 6 نومبر کو صبح سے سہ پہر تک ورکشاپ کے مختلف سیشن ہوں گے۔ افتتاحی تقریب بھی5 نومبر کو ہوگی، سہ پہر کے بعد مہمان جرنلسٹس نیشنل اسٹیڈیم، عبدالستار ایدھی ہاکی اسٹیدیم، اولمپیئن حنیف خان و ڈاکٹر جنید علی شاہ ہاکی اکیڈمی، مختلف میڈیا ہائوسز کا دورہ کریں گے، 7 نومبر کو اختتامی تقریب کے موقع پر ایوارڈ کی تقریب ہوگی جس میں ایس ایم نقی، منیر حسین، شمش الزماںاور ماجد خان جیسے عظیم جرنلسٹس کے نام سے منصوب ایوارڈ سینئر جرنلسٹس کو دیئے جائیں گے جبکہ اس موقع پر سجاس ڈاکٹر ایم اے شاہ گولڈ میڈل کا اجراء بھی کیا جائے گا، ایوارڈ کے لئے سینئر صحافی راشد عزیز، انیس الدین خان اور سجاس کے سیکریٹری اصغر عظیم پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے، اصغر عظیم کمیٹی میں صرف معاونت کا کردار اداکریں گے جبکہ دونوں سینئر صحافی CPNE کے فارمیٹ کے تحت فیصلہ کرنے میں آزاد ہونگے، 8 نومبر کو دن کے اوقات میں مہما ن صحافی شہر کے مختلف مقامات کی سیر کریں گے جبکہ اسی رات معین خان اکیڈمی میں 4 ٹیموں گورنر الیون، وزیر اعلی الیون، شوبز الیون اور سجاس انٹرنیشنل جرنلسٹس الیون کے درمیان نمائشی میچ کھیلے جائیں گے، 9 نومبر کی صبح مہمان صحافی واپس چلے جائیں گے۔

افتتاحی تقریب کے مہمان خاص وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ جبکہ اختتامی تقریب کے مہمان خاص گورنر سندھ عمران اسمعیل ہوں گے۔ اس موقع پر سجاس کے سیکریٹری اصغر عظیم نے کہا کہ یہ پہلاموقع ہے جب اسپورٹس کے حوالے سے پاکستان میں انٹر نیشنل سطح پر ورکشاپ کا انعقاد کیا جارہا ہے، سجاس کا مقصد ایک جانب اپنے ممبران کی فلاح بہبود کے لئے کام کرنا ہے تو دوسری جانب اس کا اصل کام اسپورٹس جرنلسٹس کے درمیان سیکھو اور سیکھائو کے عمل کو جاری رکھنا ہے، سجاس ایونٹ کے انعقاد کے لئے ٹرپل ای کے چیف ایگزیکٹو ارشد صدیقی کا بھی شکریہ اداکرتی ہے جن کے بھر پور تعاون کے باعث کراچی میں ایک منفرد ایونٹ کا انعقاد ممکن ہوا ہے۔

پریس کانفرنس کے اختتام پر سجاس کے صدر طارق اسلم نے کوریج کے لئے آنے والے صحافیوں اور مہمانوں کا شکریہ اداکیا۔