ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ کا خصوصی عدالت کے فیصلے میں بری پانچوں ملزمان کو آئندہ تاریخ پر عدالت پیش کرنیکا حکم

تیرہ سال سے انصاف کے متلاشی ہیں،پرویز مشرف کو انصاف کے کٹہرے میں دیکھنا چاہتے ہیں، لطیف کھوسہ قانون سازی کے موقع پر لیڈر آف اپوزیشن کو بولنے نہیں دیا گیا ،اپوزیشن ایک دوسرے کے ساتھ مل بیٹھتی ہے،میڈیا سے گفتگو

منگل ستمبر 12:17

ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ کا خصوصی عدالت کے فیصلے میں بری پانچوں ملزمان ..
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 22 ستمبر2020ء) ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ نے بے نظیر قتل کیس کے فیصلے میں اپیلوں کی سماعت کے دور ان خصوصی عدالت کے فیصلے میں بری پانچوں ملزمان کو آئندہ تاریخ پر عدالت پیش کرنیکا حکم دیدیا ۔پاکستان پیپلز پارٹی کی اپیلوں کی سماعت جسٹس صداقت علی خان اور جسٹس صادق محمود خرم پر مشتمل ڈویژن بنچ نے کی۔

سی پی او کے پیش نہ ہونے پر عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے سی پی او اور آر پی او کو آئیندہ تاریخ پر جواب دینے کا حکم دیا ۔ عدالت نے بری پانچ ملزمان کی رپورٹ پیش نہ کرنے پر عدالت کا اظہار برہمی کیا ۔اپیلیں پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف زرداری نے دائر کی تھیں۔ب عد ازاں سزا یافتہ پولیس افسران کی اپیلوں کی سماعت 19اکتوبر تک ملتوی کر دی۔

(جاری ہے)

لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بینچ کے سامنے لطیف کھوسہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ 27دسمبر کو بینظیر اور انکے ساتھیوں کو قتل کیا گیا،کیس کا بڑا ملزم کیسے مفرور ہوا وہ آپ کے سامنے ہے،ریاست کی بے حسی دیکھیں ان کو انصاف کے کٹہرے میں نہیں لایا جاسکا۔ انہوکںنے کہاکہ 19سال قید والوں کو نوکریوں پر بحال کردیا گیا اور ترقیاں بھی دی گئیں،سی پی او راولپنڈی عدالت کے حکم پر پیش نہیں ہوئے۔

لطیف کھوسہ نے کہاکہ عدالت نے سی پی او سے وضاحت طلب کی ہے ،میں نے کہا مشرف کو بھی طلب کریں وہ بڑا ملزم ہے اسے سزائے موت دی جائے۔ انہوںنے کہاکہ یہ نظام عدل پر بھی بہت سوال آتا ہے،بھارت کیا کہہ رہا ہے ہمیں اس سے کوئی سروکار نہیں ۔ انہوںنے کہاکہ پیپلز پا رٹی کشمیر کے مؤقف پر بھرپور سپورٹ کرتی ہے،اتحاد ہو تے رہتے ہیں ہندوستان ہمارا دشمن ہے باتیں کرتا رہتا ہے۔

انہوںنے کہاکہ قانون سازی کے موقع پر لیڈر آف اپوزیشن کو بولنے نہیں دیا گیا ،اپوزیشن ایک دوسرے کے ساتھ مل بیٹھتی ۔ راجہ پرویز اشرف نے کہاکہ پارلیمانی نظام کے تکریم کے لیے ہم مل بیٹھے ہیں ،سیاست کام سیاستدانوں کا ہے افواج پاکستان پوری قوم کی مشرکہ ہے ،آرمی کا سیاست سے دور رہنے کا بیان خوش آئند ہے۔ نیر بخاری نے کہاکہ نواز شریف نے اپنا ایک بیان دیا۔ سردار لطیف کھوسہ نے کہاکہ تیرہ سال سے انصاف کے متلاشی ہیں،پرویز مشرف کو انصاف کے کٹہرے میں دیکھنا چاہتے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ کسی دوسرے ملزمان کو بھی انصاف کے کٹہرے میں نہیں لایا جا سکا،ہم سے پاکستان بھر کی عوام سوال کرتی ہے مگر دیکھتے ہیں کیا ہوتا ہے۔