اُردو پوائنٹ پاکستان لاہورلاہور کی خبریںتھانوں کی ماڈرن لائنز پر اپ گریڈ یشن کیلئے اے ایس پیز اور ڈی ایس پیزبہترین ..

تھانوں کی ماڈرن لائنز پر اپ گریڈ یشن کیلئے اے ایس پیز اور ڈی ایس پیزبہترین سپروائزرز کا کردار ادا کریں ‘امجد جاوید سلیمی

, ماتحت عملے کی استعداد کار میں اضافے کیلئے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ ٹریننگ کورسز کے انعقاد کے ساتھ کمیونٹی پولیسنگ کی طرز پر عوام کی جان ومال کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات یقینی بنائیں‘آئی جی پنجاب

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2018ء) نسپکٹر جنرل پولیس پنجاب امجد جاوید سلیمی نے کہا ہے کہ صوبے کے تمام اضلاع میں تھانوں کی ماڈرن لائنز پر اپ گریڈ یشن اورعوام کو بہترین سروس ڈلیوری کی فراہمی کیلئے اے ایس پیز اور ڈی ایس پیزبہترین سپروائزرز کا کردار ادا کریں اورماتحت عملے کی استعداد کار میں اضافے کیلئے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ ٹریننگ کورسز کے انعقاد کے ساتھ کمیونٹی پولیسنگ کی طرز پر عوام کی جان ومال کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات یقینی بنائیں، ہمارا مقصد عوام کی خدمت اور قانون کی بالادستی کو یقینی بناناہے اور اس مقصد کے حصول کیلئے بطور کمانڈر میں کوشش کروں گا کہ آپ کو تمام درکار سہولیات مہیا کروں اور بدلہ میں آپ اپنی جان کی پرواہ کئے بغیر مکمل دیانتداری اور بھرپور صلاحیت کے مطابق عوامی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔

(خبر جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنٹرل پولیس آفس میں منعقدہ پولیس دربار میں صوبے کے تمام اضلاع سے آئے اے ایس پیز اور ڈی ایس پیز صاحبان کو ہدایات دیتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی ویلفیئر اینڈ فنانس طارق مسعود یٰسین ، ایڈیشنل آئی جی انویسٹی گیشن ابوبکر خدا بخش، ایڈیشنل آئی جی اسٹیبلشمنٹ اظہر حمید کھوکھر اور ڈی آئی جی ویلفیئر اینڈ فنانس طارق عباس قریشی سمیت سی پی او کے تمام افسران موجود تھے ۔

دربار میں آئی جی پنجاب امجدجاوید سلیمی نے اے ایس پیز اور ڈی ایس پیز صاحبان سے انکے مسائل سنے اور انکے فوری حل کیلئے موقع پر ہی احکامات جاری کئے ۔انہوں نے تاکید کی کہ اشتہاری ملزمان کی جلد از جلد گرفتاری کیلئے ایس ڈی پی اوز اپنی نگرانی میںموثرحکمت عملی کے ساتھ کریک ڈائون کا آغاز کریں جبکہ تھانہ کلچر میںحقیقی تبدیلی کیلئے باقاعدہ انسپکشن ، سخت مانیٹرنگ ،پریڈ اور پی ٹی کی روایت کو از سر نو شروع کروایا جائے ۔

انہوں نے مزیدکہا کہ تھانو ں میںپینے کے صاف پانی کی فراہمی کے علاوہ صفائی کے نظام پر بطور خاص توجہ دیتے ہوئے پنجاب کے تمام 721تھانوں میں سویپرز کی بھرتی کا عمل فوری مکمل کیا جائے اورصوبے کی تمام پولیس لائنز میں ڈسٹرکٹ ٹریننگ سکولز کھولے جائیں جہاں ماہر ٹرینرز کی زیر نگرانی اہلکاروں کیلئے انویسٹی گیشن ، ٹریفک مینجمنٹ ،کرائم کنٹرول ، اینٹی رائٹس سمیت دیگر امور کے حوالے سے تربیتی ورکشاپس اور ریفریشر کورسز کا سلسلہ بلا تعطل جار ی رہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ عوام کی جان و مال کا تحفظ اور تھانہ لیول پر پولیس اہلکاروں کی اصلاح ایس ڈی پی اوز کا کام ہے لہذا تمام افسران بھرپور محنت اور فرض شناسی کے ساتھ فرائض ادا کرتے ہوئے عوام کی بہترین خدمت کے حوالے سے ماتحت اہلکاروں کوتربیت دیں ۔آئی جی پنجاب امجد جاوید سلیمی نے افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ خود احتسابی کے سخت نظام کے تحت ایس ڈی پی اوز اور ڈی ایس پیز اپنے زیر انتظام تھانوں میں اصلاحات کا سلسلہ شروع کروائیں ، تھانوں کے 25رجسٹرز کا ریکارڈ باقاعدگی سے خود چیک کریں اور پیشہ ورانہ فرائض میں غفلت بالخصوص کرپشن، طاقت کے بے جا استعمال اور ایف آئی آر کے اندراج میں تاخیر ی حربے استعمال کرنے والے افسران واہلکاروں کے خلاف کاروائی میں ہرگز رعائیت نہ برتیں ۔

