صوبائی وزراء نے سیمنز چورنگی پر سائٹ ایریا میں 1037.79 ملین روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والی 17 سڑکوں کا سنگ بنیاد رکھ دیا

کراچی کے لئے رواں مالی سال بجٹ میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے 100 ارب مختص کئے ہیں، صنعتوں کے فروغ کے لیے انفراسٹرکچر کی تعمیر بنیادی اہمیت کی حامل ہے، سید ناصر حسین شاہ ماضی میں کراچی پر حکومت کرنے والوں نے اس شہر کو بھتہ خوری، بوری بند لاشوں ، کلاشنکوف کلچر اور تباہی کے سوا،کچھ نہیں دیا،پیپلز پارٹی کراچی سمیت پورے صوبے کی ترقی پر یقین رکھتی ہے، جام اکرام اللہ دھاریجو

ہفتہ جون 22:59

صوبائی وزراء نے سیمنز چورنگی پر سائٹ ایریا میں 1037.79 ملین روپے کی لاگت ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 19 جون2021ء) صوبائی وزراء سید ناصر حسین شاہ اور جام اکرام اللہ دھاریجو نے سیمنز چورنگی پر سائٹ ایریا میں 1037.79 ملین روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والی 17 سڑکوں کا سنگ بنیاد رکھ دیا۔ اس موقع پر سائیٹ ایسوسی ایشن کے پیٹرن ان چیف زبیر موتی والا، پیپلز پارٹی ایم این اے قادر خان مندو خیل، ایم پی اے لیاقت آسکانی ، سابق ایم پی ندیم بھٹو،صدر ضلع جنوبی خلیل ہوت، جنرل سیکریٹری ضلع غربی احمد علی جان ، ایم ڈی سائٹ، ایم ڈی کراچی واٹر بورڈ اسد اللہ خان ودیگر موجود تھے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات و بلدیا ت سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ آج بہت اہم منصوبہ کا سنگ بنیاد رکھا ہے، جوکہ صنعت کاروں اور پیپلز پارٹی کے مقامی رہنماو ں کا دیرینہ مطالبہ تھا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ صنعتوں کے فروغ کے لیے انفراسٹرکچر کی تعمیر بنیادی اہمیت کی حامل ہے، وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے بھی اس سڑک کا دورہ کیا تھا۔

منصوبہ میں 25 کلو میٹرز سڑکیں تعمیر کی جائینگی جس پر پی سی ون کے مطابق 1037.97 ملیں روپے لاگت کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ صنعتی علاقوں کے تمام مسائل حل کئے جائیں گے۔ اس منصوبے کی تکمیل کے بعد انفراسٹرکچر میں بہتری آئے گی، جس سے معیشت مضبوط ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ کراچی کے لئے رواں مالی سال بجٹ میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے 100 ارب مختص کئے ہیں، جبکہ عالمی بینک، ایشائی ترقیاتی بینک اور دیگرکے تعاون سے شہر میں 900 ارب روپے کے منصوبوں پر کام جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے ویژن کی تکمیل کے لیے وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ اور ان کی کابینہ اراکین دن رات کوشاں ہیں۔ جس کے تحت صوبے بھر میں ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ صنعتی علاقوں میں پانی کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے انہوں نے صنعتکاروں کو سب سوائل پانی کے لائسنس دینے کی پیشکش کی ہے۔ جتنے لائسنس درکار ہین دینے کے لئے تیار ہیں۔

صعنتیں چلیں گی تو روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ لسانیت کی باتیں کرنے والوں کو کراچی کے عوام نے مسترد کردیا ہے۔ پیپلز پارٹی کی حکومت پر الزام لگائے جاتے ہیں کہ تیرہ سال میں ہم نے کچھ نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس کا فیصلہ عوام کی عدالت میں ہوتا ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کی 2008 کے انتخابات کے مقابلے میں نشستیں 2018 میں بڑھی ہیں۔

پیپلز پارٹی نے حالیہ ضمنی انتخابات میں دیگر جماعتوں کی جیتی ہوئی نشستیں بھی حاصل کی ہیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت اور انسداد بدعنوانی و محکمہ امداد باہمی جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا ہے کہ ماضی میں کراچی پر حکومت کرنے والوں نے اس شہر کو بھتہ خوری، بوری بند لاشوں ، کلاشنکوف کلچر اور تباہی کے سوا،کچھ نہیں جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کراچی سمیت پورے صوبے کی ترقی پر یقین رکھتی ہے اور پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی ہدایت پر صوبے بھر کے صنعتی زونز کے انفرااسٹرکچر کو بہتر بنایا جا رہا ہے۔

جام اکرام اللہ دھاریجو نے مزید کہا کہ وہ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کے شگر گزار ہیں کہ انہوں نے صنعت کاروں کے مسائل دیکھتے ہوئے صنعتی زونز کے انفرااسٹرکچر کی بہتری کے لئے ایک ارب روپے کے فنڈز فراہم کئے جس سے 17 ترقیاتی منصوبوں پر کام ہورہا ہے اور امید ہے کہ یہ منصوبے رواں مالی سال میں مکمل ہو جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ نے ترقیاتی منصوبوں کے لئے مذید 30 کروڑ روپے فراہم کردئیے ہیں جس کی مدد سے مذید منصوبے مکمل کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کی نااہلی اور ناقص پالیسیوں کے باعث صنعتوں کو بہت نقصان پہنچا ہے اور بیروزگاری میں اضافہ ہوا ہے۔ صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت اور انسداد بدعنوانی و محکمہ امداد باہمی جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا کہ حکومت سندھ صوبے میں صنعتی ترقی کی خواہاں ہے اور اس سلسلے میں صنعت کاروں کے تعاون کی طلب گار ہے۔

اس سے قبل پیٹرن ان چیف سائٹ ایسوسی ایشن زبیر موتی والا نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ان کا دیرینہ مطالبہ پورا ہورہا ہے وہ سندھ حکومت کے مشکور ہیں ،آپ لوگ نیک کام کے لئے ہیں ، عام لوگ ، صنعتکار اور مزدور پریشان تھے۔سندھ حکومت نے ایک ارب روپے سے زائد منظور کئے ہیں،ایک سڑک بن گئی ہے،آج سترہ روڈوں کی تعمیر کی تختی کا افتتاح ہوا ہے ،سائیٹ ایسوسی ایشن کے دو نمائندوں اور دو حکومتی افسران پر مشتمل کمیٹی ان ترقیاتی کاموں کی نگرانی کرے گی۔

انہوں کہا کہ سڑکیں ہیوی ٹریفک کے معیار کے مطابق تعمیر ہونے چاہیے ، انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے سائیٹ پر نظر کرم کیا ہے، وہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کے مشکور ہیں کہ ہمارے مسئلے حل ہو رہے ہیں۔