اُردو پوائنٹ پاکستان کراچیکراچی کی خبریںوزیراعظم اورچیئرمین نیب کی خفیہ اور سرعام ملاقاتوں سے انتقامی کارروائی ..

وزیراعظم اورچیئرمین نیب کی خفیہ اور سرعام ملاقاتوں سے انتقامی کارروائی کاتاثرملتاہے، بلاول بھٹو زرداری

, پریس کانفرنس میں آزاد اداروں کو کھلے عام دھمکیاں دی جاتی ہیں، ایسے میں اگلے دن کوئی تبدیلی ہو تو ظاہر ہے شک پیداہوتاہے

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2018ء) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ وزیراعظم اورچیئرمین نیب کی خفیہ اور سرعام ملاقاتوں سے انتقامی کارروائی کاتاثرملتاہے، پریس کانفرنس میں آزاد اداروں کو کھلے عام دھمکیاں دی جاتی ہیں، ایسے میں اگلے دن کوئی تبدیلی ہو تو ظاہر ہے شک پیداہوتاہے، پاکستان تحریک انصاف تحریک انتقام بننے کی کوشش کر رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری سانحہ کارساز کی برسی کے موقع پر کارساز پہنچے جہاں انہوں نے شہدا کے لیے فاتحہ خوانی کی، اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جب بلاول بھٹو سے نیب کی کارروائیوں کے متعلق سوال پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ جب ملک کے وزیراعظم اور وزیر نیب کے بڑے لوگوں سے خفیہ ملاقاتیں کریں اور وزیراعظم سرعام پریس کانفرنس میں نیب کو دھمکی دیں اور اگلے دن کوئی تبدیلی ہو تو شک پیدا ہوگا، حکومت کے رویئے سے نظر آتا ہے کہ یہ تحریک انصاف اب تحریک انتقام کی سیاست کی کوشش کررہی ہے، چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ ہم نے انتقامی سیاست کو پیچھے چھوڑا تھا، اپوزیشن لیڈر کو ضمنی الیکشن سے چند دن پہلے اس طرح گرفتار کیا جاتا ہے تو شک پیدا ہوتا ہے، جب سیاسی کیس بنائے جاتے ہیں اور قانونی طریقہ استعمال نہیں کیا جاتا تو ہر سیاسی جماعت اور دیکھنے والا اس کو انتقامی سیاست کا نام دیتا ہے۔

(خبر جاری ہے)

چیئرمین پی پی نے مزید کہا کہ معاشی سطح پر ملک کو بہت نقصان پہنچایا گیاہے، عوام ڈوب رہی ہے، حکومت نے عوام کو ریلیف دینا تھا، جس طرح کے معاشی فیصلے ہورہے ہیں اس سے عوام کو تکلیف ہورہی ہے، سیاسی اور معاشی سطح پر حکومت ناکام نظر آرہی ہے۔ سانحہ کارساز کی تفتیش سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ سانحہ کارساز سے لے کر آج تک نہ صرف ہمارے بلکہ دیگر شہدا کو بھی اب تک انصاف نہیں ملا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

کراچی شہر کی مزید خبریں