انہوں نے مزید کہا کہ تمام اضلاع میں ریسورس مینجمنٹ سنٹرز قائم کرتے ہوئے دستیاب وسائل کی ڈیجیٹلائزیشن کا عمل شروع کیا جائے اور تھانوں کو خوبصورت، جاذب نظر بنانے کیلئے صفائی ، ستھرائی ، عمارات کی مرمت اور رنگ و روغن کو یقینی بنایا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ محفوظ پنجاب اور محفوظ معاشرے کی تشکیل کے تصور کو حقیقت میں بدلنے کیلئے پولیس اور عوام میں اعتماد اور کوارڈی نیشن کا ہونا بہت ضروری ہے لہذا سینئر افسران علاقے کے معززین ، علمائے اکرام ، انجمن تاجران ، وکلا ء ، سول سوسائٹی اور صحافی برادری کے ساتھ میٹنگز کریں اور کیمونٹی پولیسنگ کی طرز پرجرائم کے خلاف لڑائی میں انکا تعاون بھی حاصل کریں۔

انہوں نے مزید کہا کہ افسران واہلکاروں کی بروقت ترقیوں اوربچوں کی تعلیم اور صحت سمیت ویلفیئر کے دیگر اقدامات کو بھی یقینی بنایا جائے گا۔ آئی جی پنجاب نے موقع پر جاری کئے جانے والے احکامات میں اردل روم اور ترقیوں کیلئے پروموشن بورڈ کے اجلاس کو جلد از جلد منعقد کرنے کی ہدایت جاری کرتے ہوئے افسران کو اپنی اے سی آرز جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ۔

انہوںنے مزید کہا کہ تقرری و تعیناتیوں کے سلسلے میں کسی افسر کو سفارش کروانے کی ضرورت نہیں بلکہ افسران و اہلکاروں کو انکی سہولت کے مطابق تعینات کرنا ہماری ترجیحات میں شامل ہے تاکہ وہ پوری دلجمعی اور توجہ کے ساتھ عوام کی خدمت کے فرائض سر انجام دے سکیں ۔انہوںنے مزید کہا کہ پولیس ملازمین کے بچوں کی بہترین تعلیم کیلئے صوبے کی تمام ریجنز میںپارٹنر شپ کے تحت نئے پولیس سکولز قائم کئے جائیں گے یا معروف سکول نیٹ ورکس میں پولیس ملازمین کے بچوں کیلئے فیس میںکمی اورداخلے کا کوٹہ مختص کروایا جائے گا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملازمین کو صحت کی سہولیات کی بروقت فراہمی کیلئے انہیں ہیلتھ انشورنش کارڈ مہیا کئے جائیں گے اور ان کارڈز کے استعمال سے وہ اپنا علاج جدید ہسپتالوں سے کروا سکیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام افسران و اہلکار ہر قسم کے دبائو سے آزاد ہو کر عوام کی خدمت اور حفاظت پر اپنی توجہ مرکوز کریں جبکہ تمام افسران واہلکاروں کو ہفتے میں ایک دن کا ریسٹ لازمی دیا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ فیلڈ میں کام کرنے والے افسران و اہلکار پبلک ڈیلنگ میں وسیع تجربہ کے حامل ہونے کی وجہ سے ریفارمز کیلئے اہم عملی تجاویز دے سکتے ہیں جو کہ زمینی حقائق کے قریب تر ہونے کی وجہ سے نہ صرف آسانی سے رائج کی جا سکیں گی بلکہ یہ اصلاحات موثر بھی ہونگی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاہور شہر کی مزید خبریں