Live Updates

مولانافضل الرحمان کو نوازشریف کی جانب سے لانگ مارچ کے لیے حمایت کا پیغام بھیجوا دیا گیا

نواز شریف کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کو پیغام پہنچ چکا ہے کہ لانگ مارچ میں انکی حمایت کی جائیگی: جاوید لطیف

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ پیر ستمبر 22:47

مولانافضل الرحمان کو نوازشریف کی جانب سے لانگ مارچ کے لیے حمایت کا ..
اسلام آباد ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 09 ستمبر 2019ء) مسلم لیگ ن کے رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کو پیغام پہنچ چکا ہے کہ لانگ مارچ میں انکی حمایت کی جائیگی۔ انہوں نے نجی ٹیوی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کو پیغام پہنچ چکا ہے کہ لانگ مارچ میں انکی حمایت کی جائیگی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل لیگی رہنما سینیٹر پرویز رشید نے بھی کہا کہ اگراگلے سال انتخابات کو جبراً روکنے کی کوشش کی گئی توپھر میں دعا کروں گا کہ اللہ تعالیٰ ہم سب کو محفوظ رکھے،عمران خان کوچاہیے پاکستان کو بھونچال سے بچانے کیلئے مولانا فضل الرحمان کے مطالبات مان لیں۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے اکتوبر میں اسلام آباد لاک ڈاؤن دھرنے کے لیے سیاسی رابطوں کا آغاز کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

اس حوالے سے ایک میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مسلم لیگ ن ، پیپلز پارٹی اور اے این پی سمیت تمام اپوزیشن جماعتوں کو حکومت مخالف دھرنے میں شرکت کی دعوت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے شیر پاؤ سے ملاقات کی جب کہ اسفند یار ولی سے رابطہ کیا۔محرم الحرام کے بعد بلاول بھٹو، محمود اچکزئی،سراج الحق اور حاصل بزنجو کے ساتھ رابطہ کا فیصلہ کیا ہے۔

جب کہ اب نواز شریف نے بھی لانگ مارچ کی حمایت کا اعلان کر دیا ہے۔ دوسری جانب معروف صحافی صدیق جان نے کہا ہے کہ اصل میں اس صورتحال میں یہ دیکھنا ہو گا کہ مولانا فضل الرحمن کس نعرے کے ساتھ آتے ہیں۔کیونکہ ہم نے دیکھا کہ جب اے پی سی ہوئی تو اس کے بعد پیپلز پارٹی کے سیینیٹر مصطفیٰ کھوکھر نے ایک انٹرویو کے دوران برملا اعتراف کیا کہ مولانا فضل الرحمن نے اُس اے پی سی کے دوران جس میں بلاول بھٹو بھی موجود تھے،یہ کہا کہ وزیراعظم عمران خان پر توہین مذہب کا الزام لگایا جائے، مولانا فضل الرحمن اسی نعرے کے ساتھ آنا چاہتے ہیں۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ مولانا فضل الرحمن کے تمام فالوورز مذہبی ہیں۔مولانا فضل الرحمن کے فالووز ایک ہی بات پر لڑنے مرنے کو تیار ہیں اور وہ ہے مذہب۔ صدیق جان نے مزید کہا کہ مولانا فضل الرحمن اقتدار میں آنے،عمران خان کو حکومت سے ہٹانے اور دوبارہ اسمبلی میں آنے کے لیے مذہب کے نام کا استعمال کریں گے۔
وزیراعظم کا دورہ امریکہ سے متعلق تازہ ترین معلومات