اسلام آباد:کل جماعتی حریت کانفرنس آزاد کشمیر شاخ کے زیر اہتمام نریندر مودی کے خلاف مظاہرہ

بھارتی وزیر اعظم مودی کے خلاف حریت کانفرنس کا بھارتی ہائی کمیشن کے باہر احتجاج ، مودی دہشتگرد کے نعرے مودی کشمیریوں کا قاتل ہے، اقوام متحدہ میں مودی کا خطاب عالمی برادری کو گمراہ کرنے کے سوا کچھ نہیں، حریت رہنمائوں کا خطاب

ہفتہ ستمبر 16:45

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 ستمبر2020ء) بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کے خلاف حریت کانفرنس نے بھارتی ہائی کمیشن کے باہراحتجاج کیا اور مظاہرین نے ’دہشت گرد، دہشت گرد ،بھارت دہشت گرداور مودی دہشتگرد کے فلگ شگاف نعرے لگائے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق حریت رہنمائوں نے اس موقع پر اپنی تقاریر میں کہا کہ نریندر مودی کشمیریوں کی نسل کشی کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں ۔

انہوں نے کہا بھارتی فورسز نہتے کشمیریوں کو ماروائے عدالت قتل کر رہی ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ کشمیری کسی قسم کی مراعات کیلئے نہیں بلکہ اپنے پیدائشی حق ، حق خود ارادیت کیلئے قربانیاں د ے رہے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ بھارتی حکومت غیر کشمیریوںکو جموںوکشمیر کے ڈومیسائل فراہم کر کے علاقے میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کی کوشش کر رہی ہے جبکہ اس نے مقبوضہ علاقے میں مساجد اور مسلمانوں کے دیگر مذہبی مقامات کو مندروں میں تبدیل کرنے کا بھی منصوبہ بنا رکھا ہے۔

(جاری ہے)

حریت رہنمائوں نے کہا کہ حریت رہنمائوں شبیر احمد شاہ، محمد اشرف صحرائی، محمد یاسین ملک ، مسرت عالم بٹ ، آسیہ اندرابی ، مولانا مشتاق وریزی ،امیر جماعت اسلامی ڈاکٹر حمید فیاض اور دیگر حریت رہنمائوں اور کارکنوں کو جیلوںمیں نظر بند رکھا گیا ہے جبکہ بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق، آغا سید حسن الموسوی الصفوی اور دیگر قائدین کو گھروں میں نظر بند رکھا گیا ہے۔

حریت رہنمائوں نے جنرل اسمبلی سے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی تقریر کو سراہتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کشمیریوں کے جذبات کی حقیقی ترجمانی کی ہے۔ انہوںنے کہا کہ قبل ازیں ترک صدر رجب طیب اردوان نے بھی جنرل اسمبلی سے خطاب میں کشمیریوں کے احساسات و جذبات کی ترجمانی کی ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری ایک عظیم مقصد کے لیے قربانیاں دے رہے ہیںاور وہ اپنی تحریک کو ہر قیمت پر منطقی انجام تک پہنچائیں گے ۔

انہوںنے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیے جانے تک جنوبی ایشیا میں پائیدار امن ممکن نہیں۔ انہوںنے اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ تنازعہ کشمیر کو اپنی پاس کردہ قراردادوں کے مطابق حل کرانے میں کردار ادا کرے۔ مظاہرے میں سیدفیض نقشبندی ، اشتیاق حمید، شمیم شال ، نذیر احمد کرناہی ، حاجی سلطان، عبدالمجید ملک ، عبدالمجید میر، امتیاز وانی، حاجی سلطان بٹ، شیخ عبدالمتین، حسن البناء، ایڈووکیٹ پرویزاحمد، سید اعجاز احمدشاہ، گلشن احمد ، سید مشتاق، محمد شفیع ڈار، سلیم ہارون، مشتاق بٹ، عدیل مشتاق، زاہد صفی، کفایت رضوی، سید علی رضا بخاری ، عبدالرشید شاہ، سرور شاہ اور دیگر شامل تھے۔